گذشتہ حکومت نے ذکرعلیؑ حذف کرکے خیانت کی،مصیبت میں کربلاوالا بن جانا دھوکہ ہے،یمن کےسسکتے بچوں کیلئے کسی کوکربلا یاد کیون نہیں آئی؟ قائد ملت جعفریہ آغا حامد موسوی ؛ نئی حکومت کے کالعدم جماعت سے معاہدے کی مذمت

ولایت نیوز شیئر کریں

علی ابن ابی طالبؑ جیسے اعزازات کوئی نہ پاسکاعلی ؑہر غزوہ کے ہیروہیں گذشتہ حکومت نے یکساں نصاب میں خیانت کی، قائد ملت جعفریہ آغا حامد موسوی
سازش باہر سے نہیں گھر سے آتی ہے سابقہ حکمرانوں نے کونسا ایٹم بم بنایا یا چلایا کہ ان کے خلاف سازش ہوئی؟ہر طرف جھوٹ اور دھوکہ بازی کا راج ہے
مصیبت آنے پر اپنے آپ کو کربلاوالا بنالینا فریب اور دھوکہ ہے کربلا والوں کی خاک پا سے بھی کوئی نہیں ملتا،یمن کے سسکتے بچوں کیلئے کسی کوکربلا یاد کیوں نہیں آئی؟
گذشتہ حکومت نے چار دیواری کے اندر ذکر کربلا کی مجالس پر ایف آئی آرز درج کیں شہادت علیؑ کے جلوسوں کو روکنے کی کوشش کی ذکر نبیؐ وآل نبیؐ آج بھی جاری ہے
اوآئی سی کانفرنس کوئی کارنامہ نہیں اگر مسجد اقصی اسی طرح جلنی ہے تواو آئی کانفرنسوں کا کیا فائدہ؟ قرآن اور رسول ؐ کی توہین ہو رہی ہے اوآئی سی کہاں ہے؟
پہلے اپنے آپ کو ٹھیک کریں پھر اسلاموفوبیا کی بات کریں گم شدہ بچی کا مسجد سے اعلان نہ کرنے دینا تعصب کی انتہا ہے، ہر ظالم کے دشمن ہیں خواہ سگا بھائی ہی کیوں نہ ہو
سابقہ وزیر کھل کر کالعدم جماعتوں سے دوستیوں کا اعتراف کرتے تھے نئی حکومت بھی اسی روش پر گامزن ہے؟ بنیاد اسلام بل کی کوئی بنیاد نہیں نہ اسلام سے تعلق ہے
سیاستدان جماعتی ملکی مفادات کو داؤ پر نہ لگائیں، روس اپنے آپ کو متحد نہ رکھ سکا مسلمانوں کو کیسے جوڑ سکتا ہے؟ کرسی سے محبت کرنے والوں کا کائی رشتہ دار نہیں ہوتا
علی ؑپہلے صحابی ہیں جن کی منبروں سے توہین کی گئی ہر گستاخ سے اظہار برات کرنا ہوگی،مسلمان قرآن و اہلبیتؑ کو تھامے رکھتے توکسی کو توہین قرآن و رسول ؐکی جرات نہ ہوتی
جمعۃ الوداع یوم القدس حمایت مظلومین،جشن نزول قرآ ن،8شوال یوم انہدام جنت البقیع منانے کا اعلان، تحریک نفاذ فقہ جعفریہ کے سربراہ کا یوم شہادت علی ابن ابی طالب کے جلوس کے دوران عزاداروں اور میڈیا سے خطاب

اسلام آباد/راولپنڈی(ولایت نیوز )قائد ملت جعفریہ آغا سید حامد علی شاہ موسوی نے 21 رمضان کو ہیڈکوارٹر مکتب تشیع علی مسجد سئے نکالے جانے والےشہادت علی ابن ابی طالب علیہ السلام کے مرکزی جلوس کی قیادت کی ۔

