یوم ولادت پرنور حضرت ابوطالب علیہ السلام ’’یوم نگہبان رسالتؐ‘‘ کے طورپر منایاجائیگا

ولایت نیوز شیئر کریں

یوم ولادت پرنور حضرت ابوطالب علیہ السلام ’’یوم نگہبان رسالتؐ‘‘ کے طورپر منایاجائیگا
 ذلت و رسوائی سے نجات پانے کیلئے امت مسلمہ کوسیرت ابو طالب ؑکی عملی پیروی ضروری ہے۔ ڈاکٹرایس ایم رضوی
  پروگراموں میں دین خدا کی سربلندی کیلئے زمانے کی سختیوں کا ڈٹ کر مقابلہ کرنے کاعہدکیاجائے   ،کنوینرٹی این ایف جے کااجلاس سے خطاب

راولپنڈی ( ) قائد ملت جعفریہ آغا سید حامد علی شاہ موسوی کے اعلان کے مطابق جمعرات29شوال کو ولادت باسعادت عم رسولؐپاسبان ختمی مرتبت ؐ حضرت ابو طالبؑ ’’یوم نگہبان رسالت ؐ  ‘‘ مذہبی جذبے اورعقیدت واحترام کیساتھ منایاجائیگا۔ٹی این ایف جے یوم نگہبان رسالت کمیٹی کے کنوینرڈاکٹرایس ایم رضوی نے انتظامی اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے پیروانِ دین و شریعت سے اپیل کی کہ وہ ’’ یوم نگہبان رسالت ‘‘ کے موقع پر محافلِ میلاد،جلسوں ،کانفرنسوں اور دیگر تقریبات کا انعقاد کرکے بارگاہِ ختمی مرتبت ؐ میں تہنیت و تبریک پیش کیاجائیگا، پروگراموںمیں وبائوں ، مصائب وآلام سے نجات ،دہشتگردی کے خاتمہ کیلئے عساکرپاکستان کی کامیابی  اور عالم اسلام کی سربلندی کیلئے دعائیں مانگی جائیں ۔انہوں نے کہاکہ ذلت و رسوائی کے اندھیروں سے نکلنے اور استعماری طاقتوں کے ظلم و جبر سے نجات پانے کیلئے امت مسلمہ کوسیرت ابو طالب ؑکی عملی پیروی وقت کی اہم ترین ضرورت ہے ۔انہوں نے کہاکہ ٹی این ایف جے کی جانب سے ’’یوم نگہبان رسالت ؐ ‘‘ منانے کا مقصد عوام الناس میں ان ذواتِ مقدسہ کی اقتدا ء اور تقلید و تاسی کا جذبہ پیدا کرنا ہے جن کی قربانی کے سبب خدا کے دین کو عروج و کمال عطا ہوا۔کیونکہ خاصانِ الہی کی ذمہ داریوں میں سے ایک اہم ترین ذمہ داری یہ بھی ہے کہ وہ اقوام و ملل کو ان دنوں کی یاد دلاتے رہیں جن میںکارہائے حسنہ اور اہم واقعات و سانحات رونما ہوئے یہ یاد دلانا اور یاد منانا تقویت ایمان ‘اعلیٰ دینی اقدار کی مضبوطی اور اساس دینی کا بہترین حامل ہے تاکہ ان دنوں کو منا کر تحقیق و جستجو کی جائے کہ تبلیغ و ترویج دین میں ذواتِ مقدسہ کو کن کن مشکلات اور مصائب و آلام کا سامنا رہا ۔انہوں نے کہا کہ حضرت ابوطالب ؑ انبیائے ماسبق کے ترجمان،بیت اللہ کے پاسبان اور کلید بردار بھی تھے جب تک ابو طالب ؑ کا وجود باقی رہا مکہ کے کافر رسول ؐ کو نقصان پہنچانے کی کسی سازش میں کامیاب نہ ہوسکے ۔ڈاکٹررضوی نے کہا کہ عہد حاضر کا تقاضا ہے کہ سیرت ابو طالب ؑ پر عمل پیرا ہوتے ہوئے اس عزم اور عہد کا اعادہ کیا جائے کہ دین خدا کی سربلندی کیلئے زمانے کی سختیوں اور مصائب کا ڈٹ کر مقابلہ کیا جائے گا ۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.