کشمیر و فلسطین میں خون کی ہولی پر ’’اسلامی عسکری اتحاد ” کہاں ہے؟حضرت زینب ؑ بنت علی ؑ نے کمال صبر و عزم سےشیطنت کو شکست فاش سے دوچارکردیا۔ قائد ملت جعفریہ کا یوم شریکۃ الحسین کی مجلس سے خطاب

ولایت نیوز شیئر کریں

ٹرمپ کے امریکی صدر بننے کے بعد بھارت و اسرائیل کو اسلام دشمن ایجنڈے کی تکمیل کا نادر موقع فراہم ہوا ، امریکہ یہود و ہنود ثلاثہ اتحادانسانیت کیلئے عظیم خطرہ ہے

اسلام آباد(ولایت نیوز )سپریم شیعہ علماء بورڈ کے سرپرست اعلی و تحریک نفاذ فقہ جعفریہ کے سربراہ آغا سید حامد علی شاہ موسوی نے سری نگر میں ظالم بھارتی فورسزز کے وحشیانہ فوجی آپریشن کے نتیجے میں 17کشمیریوں کی شہادت کی پرزور مذمت کرتے ہوئے سوال کیا ہے کہ کشمیر و فلسطین میں استعماری شہ پر کھیلی جانے والی خون کی ہولی پر نام نہاد اسلامی عسکری اتحاد عرب لیگ اور او آئی سی کہاں ہیں؟ اگر مسلم حکمرانوں نے خواب غفلت سے بیدار ہو کر عالمی شیطانوں کی آلہ کار ی ترک نہ کی تو اُنکا نام ونشان بھی نہیں رہے گا ،حضرت زینب ؑ بنت علی ؑ نے کمال صبر و عزم سے دنیائے شیطنت کو شکست فاش سے دوچارکردیا،کربلا کی شیر دل خاتون نے عزم علی ؑ کے ساتھ قیام کر کے اپنے جگر ہلا دینے والے احتجاجی خطبات سے یزیدکی بساطِ سیاست کو الٹ دیا۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے سوموار کو حضر ت سیدہ زینب بنت علی ؑ کی شہادت کی مناسبت سے یوم شریکۃ الحسین کی مجلس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔

آقای موسوی نے اس امر پر دلی افسوس کا اظہار کیا کہ کشمیر و فلسطین کے مظلوم مسلمانوں پر ہنود ویہود نے گزشتہ 70سال سے عرصہ حیات تنگ کر رکھا ہے ہزاروں بیگناہ جام شہادت نوش کر چکے جبکہ اس سے زیادہ جیلوں میں سزائیں بھگت رہے ہیں ۔

اُنہوں نے کہا کہ بھار ت نے نہ صر ف حیدر آباد دکن ، جونا گڑھ اور مناما پر بلکہ کشمیر پر غاصبانہ قبضہ جمایا، اسی طرح بیسوی صدی کے شروع تک اسرائیل کا نام و نشان بھی نہیں تھا ،صیہونی قوتوں نے فلسطینی علاقوں پر تسلط قائم کیا ، 48ء میں اسرائیل کے قیام اعلان کر دیا ،اس دن سے لیکر آج تک فلسطینی صیہونی قبضہ سے آزادی کیلئے بے بہا قربانیاں دے رہے ہیں مگر کشمیری و فلسطینی تحریک آزادی دن بدن بڑھ رہی ہے ۔

اُنہوں نے کہا کہ ٹرمپ کے امریکی صدر بننے کے بعد بھارت و اسرائیل کو اسلام دشمن ایجنڈے کی تکمیل کا نادر موقع فراہم ہوا ہے کیونکہ امریکہ نے ہندو انتہا پسند مودی کیساتھ گٹھ جوڑ کر کے دہشتگردی کی جنگ میں پاکستان کو کارنر کرنے کی حکمت پر سرگرمی کیساتھ عمل شروع کر رکھا ہے ، مقبوضہ بیت المقدس کو اسرائیلی دارلحکومت تسلیم کروانے کے سازشی منصبوبے پر عمل شروع کیا جبکہ اس سے پہلے کسی امریکی صدر نے یہ جرات نہیں کی تھی ۔ انہوں نے یہ بات زور دے کر کہی کہ امریکہ اور یہود و ہنود کا گٹھ جوڑ پوری انسانیت کیلئے عظیم خطرہ ہے کیونکہ امریکی صدر ٹرمپ مسلم دنیا کو منتشر کر نے اور اُن پر دہشتگرد ہونے کا اعلان کر چکا ہے جسکی وجہ سے اس مقصد کیلئے اُس نے بر سر اقتدار آتے ہی کئی مسلم ممالک کے باشندوں پر امریکہ داخل ہونے کی پابندی لگائی اسلامی دہشتگردی کی اختراع ایجاد کی حالانکہ پوری دنیا جانتی ہے کہ امریکہ خود عالمی دہشتگرد اور دنیا کا امن تباہ کرنے والے بھارت و اسرائیل کا سرپرست ہے جنہوں نے مشرق وسطیٰ میں عراق ،شام ،لیبیا اور یمن کی اینٹ سے اینٹ بجا کر رکھ دی ہے اور گزشتہ 17سال سے افغانستان میں مظالم کے پہاڑ ڈھا رہا ہے ۔

آغا سید حامد علی شاہ موسوی نے کہا کہ اسرائیل ہو یا بھارت دونوں امریکہ کے ایماء پر مسلمانو ں کیخلاف سازشوں کے جال بچھانے میں مصروف ہیں ، سب سے پہلے برادر ملک سعودیہ کو استعمال کر کے نام نہاد اسلامی عسکر ی اتحا د بنایا، مودی کی کمر تھپ تھپا کر بھارت کو دہشتگردی کا شکار کہہ کرکشمیریوں کو دہشتگرد گردانا اور ایران کو دہشتگردی کا محور قرار دیا۔ انہوں نے کہا کہ سعوی ولی عہد شاہ سلمان کا کہنا ہے کہ اگلے 15سالوں میں ایران کیساتھ جنگ ہو سکتی ہے ، سعودی شاہ نے یہ بیان بھی عالمی سرغنے کی شہ پر دیا ہے جس سے ثابت ہوتا ہے کہ ابلیسی قوتیں بعض مسلم حکمرانوں کو استعمال کر کے مزید مسلم ممالک میں خون ریزی کرانے پر تلی ہوئی ہیں۔ اُنہوں نے اس امر پر تشویش کا اظہار کیا کہ کویت کی خواہش پر اقوام متحدہ نے فلسطین کے بارے میں تفتیش کے اجلاس کو بھی عالمی شیطان نے ویٹو کر دیا ہے گویا استعماری و صیہونی لابیاں اپنے مفادات کیلئے مشرق وسطیٰ اور جنوبی ایشیاء کو میدان جنگ بنانا چاہتی ہیں تاکہ اُنکے مفادات پوری ہو ں اور مسلم ممالک کبھی طاقتور نہ ہو سکیں۔ قائد ملت جعفریہ آغا سید حامد علی شاہ موسوی نے کہا کہ موجودہ عالمی تناظر میں مسلم امہ کو اپنے اختلافات بالائے طاق رکھ کر عالم سلام کے وسیع تر مفاد کیلئے یک جان ہو کر باطل کے مقابلے میں سیسہ پلائی دیوار بننا ہو گا۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.