حکومت اسرائیلی پائیلٹ کی چہ میگوئیوں کے بارے میں وضاحت کرے،کالعدم جماعتوں کو قومی دھارے میں لانے کی باتیں متاثرین دہشتگردی کے زخموں پر نمک پاشی ہے،آغا حامد موسوی  

ولایت نیوز شیئر کریں

مسلم ممالک میں افتراق و انتشارپیدا کرکے مداخلت کرنا دنیائے شیطنت کا ایجنڈا ہے۔حامد موسوی

بھارت نے چانکیائی سیاست چل کر مسلم ممالک کو پاکستان سے دورکرنے پرپوری قوت صرف کررکھی ہے،پلوامہ طرز کا دھماکہ بھی زاہدان میں بھارت ہی نے کروایا

امریکہ نے نائن الیون کا ڈرامہ رچا کر افغانستان کو نشانہ بنایابھارت پلوامہ کی آڑ میں پاکستان پر حملہ آور ہوا ،مگر اس تین روزہ جنگ میں تائید غیبی پاکستان کے شامل حال تھی

پاکستا ن نے د و جہاز گرائے ، دو پائلٹ گرفتار کیے ، ایک پائلٹ زندہ سلامت بھارت کے حوالے کردیا حکومت دوسرا پائلٹ اسرائیلی ہونے کی چہ میگوئیوں کے بارے میں وضاحت کرے

ایران کا ایک دشمن اسرائیل جبکہ پاکستان کے بھارت و اسرائیل دو دشمن ہیں،کسی برادر مسلم ملک کیخلاف جارحیت یا پاک سرزمین استعمال کرنے کا سوال ہی پیدا نہیں ہوتا

اسرائیل بھارت کا مددگار ہے ، مسلم ممالک کندھے سے کندھا ملا کرکیوں نہیں چل سکتے ؟سیرت امام باقر علوم الہی کا خزینہ ہے۔قائد ملت جعفریہ کا محفل باقر العلومؑ سے خطاب

اسلام آباد( ولایت نیوز)سرپرستِ اعلیٰ سپریم شیعہ علماء بورڈ و قائد تحریک نفاذِ فقہ جعفریہ آغاسیدحامدعلی شاہ موسوی نے کہا ہے کہ مسلم ممالک میں افتراق و انتشارپیدا کرکے مداخلت کرنا دنیائے شیطنت کا ایجنڈا ہے،بھارت نے چانکیائی سیاست چل کر مسلم ممالک کو پاکستان سے دورکرنے پرپوری قوت صرف کررکھی ہے،پلوامہ طرز کا دھماکہ بھی زاہدان میں بھارت ہی نے کروایا،جس طرح امریکہ نے نائن الیون کا ڈرامہ رچا کر افغانستان کو نشانہ بنایاتھااسی طرح بھارت پلوامہ کی آڑ میں پاکستان پر حملہ آور ہوا ،مگر اس تین روزہ جنگ میں تائید غیبی پاکستان کے شامل حال تھی پاک فضائیہ کے شاہینوں نے د وجہاز گرائے ، دو پائلٹ گرفتار کیے مگر ایک بھارتی پائلٹ پیغام امن کے طور پر زندہ سلامت بھارت کے حوالے کردیا دوسرا پائلٹ اسرائیلی ہونے کی چہ میگوئیاں جاری ہیں لہذ حکومت قوم کو بتائے کہ دوسرا پائلٹ کون تھا ؟ایران کا ایک دشمن اسرائیل جبکہ پاکستان کے بھارت و اسرائیل دو دشمن ہیں،کسی برادر مسلم ملک کیخلاف جارحیت یا پاک سرزمین استعمال کرنے کا سوال ہی پیدا نہیں ہوتااسرائیل بھارت کا مددگار ہے اور اسکے ساتھ کندھے سے کندھا ملا کر چلتاہے تو مسلم ممالک ایک دوسرے کیساتھ کندھے سے کندھا ملا کرکیوں نہیں چل سکتے؟ سیرت امام باقر ؑ عالم اسلام کی سرخروئی کی ضمانت ہے سائنس اور ٹیکنالوجی کا علم مسلمانوں کی میراث ہے جس میں کمال حاصل کرکے ہی زوال سے نکلا جا سکتا ہے ان خیا لات کا اظہار انہوں نے ہفتہ کو عالمی عشرہ اجررسالت کے آغاز پر یوم ولادت پرنور حضرت امام محمد باقرؑ کی مناسبت سے محفل باقر العلومؑ سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔

آقای موسوی نے باورکرایا کہ روس کی شکست و ریخت کے بعد شیطانی قوتوں نے دہشتگردوں کو تخلیق کیا جنہیں جنگجو کا نام دیا گیا ۔

