ویٹو پاور کے سبب اقوام متحدہ ناکام رہی،ظلم فنا ہوگیا مصطفویؐ چراغ کربلا سے سامرا وتک جگمگا رہے ہیں، محفل امام نقیؑ سے قائد ملت جعفریہ آقای موسوی کا خطاب

ولایت نیوز شیئر کریں

ویٹو پاور کے سبب اقوام متحدہ اپنے مقاصد کے حصول میں ناکام چلی آرہی ہے، قائد ملت جعفریہ آغا حامد موسوی
بھارت کو سلامتی کونسل کا مستقل رکن بنانا ایٹمی خطے کو چنگاری دینے کے مترادف ہوگا، امن پسند قوتیں اپنا کردار ادا کریں
مقبوضہ کشمیر میں من پسند یورپی وفد کا دور ہ دنیا کی آنکھوں میں دھول جھونکنے کے مترادف ہے، کوئی حربہ کشمیر کی تحریک حریت کو نہیں روک سکتا
ظلم کی آندھیاں فنا ہوگئیں مصطفوی چراغوں کی روشنی مدینہ و نجف سے کربلاو سامرا وتک جگمگا رہی ہے، دہشت گردی آل نبی ؐ کی محبت کم نہ کر سکی
نفرت اور ظلم کا مقدرزیر ہوناہے، امام علی نقی کی اولاد نے برصغیر میں اسلام پھیلانے میں نمایاں کردار ادا کیا، محفل علی الہادی سے خطاب

اسلام آباد( ولایت نیوز) سپریم شیعہ علماء بورڈ کے سرپرست اعلی قائد ملت جعفریہ آغا سید حامد علی شاہ موسوی نے کہا ہے کہ طاقتور ممالک کی ویٹو پاور کے سبب آج تک اقوام متحدہ اپنے مقاصد کے حصول میں ناکام چلی آرہی ہے،بھارت و اسرائیل کے حق میں ویٹو پاور استعمال نہ ہوتی تو کشمیر و فلسطین آزاد ہو چکے ہوتے، لاکھوں کشمیریوں کے قاتل بھارت کو ویٹو پاور دینا ایٹمی خطے کو چنگاری دینے کے مترادف ہوگا بھارت کو سلامتی کونسل کا مستقل رکن بننے سے روکنے کیلئے دنیا کی تمام امن پسند قوتیں اپنا کردار ادا کریں،مقبوضہ کشمیر میں بھارتی من پسند یورپی وفد کا دور ہ دنیا کی آنکھوں میں دھول جھونکنے کے مترادف ہے، چانکیہ کا پٹھو مودی کتنے ہی حربے آزما لے کشمیر کی تحریک حریت کو نہیں روک سکتا،سامرا میں امام علی نقی علیہ السلام کا مرجع خلائق مزار بتلارہا ہے کہ دہشت گردی، نفرت اور ظلم کا مقدرزیر ہوناہے،ظلم کی آندھیاں فنا ہوگئیں مصطفوی چراغوں کی روشنی مدینہ و نجف سے کربلاکاظمین و سامرا و مشہدتک جگمگا رہی ہے ۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے امام علی نقی علیہ السلام کے یوم ولادت پرنور کے موقع پر محفل ’علی الہادی‘ سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔

آغا سید حامد علی شاہ موسوی نے کہا کہ روحانیت اور صداقت کا مقابلہ دنیا کی کوئی مادی طاقت نہیں کرسکتی،فروری 2006میں فرزند رسول امام نقی اور ان کے فرزند امام حسن عسکری کے روضے کے گنبد کو دہشت گرد حملے کو اڑا دیا تھا بعازاں ان کے مزار اقدس کے میناروں کو بھی جون اور جولائی 2007میں بارود سے اڑا دیا گیا لیکن اس خانودہ نبی کریم ؐ کی ہستیوں کی محبت لوگوں کے دلوں سے کم نہ ہوسکی بلکہ اور بھی بڑھ گئی، اسلام دشمن قوتوں کے پروردہ دہشت گرد اپنے منہ چھپاتے پھر رہے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ دنیا بھر سے نہ صرف مسلمان بلکہ دیگر مذاہب سے تعلق رکھنے والے بھی لاکھوں کی تعداد میں اس امام علی نقی کی تعلیمات کے مصطفوی ؐ چشمے سے سیراب ہو رہے ہیں حق و صداقت کے روشن چراغ کو بدترین دہشت گرد ہوائیں، ظالموں کا جبر اور حکمرانوں کی سختیاں تمام تر توانائیاں صرف کرنے کے باوجود بجھانے میں کامیاب نہیں ہو سکیں۔

