یوم یکجہتی فلسطین :اسرائیلی درندگی ، ظلم بربریت عالم اسلام کیلئے چیلنج ہے، مسلم حکمران دلیرانہ حکمت عملی اخیتار کریں۔ علامہ محسن علی ہمدانی کا خطاب

ولایت نیوز شیئر کریں

راولپنڈی ( ولایت نیوز)قائد تحریک نفاذ فقہ جعفریہ آغاسیدحامدعلی شاہ موسوی کی کال پرجمعہ کو یوم یکجہتی فلسطین کے موقع پر ملک کے دیگر شہروں کیطرح راولپنڈی میں بھی تنظیم شیعہ آئمہ مساجدکے زیر اہتمام مرکزی جامع مسجد و امام بارگاہ قصر ابو طالب سے مظلومین فلسطین کیساتھ اظہار یکجہتی کیلئے احتجاجی ریلی نکالی گئی جس میں روزہ داروں نے بڑی تعداد میں شرکت کی۔ریلی کی قیادت امام جمعہ والجماعت علامہ محسن علی ہمدانی ، علامہ زاہد عباس کاظمی، سید اسد عباس ہمدانی اور دیگر رہنماؤں نے کی ۔ اس موقع پر مظاہرین سے خطاب کرتے ہوئے علامہ سید محسن علی ہمدانی نے اسرائیلی کی جانب سے فلسطین میں جاری ظلم بربریت کوعالم اسلام کیلئے چیلنج قرار دیتے ہوئے کہا کہ مسلم حکمرانوں کو خواب غفلت سے بیدار ہو کر مسلمانوں کے تحفظ اور مقامات مقدسہ کی بازیابی کیلئے دلیری کیساتھ عملی اقدامات کرنے ہوں گے۔ انہوں نے کہا کہ اس وقت پوری دنیا کو ظلم و ستم اور جبرواستبداد کا سامنا ہے مظلوم اقوام اور عالم اسلام شدید دباؤ میں ہیں ہر سو نئے نئے جال بنے جارہے ہیں اور نت نئے ہتھکنڈے استعمال کیے جارہے ہیں ،کشمیرو فلسطین ریاستی دہشت گردی سے دوچار ہیں جہاں قتل عام کا بازار گرم ہے۔انہوں نے کہاکہ وطن عزیز پاکستان اندرونی و بیرونی طور پر دشمنوں کے حصار میں ہے جبکہ دوسری طرف حکومت و اپوزیشن کے درمیان محاذ آرائی جاری ہے انکی بلا سے عوام بھاڑ میں جائیں،ملک کے حساس علاقے افتراق و انتشار اور دہشت گردی سے دوچار ہیں،ہمارے نزدیک یہ قوم و ملک کے خلاف دشمن کی گھناؤنی سازش ہے لہذا ایسے میں مظلوم اور مسلم عوام پر لازم ہے کہ وہ مسلم ریاستوں بلکہ پورے عالم اسلام کے مسائل کے حل کیلئے مضبوط و مشترکہ پالیسی وضع کریں جس سے انسانیت کش عناصرکی حوصلہ شکنی ہو اور امن کے قیام کو ممکن بنایا جاسکے۔انہوں نے واضح کیا کہ اسلام امن و سلامتی کا پیامبر ہے جو ہر قسم کی جارحیت کی مذمت کرتا ہے۔انہوں نے یہ بات زوردیکر کہی کہ بقول قائدملت جعفریہ آغاسیدحامدعلی شاہ موسوی آج بھی اپنے اس موقف پر قائم ہیں کہ دہشت گرد کا کوئی مسلک وملک نہیں ہوتا وہ فقط دہشت گردہے لہذا اسے اسی تناظر میں دیکھا اور نمٹا جائے یہی خانوادہ محمد و آل محمد علیہم السلام اور پاکیزہ صحابہ کبار کا درس ہے جنہوں نے محبت و پیار کو فروغ دینے اور قتل و غارت گری سے ہمیشہ اجتناب و گریز کرنے کی تلقین کی۔علامہ سید زاہد عباس کاظمی نے فلسطین وکشمیر میں یہودو ہنود کے مظالم کی مذمت کرتے ہوئے کہا کہ اسرائیلی و بھارتی جبرو استبداد کا ڈٹ کر مقابلہ کرنے کیلئے ایک خدا و رسول ؐ ، ایک قرآن اور ایک کعبہ کو ماننے والے مسلمانوں کو ایک ہونا ہو گا اسی صورت میں اُنکی غیب سے مدد ہو گی اگر وہ اسی طرح آپس میں ٹکڑے ٹکڑے ہوتے رہے تو تاریخ کے گمنام قبرستانوں کی نذر ہو جائیں گے۔ انہوں نے مظاہرہ کے آخر میں عالم اسلام کی سربلندی فلسطین و کشمیر کی آزادی ،اسرائیل کی بربادی اور دہشتگردی کیخلاف جنگ میں جام شہادت نوش کرنے والے کرنل سہیل عابد اور دیگر شہدائے عساکر پاکستا ن کی بلند درجات کیلئے دعا کرائی۔بعد ازاں مظاہرین اسرائیل بھارت اور امریکہ کیخلاف نعرے لگاتے ہوئے پر امن طور پر منتشر ہو گئے۔

