زائرین مشکلات : پاک ایران ٹرین منصوبہ جلد پایہ تکمیل تک پہنچایا جائے ، شہادت خاتون جنتؑ پر دہشت گردی کے خاتمہ کیلئے دعائیں کی جائیں ، ۤآغا حامد موسوی

ولایت نیوز شیئر کریں

افغانستان بھارت گٹھ جوڑ خطے کے امن کی راہ میں سب سے بڑی رکاوٹ ہے۔آغا سیدحامد موسوی

افغان صدر اشرف غنی کی پاکستانی معاملات میں مداخلت قابل مذمت ، کھلی دشمنی اور جس تھالی میں کھایا اسی میں چھید کرنے کے متراد ف ہے

کٹھ پتلی حکمرانوں کی اپنی کوئی حیثیت نہیں جن کے کرتوتوں سے امریکہ نے اتحادیوں سمیت افغان سرزمین پر ڈیرے ڈال رکھے ہیں

افغانی و بھارتی حکمران ذہن نشین رکھیں یہ 71والانہیں 2019والا ایٹمی پاکستان ہے ،پوری قوم عساکر پاکستان کی پشت پر کھڑی ہے

آج یوم شہادتِ خاتونِ جنت کے ماتمی جلوسوں،مجالس میںآپریشن رد الفساد کی کامیابی کیلئے دعائیں کی جائیں۔قائد ملت جعفریہ کا عزائے فاطمہ کمیٹی سے خطاب

اسلام آباد(ولایت نیوز ) سرپرستِ اعلیٰ سپریم شیعہ علماء بورڈ قائد ملتِ جعفریہ آغاسیدحامدعلی شاہ موسوی نے کہا ہے کہ تفتان بارڈر پر پھنسے زائرین کی مشکلات دو رکرکے مستقل حل کیلئے پاک ایران ٹرین سروس کا منصوبہ جلد پایہ تکمیل تک پہنچایا جائے افغان بھارت گٹھ جوڑ خطے کے امن کی راہ میں سب سے بڑی رکاوٹ ہے،پاکستان کو دل سے تسلیم نہ کرنیوالا بھارت نقصان پہنچانے کا کوئی موقع ضائع نہیں کرتا جبکہ افغانستان نے قیام سے لیکر آج تک پاکستان کیخلاف ہر فورم پر ہرزہ سرائی کی ہے،افغان صدر اشرف غنی کی پاکستانی معاملات میں مداخلت پر مبنی بیان قابل مذمت، کھلی دشمنی اور جس تھالی میں کھایا ہے اسی میں چھید کرنے کے مترادف ہے،ا فغان قیادت اپنے عوام کی مشکلات و مسائل پر دھیان دے کیونکہ کٹھ پتلی حکمرانوں کی اپنی کوئی حیثیت نہیں جن کے کرتوتوں کی وجہ سے امریکہ نے اپنے اتحادیوں سمیت افغان سرزمین پر ڈیرے ڈال رکھے ہیں،افغانی و بھارتی حکمران ذہن نشین رکھیں کہ یہ 71والانہیں بلکہ2019والا ایٹمی پاکستان ہے ،پوری قوم عساکر پاکستان کی پشت پر کھڑی ہے ،دنیا کی بڑی سے بڑی طاقت پاکستانی عوام کو گمراہ نہیں کرسکتی،حقوق کے حصول اور آزادی کی جدوجہد میں اپنی گود کے پالے قربان کرنیوالی عظیم مائیں کنیزانِ فاطمہ ؐ ہیں جنہوں نے بنتِ پیغمبر ؐ سے ظالم و جابر حکمرانوں کیخلاف آوازِ حق بلند کرنے کا عملی درس سیکھا جس پر عمل کرکے مغربیت کی یلغار کا دلیرانہ مقابلہ کرکے طبقہ نسواں عزت و حرمت سے ہمکنار ہوسکتا ہے ،ہفتہ3جمادی الثانی کو دنیا بھر کی طرح پورے پاکستان میں یوم شہادتِ خاتونِ جنت حضرت فاطمہ زہرا ؐ کے موقع پر کشمیر و فلسطین ،یمن ،عراق،بحرین،لبنان،شام،لیبیاسمیت دینا بھر میں جاری استعماری مظالم اور جبرواستبداد کیخلاف صدائے احتجاج بلند کرکے مظلومین سے دلی ہمدردی کا اظہار کیا جائیگااور مرکزی ماتمی جلوسوں،مجالس عزا میں وطن عزیز میں دہشتگردی کیخلاف عساکر پاکستان کے آپریشن رد الفساد کی حتمی کامیابی کیلئے دعائیں مانگی جائیں گی۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے عالمی عشرہ عزائے فاطمیہ ؑ کمیٹی ٹی این ایف جے کے عہدیداران سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔

