ہرعقید ہ قرآن وسنت کی روشنی میں ثابت کر نے کیلئے ہمہ وقت تیار ہیں ،شیعہ عقائد کیخلاف ہرزہ سرائی فرقہ واریت کوہوادینے کی ناکام کوشش ہے، تحریک نفاذ فقہ جعفریہ

ولایت نیوز شیئر کریں

شیعہ عقائد کیخلاف ہرزہ سرائی فرقہ واریت کوہوادینے کی ناکام کوشش ہے، حکومت فوری نوٹس لے۔تحریک نفاذ فقہ جعفریہ
تحریک نفاذفقہ جعفریہ نے عقائد حقوق اورحب الوطنی پر نہ پہلے کوئی سودا بازی قبول کی، نہ اب کرینگے،ہم بکنے اور جھکنے والے نہیں ہیں
ولائے علی عزاداری حسین،حرمت سادات اور مکتب تشیع کے دینی حقوق کے حصول اور تحفظ کیلئے کسی قربانی سے دریغ نہیں کیاجائے
امن واستحکام، سنی شیعہ بھائی چارے کیلئے قائد ملت جعفریہ آغا سید حامد علی شاہ موسوی کی قیادت پر مکمل اعتماد کااظہار
پاکستان کیلئے لہو دینے والے اہل تشیع، اہل سنت نے مل کرپاکستان کاقیام ممکن بنایاتھا، حکومت برابرکی سطح پر حقوق کی ادائیگی یقینی بنائے
کلمہ و اذان و نماز سے لے کر قصاص و دیت تک مکتب ِتشیع کا ایک ایک عقید ہ قرآن وسنت کی روشنی میں ثابت کر نے کیلئے ہمہ وقت تیار ہیں
ایام عزا میں صرف غم حسینؑ میں مصروف رہیں گے،ولایت و عزاداری کے خلاف ہر اندرونی بیرونی حملے کوسنی شیعہ اتحادسے ناکام بنادیاجائیگا
ملتِ تشیع ایک جہاندیدہ قوم،دوست دشمن کی پہچان رکھتی ہے، قصر خدیجہ الکبریٰ ترلائی کلاں میں سیدنصرت علی نقوی کی قائم کردہ مجلس عزا کااعلامیہ

اسلام آباد( ولایت نیوز) پاکستان بھر کے ذاکرین،واعظین،بانیان مجالس اورہزاروں عزاداروں نے سیدشفقت حسین نقوی، ارشادنقوی حادرعلی نقوی کی میزبانی میں مرکزی امام بارگاہ خدیجہ الکبریٰ ترلائی اسلام آباد میں سیدنصرت علی نقوی مرحوم کی قائم کردہ ملک گیر مجلس عز ا ہزاروں عزاداروں،بانیان ذاکرین علماء نے وطن عزیز کے استحکام و امن کے قیام،مکتب تشیع کے حقوق کے حصول اورشیعہ سنی بھائی چارے کے فروغ کیلئے قائد ملت جعفریہ آغا سید حامد علی شاہ موسوی کی فقیرانہ و قلندرانہ قیادت پر مکمل اعتماد کا اظہارکرتے ہوئے اس عزم کااعادہ کیاہے کہ ہمارا اول و آخر تحریک نفاذفقہ جعفریہ ہے ہم نے عقائد حقوق اورحب الوطنی پر نہ پہلے کوئی سودا بازی قبول کی، نہ اب کرینگے،ہم بکنے اور جھکنے والے نہیں ہیں،ولائے علی عزاداری حسین،حرمت سادات اور مکتب تشیع کے دینی حقوق کے حصول اور تحفظ کیلئے قیادت کے ہر لائحہ عمل پر لبیک کہتے ہوئے ٹی این ایف جے کے پانچ رہنما اصولوں ولائے علی ؑ، عزائے حسین ؑ،حرمت سادات، احترام مرجعیت اور مرکزیت کیلئے کسی قربانی سے دریغ نہیں کیاجائے گا۔