جلوس کے دوران میڈیا نمائندوں اور عزاداروں کے وفود سے خطاب کرتے ہوئے تحریک نفاذ فقہ جعفریہ کے سربراہ آغاسید حامد علی شاہ موسوی نے کہا کہ آج سارا عالم اسلام خیر البشر حضرت محمد مصطفی صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کو ان کے بھائی حضرت علی المرتضیؑ کا پرسہ دے رہا ہے علی ابن ابی طالبؑ ہر غزوہ کے ہیرو ہیں کعبہ میں ولادت اور مسجد میں شہادت جیسے لاتعداد یگانہ اعزازات علی ابن ابی طالب ؑ کے سوا کوئی نہ پاسکا گذشتہ حکومت نے ذکر علیؑ میں تحریف کروا کے یکساں نصاب کی تیاری میں خیانت کی۔

آغا سید حامد علی شاہ موسوی نے کہا کہ سازش باہر سے نہیں گھر سے آتی ہے سابقہ حکمرانوں نے کونسا ایٹم بنایا یا چلایا کہ ان کے خلاف سازش ہوئی؟ ہر طرف جھوٹ اور دھوکہ بازی کا راج ہے فرزند رسول ؐو علیؑ امام مہدی تشریف لائیں گے تو دنیا کو عدل سے بھریں گے۔

انہوں نے کہا کہ گذشتہ حکومت نے چارد یواری اور گھروں کے اندر منعقدہ ذکر کربلا کی مجالس پر بھی ایف آئی آرز درج کرکے انسانی حقوق کی دھجیاں بکھیریں سانحہ پشاور کے متاثرین سے تعزیت بھی گوارا نہیں کی،شہادت علیؑ کے جلوسوں کو روکنے کی کوشش کی بڑے بڑے ظالم جابر وں نے ذکر رسول ؐوا ہلبیت ؑپر دبانے کیلئے ایڑی چوٹی کا زور لگایاحکمران مٹ گئے ذکر نبیؐ وآل نبیؐ آج بھی جاری ہے۔

آغا سید حامد علی شاہ موسوی نے کہا کہ مصیبت آنے پر اپنے آپ کو کربلاوالا بنالینا فریب اور دھوکہ ہے کربلا والوں کی خاک پا سے بھی کوئی نہیں ملتا یمن کے سسکتے بچوں کیلئے تو کسی کوکربلا یاد نہیں آئی اوآئی سی کانفرنس کروانا کوئی کارنامہ نہیں اگر مسجد اقصی اسی طرح جلنی ہے تواو آئی کانفرنسوں کا کیا فائدہ ہے؟ قرآن اور رسول ؐ کی توہین ہو رہی ہے تو اوآئی سی کہاں ہے؟ مسلمان مسلمانوں کو ڈس رہے ہیں،ہماری عمران یا کسی اورسیاستدان سے دوستی دشمنی نہیں جو عوام پاکستان اور اسلام کا دوست ہے ہمارا دوست ہے۔

آغا سید حامد علی شاہ موسوی نے کہا کہ سابقہ حکومت کے وزیر کھل کر کہتے تھے کہ ہماری کالعدم جماعتوں سے25سال سے دوستیاں ہے نئی حکومتی جماعت بھی کالعدم دہشت گرد جماعت سے معاہدہ کرکے اسی روش پر گامزن ہے بنیاد اسلام بل کی کوئی بنیاد نہیں نہ اسلام سے تعلق ہے، سیاستدان ذاتی جماعتی مفادات کی خاطر ملکی مفادات کو داؤ پر نہ لگائیں فرمان علی کے تحت ہم ہر مظلوم کے دوست ہیں اور ہر ظالم کے دشمن ہیں خواہ سگا بھائی ہی کیوں نہ ہو۔

