سعودی عرب میں سینما کھل گئے نبیؐ کی بیٹیؑ کا مزار آج بھی مقفل ؟ بھارت کے ساتھ ایرانی قربت سمجھ سے بالاتر ہے،آغا حامد موسوی

ولایت نیوز شیئر کریں

بیرونی مداخلت کے سبب پراکسی وار کے ٹھیکیدار پھر سر اٹھا رہے ہیں انتہا پسندی کی تازہ لہر سوچی سمجھی سازش ہے،قائد ملت جعفریہ آغا حامد موسوی
قائد اعظم اوران کے مکتب کو سرعام گالیاں اور تکفیری نعرے ریاست کی رٹ کی ناکامی ہے، نیشنل ایکشن پلان اور پیغام پاکستان بھلادیئے گئے
ایران بھارت کے ساتھ بھی اسرائیل والا رویہ اپنائے،کشمیرکرہ ارض کا مظلوم ترین خطہ ہے جسے غیروں کے ساتھ ساتھ امت مسلمہ نے بھی فراموش کررکھا ہے
سعودی عرب میں سینما کھول دیئے گئے جنت البقیع میں نبیؐ کی بیٹی کا مزار آج بھی مقفل ہے،سعودی و ایرانی چپقلش کا سب سے زیادہ فائدہ امریکہ و اسرائیل نے اٹھایا
ایران بھارت کی امریکہ دوستی پرمعترض نہیں توپاک افغان قربت کو بھی وجہ نزاع نہ بنائے،پاکستان ایران افغانستان ترکی روس و چین دفاعی و معاشی بلاک تشکیل دیں
مہاجرین و پناہ گزینوں پر نظر رکھی جائے، امام موسی کاظم ؑنے زندگی زندانوں میں گزار دی شہادت کا تلخ جام پی لیاظلم سے ہاتھ ملانا گوارا نہ کیا، یوم نور کی مجلس سے خطاب

ااسلام آباد(ولایت نیوز)سپریم شیعہ علماء بورڈ کے سرپرست اعلی قائد ملت جعفریہ آغا سید حامد علی شاہ موسوی نے کہا ہے کہ بیرونی مداخلت کے نتیجے میں پراکسی وار کے ٹھیکیدار پھر سر اٹھا رہے ہیں وطن عزیز میں انتہا پسندی کی تازہ لہر تشویشناک اور سوچی سمجھی سازش ہے، ایکشن پلان اور پیغام پاکستان بھلادیئے گئے،قائد اعظم اوران کے مکتب کو سرعام گالیاں اور تکفیری نعرے ریاست کی رٹ کی ناکامی ہے مہاجرین و پناہ گزینوں پر نظر رکھی جائے۔

انہوں نے کہا کہ کشمیرکرہ ارض کا مظلوم ترین خطہ ہے جسے غیروں کے ساتھ ساتھ امت مسلمہ نے بھی فراموش کررکھا ہے آیت اللہ خمینی مظلومین جہاں کی امید تھے ایران بھارت کے ساتھ بھی اسرائیل والا رویہ اپنائے امریکہ کے بہترین دوست بھارت کے ساتھ ایرانی قربت سمجھ سے بالاتر ہے، سعودی عرب میں سنیما کھول دیئے گئے، جنت البقیع میں نبیؐ کی بیٹی کا مزار آج بھی مقفل ہے، نومنتخب ایرانی صدر کی حلف برداری میں بھارت کو دعوت دے کر کشمیری مظلوموں کے زخموں پر نمک پاشی اور آیۃ اللہ خمینی کی راہ سے انحراف کیاگیا، شام لبنان عراق یمن اور دوسرے مسلم ممالک میں سعودی و ایرانی مداخلت وچپقلش کا سب سے زیادہ فائدہ امریکہ و اسرائیل نے اٹھایا،صیہونیت و استعماریت کو ناکام بنانے کیلئے پاکستان ایران افغانستان ترکی روس و چین دفاعی و معاشی بلاک تشکیل دیں،مسلم ممالک ایک دوسرے سے رقابت ترک کردیں ایران بھارت کی امریکہ دوستی پرمعترض نہیں توپاک افغان قربت کو بھی وجہ نزاع نہ بنائے، امام موسی کاظم ؑنے زندگی زندانوں میں گزار دی شہادت کا تلخ جام پی لیاظلم سے ہاتھ ملانا گوارا نہ کیا۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے حضرت امام موسی کاظم علیہ السلام کی یاد میں یوم نور کی مجلس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔

