تکفیری نعرے انبیاء کی توہین ہے حکومت کاروائی کرے ، آغا حامد موسوی ؛ جامعۃ المرتضی تاریخی پرسہ میں ہزاروں ماتمیوں کی شرکت

ولایت نیوز شیئر کریں

دہشت گرد جماعتوں کا صرف نام نہیں کام بھی کالعدم کروایا جائے ورنہ ڈومور جاری رہے گا،قائد ملت جعفریہ آغا حامد موسوی
مسلم ممالک بھیک مانگنا چھوڑ دیں ورنہ سب اسرائیل کو تسلیم کرنے پر مجبور ہوں گے،مسلمانوں میں جغرافیائی سرحدیں ضرور ہیں نظریاتی نہیں
خارجی فکر توہین کا سلسلہ جاری رکھے ہوئے ہیں،تکفیر ی نعرے لگانے والی شخصیت کومشرق وسطی میں سفارتی ذمہ داریاں سونپنا سوالیہ نشان ہے؟
دہشت گرد وں نے بہر حال نابود ہونا ہے حکومت ذمہ داریاں پوری کرے، نام نہاد بنیاد اسلام بل نے فرقہ واریت کو ہوا دی، تکفیری نعرے انبیاء کی توہین ہے
کوئی طاقت شیعہ سنی میں تفریق نہیں ڈال سکتی،میلاد النبی ؐ کے موقع پر ہفتہ وحدت و اخوت منا کر بے نظیر اتحاد و یکجہتی کا مظاہرہ کیا جائے، میڈیا و عزاداروں سے خطاب
جامعۃ المرتضی جی نائن فور سے نکالے جانے والے ماتمی احتجاجی جلوس میں ہزاروں عزاداروں، علماء و ماتمیوں کی شرکت،علم حضرت عباس ؑ علمدار ؑ کی پرچم کشائی

اسلام آباد ( )سپریم شیعہ علماء بورڈ کے سرپرست اعلی قائد ملت جعفریہ آغا سید حامد علی شاہ موسوی نے کہاہے کہ انتہا پسند دہشت گرد جماعتوں کا صرف نام نہیں کام بھی کالعدم کروایا جائے ورنہ ایف اے ٹی ایف جیسے ادارے ڈومور کی رٹ جاری رکھیں گے،مسلمان ممالک استعماری قوتوں سے بھیک مانگنا چھوڑ دیں ورنہ سب اسرائیل کو تسلیم کرنے پر مجبور ہوں گے مسلمانوں میں جغرافیائی سرحدیں ضرور ہیں نظریاتی سرحد کوئی نہیں، صفین سے جنم لینے والی خارجی فکر پر چلنے والے تکفیر اور توہین کا سلسلہ جاری رکھے ہوئے ہیں،تکفیر ی نعرے لگانے والی شخصیت کو مشیر بنانے کے بعد مشرق وسطی میں سفارتی ذمہ داریاں سونپنا سوالیہ نشان ہے؟،شیعہ سنی نے مل کر پاکستان بنایا مل کر حفاظت کریں گے کوئی طاقت شیعہ سنی میں تفریق نہیں ڈال سکتی ہے،کالعدم دہشت گرد جماعتوں نے بہر حال نابود ہونا ہے حکومت اپنی ذمہ داریاں پوری کرے۔

آغا حامد موسوی نے کہا کہ نام نہاد بنیاد اسلام بل نے فرقہ واریت کو ہوا دی،9ربیع الاول کو جشن مختار اور 12تا 17ربیع الاول میلاد النبی ؐ کے موقع ہفتہ وحدت و اخوت منا کر شیعہ سنی برادران بے نظیر اتحاد و یکجہتی کا مظاہرہ کریں،تکفیری نعرے انبیاء کرام کی توہین کے مترادف ہیں حکومت شر انگیزی کرنے والوں کے خلاف کا روائی کرے۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے ایام عزائے حسینی ؑ کے اختتام اور شہادت امام حسن عسکری علیہ السلام کی مناسبت سے مرکزی امام بارگا جامعۃ المرتضی جی نائن فور اسلام آباد سے برآمدہو نے والے ماتمی احتجاجی جلوس کے دوران میڈیا اور ملک بھر سے آئے عزاداروں سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔اس موقع پر علماء کی کثیر تعداد بھی موجود تھی۔