آغا سید حامد علی شاہ موسوی نے واضح کیاکہ اپنے حقوق سے دستبردار نہیں ہوں گے،پہلے اپنے آپ کو ٹھیک کیا جائے پھر اسلاموفوبیا کی بات کریں گم شدہ شیعہ بچی کا مسجد سے اعلان نہ کرنے دینا تعصب کی انتہا ہے انسانی قدروں کو پامال کیا جارہا ہے۔انہوں نے کہا کہ حکومتیں صرف ایجی ٹیشن اور تشدد کی پالیسیاں اپنانے پر باتیں مانتی ہیں، جو روس اپنے آپ کو متحد نہ رکھ سکا مسلمانوں کو کیسے جوڑ سکتا ہے؟،پہلے اندرونی سازشیں ختم کی جائیں کرسی سے محبت کرنے والوں کو اپنے گھر والوں سے بھی کوئی لگاؤ ہوتا،ہم اہلبیتؑ اور صحابہ ؓ کا احترام کرتے ہیں پہلے صحابی جن کی منبروں سے توہین کی گئی وہ علی ابن ابی طالبؑ ہیں ہر گستاخ صحابہ ؓ سے اظہار برات ضروری ہے، رسول خدا ؐ نے تمام صحابہ ؓ کو وصیت کی کہ تمہارے درمیان قرآن و اہلبیت ؑ ہدایت کیلئے چھوڑے جارہا ہوں جو حوض کوثر تک ایک دوسرے سے جدا نہ ہوں گے،آئے روز یہودی کے فیصلے کی مثالیں دینا باب مدینہ العلم اور مسلمانوں کے بہترین قاضی علی ابن ابی طالب ؑ کی توہین ہے،اگر اہلبیت و قرآن کا دامن تھام لیا جاتا تو کسی کو قرآن رسول اور مسجد اقصی کی توہین کی جرات نہ ہوتی۔

فضائل علی ابن ابی طالب ؑ بیان کرتے ہوئے آغا سید حامد علی شاہ موسوی نے کہا کہ پیدائش کے بعد رسول ؐ کی زبان حضرت علیؑ کی پہلی غذا بنی گویا رسول ؐ نے اپنی زبان پیدا ہوتے ہی علیؑ کو دے دی، علی ع کا جھولا خود رسول ص نے جھلایا، رسول ؐ نے علی المرتضیٰ ؑ کو کھلایا پلایا اپنے ساتھ سلایااپنے کندھوں پر بٹھا کر مکہ کی وادیوں کی سیر کرائی جیسے پرندے بچوں کو کھانا کھلاتے ہیں ایسا رسول ؐنے حضرت علی ؑ کی تربیت و پرورش کی ہر شے جو اللہ نے رسول کو سکھلائی وہ انہوں نے علیؑ کو سکھلائیں بعد از رسول ؐ علیؑ علم سخاوت شجاعت میں سب سے افضل ہیں، رسول نے فرمایا علی ؑ علم و حکمت کے شہر کا دروازہ ہیں سب سے بہترین فیصلہ کرنیو الے جج علی ؑ ہیں اسی لئے حضرت عمرؓ نے کہا کہ علی نہ ہوتے تو عمر رض ہلاک ہوجاتا،شب ہجرت علی ابن ابی طالب ؑ تلواروں کے سائے میں بے خوف بستر رسول پرنبی کی شبیہہ بن کر سوئے، علی ؑ کو نبیؐ ے ہارونؑ نبی کے مثل قرار دیا،نبی ص نے دعوت ذوالعشیرہ میں علی ؑ کو دنیا و آخرت میں وصی ولی وزیر و خلیفہ قرار دیا، یو غدیر پر اعلان ہوا کہ جس جس کے رسول ص مولا اس اس کے علی ع مولا ہیں جیسے رسول ص نبیوں کے مولا ہیں اور علی بھی سبھی نبیوں کے مولا ہیں، رسول ص اور علی ع کا قد و قامت ایک جیسا تھا یہی وجہ ہے کہ کفار بھی تمیز نہ کر سکے کہ شب ہجرت رسولؐ بستر پر سور ہے ہیں یا علی ؑ سو رہے ہیں،جنگ بدر میں آدھے کفار علی ع کی تلوار سے قتل ہوئے، غزوہِ خیبر میں علی کو کرار اور غیر فرار کہہ کر علم دیا گیا، علی ابن ابی طالب ؑنے رسول ص کی تجہیز وتکفین و تدفین کی۔

آغا سید حامد علی شاہ موسوی نے اس موقع پر اعلان کیا کہ رمضان المبارک کے آخری عشرہ میں جشن نزول قرآن، جمعۃ الوداع کو یوم القدس حمایت مظلومین اور 8شوال کو یوم انہدام جنت البقیع منائیں گے عید الفطر پر سیکیورٹی انتظامات سخت رکھے جائیں۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.