آغاسید حامد علی شاہ موسوی نے کہا کہ آیت اللہ خمینی کا کارنامہ ڈھائی ہزارسالہ بادشاہت کا خاتمہ اور اسلامی حکومت کا قیام تھا، آیت اللہ خمینی کا یہ کمال تھا کہ انہیں نے انقلاب کے بعد نہ خود اور نہ اپنی اولاد کو کوئی سرکاری عہدہ دیا، انقلاب کے بعد پوری ایرانی پارلیمنٹ اڑا کر ایران کو قیادت سے محروم کرنے کی کوشش کی گئی عراق کے ذریعے جنگ مسلط کروا کے انقلاب کو ختم کرنے کی کوشش کی گئی لیکن آیت اللہ خمینی کی قیادت نے تمام مسائل و مصائب کا پامردی سے مقابلہ کیا معاشی نقصانات برداشت کئے لیکن وحدت اسلامی کے اصولوں پر سمجھوتہ کیا لیکن ان کی رحلت کے بعد بتدریج ان پالیسیوں کو ترک کردیا گیا۔

انہوں نے کہا کہ ایک ایسا وقت تھا کہ ایران اور پاکستان شیرو شکر تھے دکھ درد میں شریک تھے لیکن بھارتی و امریکی سازشوں نے ان میں دوری پیدا کردی ہے،اامریکہ کے ہندوستان سے یارانے ہیں ایران امیر المومنین حضرت علی ابن ابی طالب ؑ کا فرمان مت بھولے کہ دشمن کا دوست کبھی دوست نہیں ہو سکتا۔آغا سید حامد علی شاہ موسوی نے کہا کہ اوآئی سی ممالک میں کسی کو امت مسلمہ کے اتحاد سے کوئی غرض نہیں مسلم ممالک نے ایک دوسرے کے ساتھ سرحدیں بند کررکھی ہیں جبکہ غیرمسلموں کیلئے دیدہ و دل وا کئے ہوئے ہیں استعماری پٹھوؤں کی کاسہ لیسی کسی مسلم ملک کو کچھ نہیں دے گی، تمام مسلم ممالک ایک اور نیک ہو کر مسلمان دشمنوں اور ظالمین کے خلاف ایکا کریں تبھی استعماری و شیطانی شکنجے سے نجات پا سکتے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ مورخین کا اتفاق ہے کہ امام موسی کاظم ؑ کا دست مبارک سب سے زیادہ سخی، زبان سب سے زیادہ فصیح اور قلب مبارک سب سے زیادہ شجاع اور بہادر تھا، بہت زیادہ عبادت کی وجہ سے آپ کا نام ”عبد صالح“ پڑ گیا، اور آپ عرب و عجم میں ”باب الحوائج الی اللہ“ کے نام سے مشہور ہوئے جن کے وسیلے سے دعائیں قبول ہوتی ہیں۔

آغا سید حامد علی شاہ موسوی نے کہا کہ امام موسی کاظم ؑ حکمرانوں اور بالادستوں کی جانب سے شریعت مصطفوی ؑمیں من مانی تبدیلیاں کرنے کی راہ میں ہمیشہ حائل رہے حق کے علمبردار اور مظلوموں کے طرفدار رہے اسی لئے قید و بند کی صعوبتیں ان کا مقدر رہیں،ظالم حکمرانوں کے نام لیوا آج کوئی نہیں لیکن امام موسی کاظمکا مزار دنیا کی سب سے بڑی زیارت گاہوں میں شمار ہوتاہے جہاں سالانہ کروڑوں لوگ حاضری دیتے ہیں جو ظالموں کی شکست اور مظلومیت کی فتح کی نشانی ہے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.