امام علی نقی علیہ السلام کے فضائل و مناقب بیان کرتے ہوئے آغا سید حامد علی شاہ موسوی نے کہا کہ حضرت امام علی نقی نے پوری زندگی تعلیمات مصطفوی ؐ و مرتضوی ؑ کے عین مطابق بسر کی لو گ انہیں دیکھ کر نبی کریم کا عکس نظر آتا تھا،آپ نے ہر چیز پر اللہ کی اطاعت کو ترجیح دی، حکمران ہر وقت اس کوشش میں رہتے کہ ان پر کوئی ایسا الزام لگا دیا جائے انہیں بدنام کیا جا سکے اور ان کی عظمت عوام کے دلوں میں کم کی جا سکے لیکن ہمیشہ انہیں ناکامی کا سامنا کرنا پڑتا، امام علی نقی ؑ کو جس قید خانہ میں بھیجا جاتا وہ اپنے مصلے کے سامنے ایک قبر کھدی ہوئی تیار رکھتے تھے، سپاہی اور نگران جب ا س پر حیرت ودہشت کااظہار کرتے تو آپ فرماتے کہ میں اپنے دل میں موت کاخیال قائم رکھنے کے لیے یہ قبر اپنی نگاہوں کے سامنے تیار رکھتا ہوں، دراصل یہ ظالم حکومت کو عملی جواب تھا کہ جنہیں موت سے اس قدر محبت اور بے تابی سے انتظار ہو اورجو شخص موت کے لیے اتنا تیار ہو کہ ہر وقت کھدی ہوئی قبر اپنے سامنے رکھے اسے ظلم و ستم کی سختیوں کے ساتھ کیسے جھکایا جا سکتا ہے۔

انہوں نے کہا کہ امام علی نقی علیہ السلام کی سیرت اوراخلاق وکمالات سیرت مصطفوی ؐ کی عملی تفسیر تھے قید خانے اور نظر بندی کاعالم ہو یا آزادی کا زمانہ ہر وقت اور ہر حال میں یاد الٰہی،عبادت خداوندی، کتنی ہی سختیاں کیوں نہ ہوں صبر و شکر کا پیکر بے مثال،خدمت مخلوق، خلق ْ خدا سے استغناء بدترین دشمنوں کے ساتھ حلم ومرّوت سے کام لینا، مصیبت میں انکی جت روائی کرنا،محتاجوں اور ضرورت مندوں کی امداد کرنا،اپنے عمل سے تبلیغ جیسے مصطفوی ؐ اوصاف امام علیہ السّلام علی نقی علیہ السّلام کی حیات طیبہ میں جا بجا نظر آتے ہیں۔آغا سید حامد علی شاہ موسوی نے کہا کہ جلال الدین سرخ پوش بخاری، حضرت جہانیاں جہاں گشت، حضرت محبوب عالم شاہ جیونہ سے شاہ اللہ دتہ بھاکری تک امام علی نقی علیہ السلام کی اولاد اطہر نے برصغیر پاک و ہند میں اسلام پھیلانے میں نمایاں کردار ادا کیا، آج بھی اولیائے کرام کی تعلیمات پر عمل کر کے پاکستان ہی نہیں پوری دنیا کو امن کا گہوارہ بنایا جا سکتا ہے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.