بلوچستان میں نیشنل ایکشن پلان مذاق بن چکا وزیر اعظم آرمی چیف نوٹس لیں، توہین رکوانے کیلئے فکر اقبال ؒ پر عمل کرناہوگا ،آغا حامد موسوی

ولایت نیوز شیئر کریں

بعض قوتیں پاکستان کوFATF کی بلیک لسٹ میں ڈلوانا چاہتی ہیں حکومت اور عوام ذمہ داریاں پوری کریں،آغا حامد موسوی
بلوچستان میں وطن اور فوج سے محبت کرنے والوں کو اذیتیں دی جارہی ہیں نیشنل ایکشن پلان مذاق بن چکا وزیر اعظم آرمی چیف نوٹس لیں
حکومت کالعدم جماعتوں کے ہمدردوں اور سرپرستوں کے ٹریپ سے بچ کررہے!سیاسی مشکلات سے نکلنے کیلئے اصولوں پر سمجھوتہ نہ کیا جائے
استعماریت و صیہونیت مسلمان مسالک اور ممالک کو لڑارہی ہیں دہر میں اسم محمدؐ کا اجالا بکھیرنے کیلئے امت مسلمہ کو متحد ہونا ہو گا
ذات خدیجہؑ عشق رسالتؐ کی لازوال درسگا ہ ہے،شا ن مصطفوی ؐمیں توہین رکوانے کیلئے فکر اقبال ؒ پر عمل کرناہوگا،علامہ قبالؒ کی مجلس ترحیم سے خطاب

اسلام آباد( )سپریم شیعہ علماء بورڈ کے سرپرست اعلی قائد ملت جعفریہ آغا سید حامد علی شاہ موسوی نے کہا ہے کہ بعض نادیدہ قوتیں پاکستان کو ایف اے ٹی ایف کی بلیک لسٹ میں ڈلوانے کی مکروہ کوشش میں مصروف ہیں حکومت اور عوام ذمہ داریاں پوری کریں، بلوچستان میں وطن اور فوج سے محبت کرنے والوں کو اذیتیں دی جارہی ہیں نیشنل ایکشن پلان مذاق بن چکا ہے وزیر اعظم آرمی چیف نوٹس لیں، اختیار و اقتدار آنی جانی ہیں حکومت شدت پسند کالعدم جماعتوں کے ہمدردوں اور سرپرستوں کے ٹریپ سے بچ کررہے سیاسی مشکلات سے نکلنے کیلئے اصولوں پر سمجھوتہ نہ کیا جائے، پاکستان نے انسداد دہشت گردی کیلئے سب سے زیادہ قربانیاں دیں، شا ن مصطفوی ؐمیں توہین کی شاتمانہ حرکات رکوانے کیلئے امت مسلمہ کو فکر اقبال ؒ پر عمل کرناہوگا،استعماریت و صیہونیت مسلمان مسالک اور ممالک کو لڑارہی ہیں دہر میں اسم محمدؐ کا اجالا بکھیرنے کیلئے امت مسلمہ کو متحد ہونا ہو گا، حضرت خدیجہ الکبریؑ کی ذات عشق رسالتؐ کی لازوال درسگا ہ ہے مشاہیر اسلام کے کردار و افکار کی مشعل کو ہمیشہ سربلند رکھیں گے،دنیا کی ہر مظلوم قوم نے اقبال سے رشتہ جوڑنے میں فخر محسوس کیا۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے حکیم الامت علامہ محمد اقبال ؒ کے یوم وفات پر مجلس ترحیم سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔آغا سید حامد علی شاہ موسوی نے کہا کہ علامہ محمد اقبال ؒ سچے عاشق رسولؐ تھے جنہوں نے مسلمانوں کے زوال کے اسباب کا تجزیہ کیا اور اپنے قلم سے امت کو جھنجھوڑنے کی بھرپور کوشش میں مصروف رہے نو آبادیاتی نظام کو کرچی کرچی کرنے میں علامہ اقبال کی فکریات نے نمایاں ترین کردار ادا کیا۔انہوں نے کہا کہ اقبال یہ حقیقت جان چکے تھے کہ مسلمان قرآن سے عملی ناطہ توڑ چکے ہیں اور علم وفن مسلمانوں کے ہاتھوں سے نکل کر مغرب کے پاس جا گزیں ہو چکے ہے لہذا اقبال نے مسلمانوں کو اپنی کھوئی ہو ئی میراث حاصل کرنے کی جانب متوجہ کیا، اقبال نے مسلمانوں کو ملوکیت و استعماریت کی ضرر رسانیوں سے آگاہ کیا اور مسلمانوں کو محض بیماری ہی نہیں اس کا علاج بھی تجویز کیا۔آغا سید حامد علی شاہ موسوی نے کہا کہ علامہ اقبال کا کا کلام قرآن کی تفسیر تھا اسی وجہ سے ان کا کلام کسی ایک ملک اور زمانے کیلئے نہیں تھاآج بھی غریب اورمظلوم اقوام فکر اقبال سے استفادہ کرکے اپنے مسائل و مصائب سے نجات پاسکتی ہیں۔انہوں نے کہا کہ ذات مصطفوی سے وفا کائنات کو مسخر کرنے کا وسیلہ ہے بدقسمتی سے مسلمان نبی کریم ؐ سے وابستگی کا اظہار تو کرتے ہیں لیکن ان کی تعلیمات سے دن بدن دور ہوتے چلے جارہے ہیں اور اس دوری میں صیہونی و استعماری تہذیب کے درندوں کا بھرپور یاتھ ہے۔آقای موسوی نے واضح کیا کہ اگر عالم اسلام امہات المومنین ؓ، صحابہ کبارؓ اور اہل بیت اطہار ؑ کے مزارات کی توہین پر خاموش نہ رہتا تو کسی قوت کو شان محمدی ؐ میں گستاخانہ خاکے بنانے کی جرات نہ ہوتی، عالم اسلام کو اسلام کی ہر نشانی کی عزت و توقیر کی بحالی کیلئے ایک اور نیک ہو کر اقدام اٹھانے ہوں گے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.