آقای موسوی نے باورکرایا کہ اسلام آفاقی دین ہے جو اپنے انسانیت ساز مکتب میں نہ صرف ترقی کی منازل تک پہنچانے والے اصولوں کا بانی اور انسانیت کی ترقی و کمال کی اقدار کا موسس ہے جس نے ان اصولوں اور اقدارکے مطابق ایسے انسانوں کی تربیت و پرورش کی جو دنیائے بشریت کی اعلیٰ اقدار کے نمونہ کامل تھے۔

انہوں نے کہا کہ دخترِ پیغمبر ؐ خاتونِ جنت حضرت فاطمہ زہرا ؐ عفت و عصمت اور قناعت و تقویٰ کا مرقع اور کائنات کی اشرف ترین پانچ خواتین میں شامل ہیں۔انہوں نے واضح کیا کہ پیغمبر اسلام ؐ نے اپنی پیاری بیٹی کے ہاتھوں پر بوسہ دیکر کل تک زندہ درگور کی جانیوالی عورت کو شرف و بزرگی سے نوازاگویا عورت کی شخصیت کو وجودِ زہرا ؐ کے صدقے عروج و کمال عطا ہو، اس نے بلندیوں کی معراج کی طرف قدم بڑھایا ،اسکی فضیلت و شرف کلام الہی کی زینت بنا اور وہ اس قابل ہوئی کہ اسکے پاؤں تلے جنت قراردی گئی۔

آغا موسوی نے کہا کہ رحلتِ حضور اکرم ؐ کے بعد چند ماہ کے دوران آپ ؑ اپنے والدِ گرامی سے ملحق ہوگئیں او ر دنیائے نسوایت کی سیدہ و سردارِ خاتونِ جناں کی آواز حق سے مدینہ محروم ہوگیا۔قائد ملتِ جعفریہ آغاسیدحامدعلی شاہ موسوی نے کہا کہ حضرت فاطمہ ؐزہرا کا ایثار و قربانی کا عظیم درس خواتین کیلئے عالمی چارٹر ہے چنانچہ شہزادہ صلح و امن حضرت امام حسن مجتبیٰ ؐ سے روایت ہے کہ ایک شب میں نے مادرِ گرامی کو مصلیٰ عبادت پرحالتِ قیام ،رکوع و سجود میں مصروف دیکھا جو مسلسل دعا کرکے مومنین و مومنات کیلئے انکے نام لیکر خدا سے مانگ رہی تھیں،جب میں نے دریافت کیا کہ اے مادرِ گرامی جب آپ ؑ مصروفِ عبادت تھیں تو اپنے لیے خدا سے کچھ نہیں مانگا بلکہ مخلوق خدا کیلئے دعا فرماتی رہیں تو بی بی ؑ نے جواب میں فرمایا کہ بیٹا حسن ؑ پہلے اپنے ہمسایوں کیلئے مانگو۔حضرت فاطمہ زہرا ؐ کا فرمان ذیشان ہے کہ تمھاری دنیا میں مجھے تین چیزیں پسند ہیں تلاوت قرآن،چہرہ رسول ؐ پرنور کی زیارت اور راہِ خدا میں خرچ کرنا۔ایک اور قول ہے کہ جو شے عورت کیلئے بہترین ہے وہ اسکا نامحرم مرد کو نہ دیکھنا اور نہ محرم مرد کا اسے نہ دیکھنا ہے۔

انہوں نے اس امر پر افسوس کا اظہار کیا کہ اسلام نے جس عورت کو قدر و منزلت کی معراج عطا کی تھی آج اسلام کے اصولوں سے منحرف اور مغربیت و استعماریت کی لونڈی بنی ہوئی ہے جسکی گود کو پہلا مدرسہ قراردیا گیا تھا وہ آج مادر پدر آزادی کے مغربی تصور کے فروغ کیلئے پیش پیش ہے لیکن ایسی خواتین بھی موجود ہیں جو سیرتِ زہرا ؐ پر چلتے ہوئے اپنے لختِ جگر تحاریکِ حریت و آزادی کیلئے قربانی کررہی ہیں۔

آقای موسوی نے یہ بات زوردیکر کہی کہ تحاریکِ آزادی کی کامیابی میں اپنے سہاگ اور بچے قربان کرنیوالی خواتین سیرتِ فاطمہ ؑ پر عمل پیرا ہیں جن کی قربانیاں رائیگاں نہیں جائیں گی اور کشمیر و فلسطین سمیت دنیا بھر میں آزادی کا سورج ضرور طلوع ہوگا۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.