شدید گرمی کے باوجود جنت البقیع کی مظلومیت کا پرچم اٹھائے ہزاروں افراد شاہراہوں پر نکل آئے ؛مذہبی جنونیت کے خلاف مختار آرگنائزیشن کا ملک گیراحتجاج

ولایت نیوز شیئر کریں

اسلامی آثار و شعائر کی توہین اور انتہا پسندی کے خلاف ملک بھر میں مختار آرگنائزیشن کے احتجاجی مظاہرے
مسلمانوں کی طاقت کے خاتمے کیلئے استعماری قوتوں نے مذہبی جنونیت کو پروان چڑھایا، قائد ملت جعفریہ آغا حامد موسوی
نبی کریم ؐ کی توہین، مسجد اقصی ٰ کی بے حرمتی اورجنت البقیع کی مسماری کے پیچھے مغربی قوتوں کا گھناؤنا کردار کسی سے ڈھکا چھپا نہیں
گستاخانہ خاکوں اورمزارات کی توہین سے مسلمانوں کے دل چھلنی ہیں،امام جعفر صادقؑ مشرق و مغرب کے محسن ہیں،محسنوں کی ناقدری کا نتیجہ زوال ہے
قراردادوں میں قبلہ اول کو بچانے کیلئے مشترکہ اسلامی فورس تشکیل دینے کا مطالبہ، اوآئی سی کے پلیٹ فارم سے مذہبی نتہا پسندی سے اظہار بیزار ی کیاجائے
صیہونیت و استعماریت و مہاسبھائیت کے شیطانی ثلاثہ کا حتمی ٹارگٹ حرمین شریفین ہے امت مسلمہ شیطانی منصوبوں کے خلاف متحدہوجائے
دہشت گردی کے سانحات کی مذمت، پاکستان میں کوئی شیعہ سنی تنازعہ نہیں، حکومت نام بدل کر کام کرنے والی تمام کالعدم تنظیموں پر گرفت کرے
مختار ٓرگنائزیشن کی نیشنل پریس کلب تا چائنہ چوک ریلی میں ہزاروں افراد کی شرکت، مختلف مکاتب فکر کی شرکت،سنی شیعہ اتحاد کافقید المثال عملی مظاہرہ

اسلام آباد( ولایت نیوز)قائدملت جعفریہ آغاسیدحامدعلی شاہ موسوی کے اعلان کردہ عالمی عشرہ صادق آل محمد ؑ کے موقع پرمختار آرگنائزیشن(ایم او) کی جانب سے ملک بھر میں ماتمی احتجاجی مظاہرے کئے گئے۔

احتجاجی پروگراموں میں اسلامی مقامات مقدسہ کی بیحرمتی وتباہی، جنت البقیع میں حضرت امام جعفر صادق علیہ السلام و دیگرآئمہ ہدیٰ، صحابہ کبار ؓ، امہات المومینن ؓ کے مزارات کی مسماری، عراق وشام میں دہشت گردوں کے ہاتھوں ابنیائے کرام و پاکیزہ صحابہ کباراوؓ مشاہیر اسلام کی قبور ہائے مطہرات کی تباہی اورپاکستان میں اولیائے کرام کے مزارات پرحملوں کیخلاف صدائے احتجاج بلندکی گئی۔

شدید گرمی کے باوجود اسلام آباد نیشنل پریس کلب سے نکالی گئی ماتمی احتجاجی ریلی کی قیادت علمائے کرام، مختارآرگنائزیشن کے مرکزی وضلعی عہدیداران اور دیگر مذہبی رہنما،ماتمی سالارکررہے تھے۔

مختارآرگنا ئزیشن پاکستان (ایم او) کی جانب سے نیشنل پریس کلب اسلام آباد سے نکالی گئی ریلی کے شرکاء کے نام سپریم شیعہ علماء بورڈ کے سرپرست اعلی ٰ و قائدملت جعفریہ آغا سیدمد علی شاہ موسوی کا خصوصی پیغام مختارآرگنائزیشن کے مرکزی رہنما ذوالقرنین جمیل نے پیش کیا