ٹی این ایف جے فیڈرل کیپٹیل اسلام آباد کے صدرعلامہ راجہ بشارت حسین امامی نے اعلامیہ پیش کرتے ہوئے اس امرپر تشویش کااظہارکیاکہ ایک کالعدم گرو پ کی جانب سے مخصوص اشارے پر اپنی مسلسل ناکامیوں پر سیخ پا اور بغض و نفاق کی آگ میں جلتا ہوا ایک تکفیری ملاکی کلمہ و اذان میں ولایت علی ؑ کی گواہی اور دیگر شیعہ عقائد کے خلاف ہرزہ سرائی نہایت قابل مذمت ہے،مذکورہ کانفرنس میں ہرزہ سرائی کرکے فرقہ واریت کاہوادینے کی ناکام کوشش کرنے والے کالعدم گروپوں کے سہولت کار باطل کے آلہ کار، یزید و ابن ِ زیاد کے پیروکار چودہ سو سال سے ولایت علی ؑ و عزائے حسین ؑ کیخلاف منصوبے بناتے چلے آرہے ہیں ان تمام دشمنان دین و وطن کو ہمارا چیلنج ہے کہ وہ آئندہ چودہ سو سال بھی کوشش کرتے رہیں تو بھی ناکامی و نامرادی ہمیشہ ان کا مقدر رہے گی،یہ دشمنان دین عبادت سے نہ تو نفسِ رسولؐ مولا علی ؑکو نکال پائیں گے اور نہ ہی نواسہ رسولٌ امام حسین ؑکے ذکر کو مٹا سکیں گے، محمدؐ و آلِ محمدؐ کی مودت و محبت کو جزوِ ایمان قرار دینے والے سنی اور شیعہ عبادت گاہوں میں خاتم المرسلین رحمت اللعالمین رسولِ پاک اور انکے اہلبیتؑ ِاطہار کا ذکر تاابد جاری و ساری رہے گا۔

اعلامیہ میں واضح کیاگیاکہ ملت جعفریہ کے قومی جسم میں عقیدہِ ولا و عزا،روح کی حیثیت کا حامل ہے یہی وجہ ہے کہ قوم کو بے روح کرنے کیلئے عقائدِ ولا و عزا کے خلاف ایک مدت سے سازشوں کے جال بنے جا رہے ہیں، بیرونی دشمن نے گولی و گولہ بارود و خود کش حملوں سمیت تمام ہتھیار استعمال کیے لیکن صدیوں سے شہادت کو اپنی میراث قرار دینے والی غیر تمند عزادار قوم کو راہِ حسینیت سے ہٹانے میں بری طرح ناکام رہالہٰذا اس نے اپنے مذموم مقاصد کے حصول کیلئے ہمارے اندرونی دشمنوں سے اتحاد کر لیا یہی وجہ ہے کہ ہمارا اندرو نی دشمن ہماری طاقت کے سرچشمے اورہماری قومی زندگی کے ضامن مقدس عقائد و نظریات پر حملہ آور ہے جو جعلی عزادار بن کر ہماری صفوں میں گھس چکا ہے، اسکی وضع قطع، حلیہ، لباس بظاہر عزاداروں جیسا ہی ہے لیکن درحقیقت اس کا ایجنڈا قوم کو عزاداریِ حسین ؑ سے ہٹاکر دیگر امور میں الجھا ناہے چنانچہ ایک حملہ بیرونی دشمن کرتا ہے تو دوسرا ندرونی دشمنوں کی جانب سے کیا جاتاہے۔ لیکن تمام دشمن یا د رکھیں کہ ملتِ تشیع ایک جہاندیدہ قوم ہے اور دوست دشمن کی پہچان رکھتی ہے۔اعلامیہ میں تمام اندرونی وبیرونی دشمنوں پر واضح کیاگیاکہ مکتب ِ تشیع مدینتہ العلم اور باب مدینتہ العلم کی عطا کردہ میراث کا وارث و پاسدار ہے ہمارے عقائد و نظریات کے جواز اور دلائل و براہین قرآن و سنت سے ثابت ہیں۔ قائد ملت جعفریہ آغا سید حامد علی شاہ موسوی کے روحانی فرزند، تحریک نفاذ فقہ جعفریہ کے سابق نائب صدر تاج المناظرین علامہ تاج الدین حیدری نے 1984 میں سندھ ہائی کورٹ میں مکتب ِ تشیع کے عقائد و نظریات کو قرآن و سنت سے ثابت کر کے منافقین و معترضین کو شکست فاش سے دوچار کیا تھا اور بعد ازاں 1997میں سپریم کورٹ آٖف پاکستان میں اس وقت کے چیف جسٹس سجاد علی شاہ کی عدالت میں کھڑے ہو کر چیلنج کیا تھا کہ کلمہ و اذان و نماز سے لے کر قصاص و دیت تک مکتب ِتشیع کا ایک ایک عقید ہ قرآن وسنت کی روشنی میں ثابت کر نے کیلئے ہمہ وقت تیار ہیں لہٰذا کوئی ہے توآگے بڑھ کر سوال کرے اپنے عقائد حقہ کے حوالے سے تحریک نفاذ فقہ جعفریہ یہی چیلنج آج بھی قائم اور موجود ہے۔

