عیاش عرب حکمران امریکی پالیسیوں کے بڑھاوا کے ذمہ دارہیں مسلمانوں میں ایسی قیادت ناپید ہے جو عالم اسلام کو متحدکر سکے ،قائد ملت جعفریہ کا ایام عظمت نسواں کے اختتام پر خطاب

ولایت نیوز شیئر کریں

اسلام آباد( ولایت نیوز)سپریم شیعہ علماء بورڈ کے سرپرست اعلیٰ و تحریک نفاذ فقہ جعفریہ کے سربراہ آغا سید حامد علی شاہ موسوی نے کہاہے کہ عالم اسلام کو بچانے اور اُسکے تحفظ کیلئے تمام مسلم حکمران اپنی ،ذات، ملک کی بجائے مسلم امہ کے مفادات کو ہر شے پر ترجیج دیں کیونکہ اسوقت یمن اور شام شیطانی قوتوں کے محاصرے میں ہیں جن کاکوئی معاون و مددگار نہیں ، عالمی ضمیر خاموش ، عالم اسلام پر سکوت مرگ طاری ہے ، جدل و جدال کو روکنے اور متنازعہ عالمی مسائل کے حل کیلئے قائم کیا گیا عالمی ادارہ اقوام متحدہ مسلم ممالک میں جاری ظلم و بربریت کے سر پرست امریکہ کا غلام ہے ،شہزادی کونین حضرت فاطمہ زہرا سلام اللہ علیہا عظمت نسواں مظہر ہیں جنکی سیرت و کردار مغربیت کی یلغار کو روکنے کا واحد ذریعہ ہے ، بہتریں نسلوں کی تربیت و تعمیر کیلئے خواتین کو خاتون جنت کے دامن سے وابستگی اختیار کرنی ہو گی۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے جمعہ کو ولادت خاتون جنت حضرت فاطمہ زہرا ؑ کی مناسبت سے عالمگیر ایام عظمت نسواں کی اختتامی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔

آقا ی موسوی نے باور کرایا کہ امت مسلمہ عالمی سازشوں کے باعث عدم استحکام ، خانہ جنگی ، شورش اورخونریزی کاشکارہے ،گزشۃ چندبرسوں میں لاکھوں افرادمارے جاچکے ہیں اوریہ سلسلہ روزبہ روزبڑھتاجارہاہے ۔ اُنہوں نے کہا کہ افغانستان ، عراق ، شام ، لیبیا، یمن ، یتونس ، فلسطین وکشمیر،نائیجریااورصومالیہ لہولہان ہیں اور دکھ یہ ہے کہ مسلم حکمران عالمی سرغنے کی لونڈی کاکرداراداکررہے ہیں جوخون مسلم بہنے سے روکنے کے اقدامات اورکوششوں کے بجائے باطل قوتوں کے شانہ بہ شانہ ایستادہ ہیں ۔ اُنہوں نے اس امر پر افسوس کا اظہار کیا کہ گزشتہ سات سال سے شام میں خون کی ہولی کھیلی جارہی ہے اسی طرح یمن کاچپہ چپہ خون سے رنگین ہے ، عرب و عجم کے مسلم حکمران شیطانی قوتوں کے آلہ کارہیں اورمسلم ورلڈطاغوت کی گریٹ گیم کاشکارہے ۔انہوں نے کہا کہ عالمی سرغنہ مڈل ایسٹ کے تیل اورگیس پراپناتسلط برقراررکھنے کیلئے ہراُس ملک کو غیر مستحکم کرنا چاہتا ہے جو اُسکے مفادات کی راہ میں روکاوٹ بن سکتا ہے ۔

آغا سید حامد علی شاہ موسوی نے کہا کہ ترکی ، ایران اور پاکستان عالمی سرغنے کے نشانے پر ہیں ،کاش یہ مسلمان ممالک سیاسی و اقتصادی طور پر مستحکم ہو جائیں تو نہ صر ف اپنا بلکہ پورے عالم اسلام کا دفا ع کر سکتے ہیں۔ اُنہوں نے واضح کیا کہ دنیائے ابلیسیت کا سرغنہ چین اور روس کے بڑھتے ہوئے اثرو رسوخ کو اپنے لئے خطرہ گردانتا ہے جس نے نائن الیون کے بعد دہشتگرد گروپ تخلیق کیے، انہیں اسلحہ اور سرمایہ فراہم کیا تاکہ مسالک کے نام پر عالم اسلام کا امن تہہ و بالا کر سکے اور یہ ممالک معاشی طور پر غیر مستحکم ہو جائیں۔

قائد ملت جعفریہ آغا سید حامد علی شاہ موسوی نے کہا کہ عالمی شیطان مسلکی کارڈ بڑی مہارت سے استعمال کر کے مسلمانوں میں مزید کشیدگی اور تناؤ پیدا کررہا ہے تاکہ اُسکے کارخانے چلتے رہیں اور اسلحہ فروخت ہوتا رہے۔ انہوں نے کہا کہ عیاش عرب حکمران اس تمام صورتحال کے ذمہ دار اور یہ سب اُنہی کا کیا دھرا ہے ۔ اُنہوں نے کہا کہ امریکہ مسلم مماک کے اختلافات ، عرب و عجم کے افتراق سے فائد ہ اٹھا کر انہیں کشیدگی بڑھانے کیلئے استعمال کر رہا ہے ۔ اُنہوں نے اس مر پر دکھ کا اظہار کیا کہ اسوقت مسلمانوں میں ایسی قیادت ناپید ہے جو عالم اسلام کو متحد اور انحطاط کا شکار مسلم ممالک کو شیطانی ہتھکنڈوں سے بچا سکے۔ اُنہوں نے یہ بات زور دے کر کہی کہ امریکہ دہشتگردوں کو استعمال کر کے لیبیا، سوڈان،اور مصر کے بعد شام کی حکومت کا تختہ کرنا چاہتا ہے جبکہ روس اُسکے بچاؤ کیلئے کام کر رہا ہے تاکہ امریکی غلبے کو روکا جا سکے۔ اُنہوں نے کہا کہ ایک عجمی ملک ساتھ دے رہا ہے جبکہ یمن میں سعودیہ یمنی حکمرانوں کی نہ صرف حمایت بلکہ امریکہ کے ایماء پر اتحادی افواج پر حملہ آور ہے، شام میں اپوزیشن کو عجمی ملک کنڈم کررہا ہے اور یمن میں سعودیہ یمنی حکومت کو مضبوط کرنا چاہتا ہے جسکا فائدہ عالمی استعمار جبکہ مسلمانوں کو نقصان ہو گا ۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.