انہوں نے واضح کیا کہ پاکستان کا نظریہ اساسی اسلام ہے اور یہ ایٹمی قوت بھی ہے جو سی پیک کی وجہ سے ترقی کی منازل طے کررہا ہے۔

انہوں نے کہا کہ افغانستان میں روسی مداخلت کو جواز بنا کر پاکستان کو استعمال کیا گیا پھر روسی انخلاء کے بعد عالمی استعمار خود بھی وہاں سے راہ فرار اختیار کرگیا مگر اسکے پالتو جنگجوؤں نے پاکستان میں ڈیرے ڈال دیئے ۔

آقای موسوی نے کہا کہ عالمی استعمار نے ڈکٹیٹر ضیاء الحق کے ذریعے پاکستان کو گروہی اسٹیٹ بنانے کا اعلان کروا کے دو قومی نظریے سے ہٹانا چاہا اوردوسری جانب ایران کو سبق سکھانا چاہاجبکہ ایران وہ ملک ہے جس نے سب سے پہلے پاکستان کو تسلیم کیا اور اقوام متحدہ کا رکن بنوایا ،65ء اور 71ء کی جنگجوں میں پاکستان کا بھرپور ساتھ دیااور پاکستان نے بھی ہر مشکل میں ایران کا بھرپور ساتھ نبھایا ۔

آغا سید حامدعلی شاہ موسوی نے کہا کہ اسرائیل فلسطینیوں کا قتل عام کررہا ہے جبکہ بھارت نے کشمیریوں پر ظلم و بربریت کے پہاڑ توڑ رکھے ہیں جن میں مزید اضافہ ہورہا ہے۔

انہوں نے کہا کہ مسلم حکمرانوں کو سوچنا چاہیئے کہ یک بام دو تاہوا کیوں؟آقای موسوی نے یہ بات زوردیکر کہی کہ مسلم دنیا ذہن نشین رکھے کہ پاکستان نے کبھی جارحیت نہیں کی بلکہ عربوں اور اسرائیل کی جنگوں میں بھی پاکستانی پائلٹ عبدالستار نے اسرائیلی طیارہ مار گرایا تھا جسکی وردی آج بھی میوزیم میں موجود ہے ۔

انہوں نے کہا کہ برادر ملک ایران کو ذہن نشین رکھنا چاہیئے کہ اسلام ملتِ واحدہ ہونے کے ناطے ہمارے دکھ سکھ سانجھے ہیں۔انہوں نے کہا کہ پوری دنیا پر عیاں ہے کہ بلوچستان میں گرفتار ہونیوالابدنام زمانہ خطرناک بھارتی جاسوس کلبھوشن کس راستے سے پاکستان وارد ہوا تھا۔

قائد ملت جعفریہ آغاسیدحامدعلی شاہ موسوی نے کہا کہ دنیائے دہشتگردی کے سرغنے نے پاکستان کی سرزمین استعمال کی تھی ،اگر کسی اور نے استعمال کی ہے تو وہ بھی استعمار کے تخلیق کردہ ہیں۔

انہوں نے کہا کہ بعض ممنوعہ گروپ پاکستان میں ہونیوالی دہشتگردی میں مختلف ناموں سے ملوث ہیں جنہیں بینظیر بھٹو دور سے کالعدم قراردیا جارہا ہے اور اسوقت انکی تعداد ساڑھے پانچ درجن کے لگ بھگ ہے۔

انہوں نے کہا کہ سانحہ اے پی ایس پشاور میں پاکستان کے مستقبل پر حملے میں ڈیڑھ سو کے قریب طلباء و طالبات اور اساتذہ نشانہ بنے جس کے نتیجے میں انسدادِ دہشتگردی کیلئے پوری قوم کے متفقہ نیشنل ایکشن پلان کے تحت ضربِ عضب آپریشن کیا گیا جبکہ عساکر پاکستان اب بھی رد الفساد آپریشن کے ذریعے دہشتگردوں کی کمر توڑ رہے ہیں لیکن نیشنل ایکشن پلان کی نصف درجن شقوں پر عمل ہی نہیں کروایا جاسکا۔

آقای موسوی نے کہا کہ اب عمران خان حکومت نے دہشتگردوں کے قلع قمع کا بیڑا ٰٹھایا ہے مگر ممنوعہ گروپوں کے خاتمے کا دعویٰ شلغم سے مٹی جھاڑنے کے مترادف ہے ۔

انہوں نے کہا کہ کالعدم جماعتوں کو قومی دھارے میں لانے کی باتیں پون لاکھ سے زائد شہدائے دہشتگردی کے خون،پاک فوج کے سپوتوں کی قربانیوں کو رائیگاں کرنے اور متاثرین دہشتگردی کے زخموں پر نمک پاشی کے مترادف ہے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.