ہر حکومت انتہا پسندوں کے ہاتھوں بلیک میل ہوئی، امریکہ کے پالے دہشت گردوں کا دین درہم ودینار اور مسلک شدت پسندی، امریکی جمہوریت سمٹ گھناؤنا مذاق، آغا حامد موسوی کا محفل کریمۃ الدارینؑ سے خطاب

ولایت نیوز شیئر کریں

ڈکٹیٹروں کے پشت پناہ امریکہ کا جمہوریت سمٹ بلانا کھلی منافقت اور گھناؤنامذاق ہے،قائد ملت جعفریہ آغا حامدموسوی
زینبیؑ کردار ہر دور کے جابروں کی منافقت کے پردے چاک کرتا رہے گا، نام نہاد سمٹ میں پاکستان کی عدم شرکت کا فیصلہ صائب ہے
بھارت و اسرائیل جیسے انسانیت کے قاتلوں کو بغل میں بٹھا کر جمہوریت کا راگ الاپنا مضحکہ خیز ہے، بھارتی چیف کی موت نے بتادیا کہ ہر ظلم کو فنا ہے
کالعدم جماعتوں کوآئینی اداروں کی ممبریاں اور تحائف دیئے جاتے رہے تو سیالکوٹ جیسے سانحات کوئی نہیں روک سکتا، ایکشن پلان کی ہر شق پر عمل کیا جائے
امریکہ ہر دور میں آمروں، ڈکٹیٹروں، بادشاہتوں کا محافظ رہا،افغانستان ایران عراق لیبیا شام یمن بحرین امریکہ کی جمہوریت پسندی کا منہ چڑا رہے ہیں
امریکہ نے افغان جنگ میں ایسے دہشت گرد پروان چڑھائے جن کا دین درہم و دینار اور مسلک شدت پسندی ہے، ہر حکومت انتہا پسندوں کے ہاتھوں بلیک میل ہوئی
دین اسلام نواسی رسولؐ سیدہ زینب ؑ کا ہمیشہ ممنون رہے گا اسیران کربلا نے دین کو آمریت کے تھپیڑوں سے بچانے کیلئے سائبان مہیا کردیا، محفل کریمۃ الدارین ؑسے خطاب

اسلام آباد( ولایت نیوز) سپریم شیعہ علماء بورڈ کے سرپرست اعلی قائد ملت جعفریہ آغا سید حامد علی شاہ موسوی نے کہا ہے کہ ڈکٹیٹروں کے پشت پناہ امریکہ کا جمہوریت سمٹ بلانا کھلی منافقت اور گھناؤنامذاق ہے،زینبیؑ کردار ہر دور کے آمروں جابروں کی منافقت کے پردے چاک کرتا رہے گا نام نہاد جمہوریت سمٹ میں پاکستان کی عدم شرکت کا فیصلہ درست اور صائب ہے،بھارت و اسرائیل جیسے انسانیت کے قاتلوں کو بغل میں بٹھا کر جمہوریت کا راگ الاپنا مضحکہ خیز ہے۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے نواسی رسول سیدہ زینب بنت علی سلام اللہ علیھا کی ولادت پرنور کے موقع پر ایام عقیلہ بنی ہاشم ؑ کی مناسبت سے ’محفل کریمۃ الدارین ؑ‘ سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔

انہوں نے کہا کہ بھارتی چیف بپن راوت کی موت نے بتادیا کہ ہر ظلم کو فنا ہے خدا کی مخلوق پر ظلم کرنیو الے ہر نمرود و فرعون کا انجام رسوائی ہی ہے، شدت پسندی کی خاتمہ کیلئے محض بیانات کافی نہیں رویئے بدلنے ہوں گے، کالعدم جماعتوں کوآئینی اداروں کی ممبریاں اور تحائف دیئے جاتے رہے تو سیالکوٹ جیسے سانحات کوئی طاقت نہیں روک سکتی، پاک فوج اور عوام نے انتہا پسندی کے خلاف فقید المثال قربانیاں دیں نیشنل ایکشن پلان میں وضع کردہ نکات پر عمل کیا جائے، حضرت زینب بنت علی ؑ کا جراتمندانہ کردار خواتین کیلئے باعث افتخار اورپوری انسانیت کیلئے مشعل راہ ہے۔

آغا سید حامد علی شاہ موسوی نے کہا کہ امریکہ ہر دور میں آمروں، ڈکٹیٹروں، بادشاہتوں کا محافظ رہا ہے دنیا کے اندوہناک مظالم کے پیچھے اس کا ہاتھ نمایا ں رہا، پاکستان کی ہر آمریت کے ہاتھ امریکہ نے مضبوط کئے ویت نام کمبوڈیاسے عراق افغانستان تک امریکہ ہمیشہ جمہوریت کا گلا گھونٹتا رہا یمن بحرین امریکہ کی جمہوریت پسندی کا منہ چڑا رہے ہیں ایران کی جمہوریت کو گرانا امریکہ کاسب سے بڑا خواب ہے۔

آغا سید حامد علی شاہ موسوی نے کہا کہ ہم بارہا کہہ چکے ہیں کہ پاکستان میں کوئی مکتبی مسلکی تنازعہ نہیں پاکستان کے امن پسند شہری اقلیتوں کے ساتھ بھی رواداری کے ساتھ زندگی بسر کررہے ہیں ہیں افغان جنگ کے دوران امریکہ نے دہشت گردی کو جس انداز سے پروان چڑھایا اس کے سبب کچھ ایسے عناصر پیدا ہوگئے جن کا دین درہم و دینار اور مسلک شدت پسندی ہے وہی عناصر آج تک پاکستان ہی نہیں پورے عالم اسلام کو بدنام کررہے ہیں سیاستدان اور حکومتیں ان شدت پسندوں کو سیاسی مفادات کیلئے استعمال کرتی ہیں اور بعد میں ان سے ہمیشہ بلیک میل ہوتی ہیں آج بھی وطن عزیز میں یہی سب کچھ ہورہا ہے۔

انہوں نے کہا کہسانحہ اے پی ایس کے بعد نیشنل ایکشن پلان طے کرتے ہوئے تمام جماعتون نے یہ عہد کیا تھا کہ شدت پسندی کی ترویج کی حوصلہ شکنی کریں گے لیکن افسوس کہ ہر دور میں کالعدم جماعتوں کو ریاستی اداروں میں شامل کرکے انہیں خوش کرنے کی کوشش کرتی رہیں جس کے سبب پاک فوج کی ان گنت قربانیوں کے باوجود دہشت گردی کا بیج ختم ہو نے کا نام نہیں لے رہا۔

آغا سید حامد علی شاہ موسوی نے واضح کیا کہ جب تک نیشنل ایکشن پلان کی ہر شق پر عمل نہیں ہوگا دہشت گردی کو بیخ و بن سے نہیں اکھاڑا جا سکتا۔آغا سیدحامد علی شاہ موسوی نے کہا کہ سیدہ زینب بنت علی نے بعد از شہادت حسین ؑ اسلام کے پرچم کو نہ صرف سنبھالا بلکہ مقصد حسینیت کو جاوداں کردیا اور یزیدیت کی فتح کا خواب چکنا چور کردیا، دین اسلام نبی کریم کی نواسی اور اسیران کربلا کا ہمیشہ ممنون رہے گا جنہوں نے اپنی چادریں قربان کرکے تا ابد دین توحید کو آمریت کے تھپیڑوں سے بچانے کیلئے سائبان مہیا کردیا۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.