درایں اثنا تنظیم شیعہ آئمہ مساجد کی جانب سے جمعہ کے مرکزی اجتماعات کے دوران قائدملت جعفریہ آغاسیدحامدعلی شاہ موسوی کے اعلان کردہ’’ یوم یکجہتی فلسطین‘‘ کے موقع پر وفاقی دارالحکومت اسلام آباد سمیت ملک کے تمام چھوٹے بڑے شہروں اور قصبوں میں خطبات جمعہ کے دوران آئمہ اور خطباء حضرات نے کشمیرو فلسطین میں ظلم و بربریت قتل وغارت گری کے قلع قمع،عدل و انصاف کے قیام اور وطن کی سلامتی و استحکام کیلئے دعائیں کیں اوراسرائیلی بربریت کیخلاف خلاف صدائے احتجاج بلند کی گئی۔الکاظم میں تنظیم کے چیئرمین علامہ سیدتصورحسین نقوی القمی نے فلسطین میں مظلوم مسلمانوں کے بے دریغ قتل عام کی پرزورمذمت کرتے ہوئے عالمی اداروں پر زوردیا کہ وہ بے گناہ مسلمانوں کا قتل عام بند کروانے کیلئے اپنا کردار ادا کریں ،کشمیر وفلسطین کے دیرینہ مسائل اقوام متحدہ کی قراردادوں اور وہاں کے عوام کی امنگوں کے مطابق حل کروائیں گے جس کے بغیر وہاں امن کا خواب شرمندہ تعبیر نہیں ہوسکتے ۔ انہوں نے کہاکہ اسرائیل کی درندگی کا دردناک صورتحال کا واحد حل یہ ہے کہ مسلم ممالک کے حکمران عالمی طاغوت سے اپنی باگ ڈور چھڑا کر
ذاتِ پروردگار کو تھمائیں ،اپنے خول سے باہر نکلیں اور کسی بھی مسلم و مظلوم ملک پر حملہ اور کسی انسان کے قتل کو نہ صرف حرام گردانیں بلکہ انسانیت پر حملہ تصورکیا جائے۔انہوں نے ا مر پر افسوس کا اظہار کیا کہ کشمیروفلسطین میں نصف صدی سے زائد عرصہ سے ریاستی دہشت گردی جاری ہے جس کی وجہ سے لاکھوں افراد لقمہ اجل بن چکے ہیں ،ہزاروں جیلوں میں ہیں ،لا تعداد بچے یتیم اور عورتیں بیوہ ہوچکی ہیں ۔ یہ مصیبت کم نہ تھی ، عالمی سرغنہ ،اسرائیلی درندگی پرعالم اسلام، عرب لیگ اور او آئی سی کو سانپ سونگھ گیا ہے اور ان کی غیرت مر چکی ہے۔کوئی ہنگامی اجلاس طلب نہیں کیا اور نہ ہی احتجاج کیا ۔ جامع مسجدکاظمیہ دربار سخی شاہ پیارا میں جمعہ اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے علامہ مطلوب حسین تقی نے یہ بات زوردیکر کہی کہ تمام اسلامی ممالک کو فلسطین میں ہونے والے اسرائیلی مظالم کے خلاف آواز احتجاج بلندکرنی چاہیئے ،عالم اسلام کا نمائندہ ادار ہ او آئی سی موجودہ نازک صورتحال میں ٹھوس اور جراتمندانہ مشترکہ حکمت عملی وضع کرے کیونکہ عالمی استعمار کسی کا یار نہیں ،وہ فقط اپنے مفادات کا تحفظ اور بالادستی چاہتا ہے۔ انہوں نے س عزم کا اظہار کیا کہ اسلام کا پیغام روکنے اور دبانے کی ہر ساز ش ناکام ہوگی اور تمام مسلمان آپس کے اتحاد سے مسلم وحدت کو پارہ پارہ کرنے کے ہر حربے اور ہتھکنڈے کو اخوت و یگانگت کے ساتھ ناکام بنادیں گے۔جامع مسجد جعفریہ آئی نائن میں اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے کہا علامہ صادقی نے کہا کہ مسلم امہ اور مظلوم اقوام کو درپیش مسائل و مصائب یہود و ہنود اور عالمی استعمار پر مشتمل استعماری ثلاثہ کے پیدا کردہ ہیں جو باری باری سب کو نگلنا چاہتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ اگر عالم اسلام نے مشترکہ حکمت عملی نہ اپنائی تو کوئی بھو ل میں نہ رہے ،سب کی باری آسکتی ہے۔انہوں نے کہا کہ کشمیروفلسطین کے مسائل نصف صدی سے زائد عرصہ سے لاینحل ہیں،دنیائے طاغوت نے ثابت کردیا ہے کہ وہ ایک ہے اور ان کے اہداف و مقاصد بھی ایک ہیں لہذا دنیائے بشریت کا ٹھیکیدار اقوام متحدہ ،آئی سی سی اور او آئی سی سب پر لازم ہے کہ وہ سب سے پہلے عالمی استکبار کو بیرونی مداخلت سے روکیں او ر عالمی امن کو تہہ و بالا کرنے والے مسائل جن میں سر فہرست القدس شریف کی بازیابی اور کشمیرو فلسطین کی آزادی ہے حل کروائیں۔ دنیائے مظلومیت بالخصوص کشمیر و فلسطین ،افغانستان کے مظلوم عوام کے ساتھ اظہارِ یکجہتی کرکے عالم اسلام کے مصائب و آلام کے خاتمہ ،امن و سلامتی اور وطن عزیز پاکستان کے استحکام و ترقی کیلئے خضوع و خشوع کے ساتھ دعائیں مانگیں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.