اعلامیہ میں یہ بات زوردیکرکہی گئی کہ تحریک نفاذ فقہ جعفریہ کی تاریخ سیاسی نعروں سے نہیں بلکہ عملی جدوجہد سے عبارت ہے، جب ضیاء الحق نے امام بارگاہوں اور سڑکوں پر عزاداری کو بند کرنے کا اعلان کیا تو عزاداری پر سب سے بڑے ضیائی حملے کاجواب قائد ملت جعفریہ آغا سید حامد علی شاہ موسوی کی قیادت میں قوم نے حسینی محاذ ایجی ٹیشن کرکے دیا۔حسینی محاذ ایجی ٹیشن کے دوران پا کستان کی ہر جیل ہر تھانہ ہر سڑک اور ہرایوان ماتم حسین ؑ سے لرزتا رہا اور اس کامیاب تحریک کے نتیجہ میں موسوی جونیجو معاہدے کے تحت صرف لائسنسی ہی نہیں روایتی جلوسوں کو بھی قانونی تحفظ مل گیاہمارے غیور و عزادار قائد آغا سید حامد علی شاہ موسوی نے حکومت کی جانب سے کورونا وباء کے نام پر مجالس و جلوسوں کے خلاف ناروا پابندیوں کو مسترد کیا اور پابندیوں کا جواب خود جلوس عزا برآمدکر کیعزاداری کے خلاف پابندیوں کومستردکردیا۔

اعلامیہ میں واضح کیاگیاکہ پاکستان کیلئے لہو دینے والے اہل تشیع نے برداران اہل سنت ملکر پاکستان کاقیام ممکن بنایاتھا لہذا دونوں مسلمہ مکاتب کودرجہ اول کے شہری کی حیثیت سے اپنے عقائد کے مطا بق زندگی بسر کرنے کے حقوق کو حکومت یقینی بنائے،اعلامیہ میں شرکائے مجلس عزا نے اس عہد کا اعادہ کیا کہ قائد ملت جعفریہ آغاسیدحامدعلی شاہ موسوی کی بصیرت افروز قیادت کے ساتھ مربوط اور منسلک رہتے ہوئے عزائے حسینی ؑ کے ایام میں صرف عزاداری حسینؑ میں مصروف رہیں گے اور ولایت و عزاداری کے خلاف ہر اندرونی بیرونی حملے کوسنی شیعہ اتحادسے ناکام بنادیاجائیگا۔

مجلس سے علامہ سیدقمرحیدرزیدی، ذاکرمنتظرمہدی، علامہ سیدصفدررضابخاری، علامہ سیدفخرعباس عابدی، ذاکرعلی کھوکھر، سیدحیدررضوری، عقیل محسن نقوی، ذاکروسیم عباس بلوچ، ذاکربلال حیدر، ذاکرحبیب رضاحیدری، ذاکراقبال حسین شاہ بجاڑاوردیگرذاکرین نے بھی خطاب کیا۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.