آغا سید حامد علی شاہ موسوی نے کہا کہ گریٹر اسرائیل اور اکھنڈ بھارت کی سازش کا نشانہ مسلمان اور مقامات مقدسہ ہیں،استعمار کے پٹھو ممالک نے ہی مزارات اور مشاہیر کی توہین کا سلسلہ شروع کیا جنت البقیع کے مزارات مسمار کروا کے مسلمانوں کی زبوں حالی کا آغاز کیا گیا،قرآن کی سورہ صافات میں حضرت ابراہیم علیہ السلام کو حضرت نوح کا شیعہ کہا گیااس کے علاوہ حضرت موسی ٰ کے پیروکاروں کو شیعہ کہا گیا لیکن اس کے باوجود کافر کافر کے نعرے علی الاعلان لگائے جارہے ہیں جو اسلام اور انبیاء کی توہین ہے اہلبیت اطہارؑ اورصحابہ کرامؓ کی توہین کرنے والے خوارج نے صفین میں جنم لیا حضرت عمر بن عبد العزیزؑ نے حضرت علی المرتضی ؑ پر70سالہ سب و شتم کا سلسلہ بند کروایا۔

انہوں نے کہا کہ دو قومی نظریہ کی مخالف قوتوں نے آج تک پاکستان کو تسلیم نہیں کیاپاکستان کو پلیدستان اور قائد اعظم کو کافراعظم کہنے والے ملک پر مسلط ہیں سقوط ڈھاکہ پر جس کانگریسی ٹولے نے کہا کہ ہم پاکستان بنانے کے گناہ میں شریک نہیں آج وہ پاکستان کی ہر شے کو اپنا تابع بنانا چاہتے ہیں۔آغا سید حامد علی شاہ موسوی نے کہا کہ ضیاء الحق نے دو قومی نظریہ پر حملہ کیا تو ہم نے اسلام آباد سیکرٹریٹ پر قبضہ کیااور پاکستان کے پرچم کے ساتھ حضرت عباس علمدار کا علم لہرا کر بتادیا کہ کربلا کی راہ پر چل کر نظریہ اساسی کی حفاظت کریں گے آمر ضیاء الحق نے میلاد و عزاداری کے جلوسوں پر پابندی لگائی تو ہم نے ایجی ٹیشن کیا، ساری دنیا جان لے جب تک دم میں دم ہے کوئی طاقت نانا نبیؐ کے میلاد اور نواسہ حسین ؑ کی عزادار ی کے جلوسوں کو نہیں روک سکتی۔

آغا سید حامد علی شاہ موسوی نے کہا کہ مختلف حکومتیں انتہا پسندوں کو کالعدم اور ممنو ع تو قرار دیتی رہیں لیکن انہیں کام کرنے سے روکنے میں ناکام رہیں جس کے سبب دنیا میں پاکستان کی رسوائی ہو رہی ہے تحریک نفاذذ فقہ جعفریہ کو یہ اعزا حاصل ہے کہ اس کی پیہم جدوجہد اور مطالبے پر دہشت گرد جماعتوں کو کالعدم قرار دیا گیالیکن یہ پابندی عملی شکل میں کبھی نہ آسکی آج بھی کالعدم جماعتوں کے افراد اہم حکومتی عہدوں پر فائز ہیں۔ قبل ازیں قائد ملت جعفریہ آغا سید حامد علی شاہ موسوی نے جامعہ المرتضیٰ پہنچنے پر حضرت عباس علمدار ؑ کے علم مبارک کی پرچم کشائی اور دعا کی۔

بیسیوں ماتمی دستوں نے پرسہ داری اور نوحہ خوانی کی ماتمی جلوس اپنے روایتی راستے سے گزرکرباب رسول خدا جامعہ المرتضی میں اختتام پذیرہوا۔اس موقع پر پولیس اور مختارفورس کے رضا کاروں نے سیکیورٹی کے خصوصی انتظامات کررکھے تھے۔ مختار سٹوڈنٹس آرگنائزیشن ایم ا و اور مختار جنریشن کی جانب سے عزاداری کیمپ لگائے گئے تھے، جبکہ ابراہیم سکاؤٹس اوپن گروپ کا چاق و چوبند دستہ جلوس کی قیادت کر رہا تھا۔

پاکستان بھر سے نمائندہ علمائے کرام‘مذہبی عمائدین‘ماتمی سالاروں اور مختلف مکاتب فکر کے افراد نے بڑی تعداد میں پرسہ داری میں شرکت کی۔آغا سید محمد مرتضیٰ موسوی ایڈووکیٹ‘آغاسیدعلی روح العباس موسوی ایڈووکیٹ نے تمام شرکاء سے اظہارِ تشکر کیا۔

قائد ملت جعفریہ آغا سید حامد علی شاہ موسوی حلقہ ماتم میں پرسہ داری کررہے ہیں ۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.