آغا سید حامد علی شاہ موسوی نے کہا کہ مسلمانوں کی طاقت کے خاتمے اور ان کے گرانقدر ورثے کی تباہی کیلئے استعماری قوتوں نے مذہبی جنونیت کو پروان چڑھایا،نبی کریم ؐ کی توہین، اسرائیل کے ہاتھوں مسجد اقصی ٰ کی بے حرمتی اورجنت البقیع میں مزارات مقدسہ مسماری کے واقعات میں مغربی قوتوں کا گھناؤنا کردار کسی سے ڈھکا چھپا نہیں رہا، گستاخانہ خاکوں کی متواتر اشاعت اورمقدس مزارات کی توہین سے تمام مسلمانوں کے دل چھلنی ہیں اسلامی آثار کی تباہی پر عالمی اداروں کی مجرمانہ خاموشی سوالیہ نشان ہے۔

آغا سید حامد علی شاہ موسوی نے کہا کہ تقدیر کے قاضی کا یہ ہر زمان و مکان کیلئے اٹل فیصلہ ہے کہ جو قومیں اپنے محسنوں کی ناقدری کرتی ہیں انہیں ذلت کی پاتال میں گرنے سے کوئی سرمایہ کوئی فوج اور کوئی افرادی قوت نہیں روک سکتی آج عالم اسلام اسی بحران کی زد میں ہے جس کے نتیجے میں مسلمانوں سے دنیا کی قیادت چھن گئی اور تمام تر وسائل سے مالا مال ہونے کے باوجود آج مسلمانوں کی دنیا میں کوئی حیثیت نہیں کوئی طاقتور ملک جب چاہے جس مسلم ملک میں چاہے اپنی فوجیں داخل کردیتا ہے، مسلمانوں کے قبلہ اول پر دن دیہاڑے اسرائیل بم برساتا رہا لیکن مسلمان ممالک احتجاج سے آگے نہ بڑھ سکے،اسرائیل سے مقابلے کی طاقت رکھنے والے تمام مسلمان ممالک کو ایک دوسرے سے لڑوا کر کھنڈرات میں بدل دیا گیا۔

انہوں نے کہاکہ خانوادہ رسالتؐ کی عظیم ہستی امام جعفر صادقؑ نے علوم نبویؐ و مرتضوی ؑکی بنیاد پر ایسی علمی و فکری تحریک کی بنیاد رکھی جس نے مشرق کو عظمتوں کی معراج بخشی تو مغرب کو تاریکیوں سے نکالا، مغربی محققین نے مسلمانوں کی علمی و سائنسی خدمات کا کھوج لگانا شروع کیا توامام جعفر صادق علیہ السلام کو ’سپر مین ان اسلام‘ کہنے پر مجبور ہو گئے، استعماری قوتوں کے ایما پر شروع ہونے والی انتہاپسندی کے نتیجے میں آج انسانیت کے عظیم محسن امام جعفر صادقؑ کی قبر اطہر سمیت پاکیزہ صحابہ کبارؓ و اہلبیت اطہار ؑکے مزارات اور آثار حسرت و یاس کی تصویر بنے ہوئے ہیں۔

احتجاجی ریلیوں میں منظور کردہ قراردودوں میں اقوام متحدہ سمیت اسلامی اداروں سے مطالبہ کیا کہ وہ جنت البقیع و جنت المعلیٰ سمیت دنیا بھر میں انبیاء کرام اہلبیت اطہار پاکیزہ صحابہ کبار ؓاولیائے کرام کے مزارات کی عظمت رفتہ کو بحال کرائیں، مسلمانوں کے قبلہ اول کو صیہونی درندوں کے ہاتھوں پہنچنے والے متواتر نقصانات سے بچانے کیلئے مشترکہ اسلامی فورس تشکیل دی جائے، صیہونیت و استعماریت و ہندوستانی مہاسبھائیت کے شیطانی ثلاثہ کا حتمی ٹارگٹ حرمین شریفین ہے لہذا امت مسلمہ شیطانی ثلاثہ کے ناپاک منصوبوں کے خلاف متحدہوجائے اوآئی سی کے پلیٹ فارم سے مذہبی جنونیت اور انتہا پسندی سے بیزار ی کااظہارکرکے واضح کیاجائے کہ مذہبی مقامات کو نقصان پہنچانے والے دہشت گردوں کا اسلام سے کوئی تعلق نہیں۔

ایک قرارداد میں حکومت سے مطالبہ کیاگیاکہ وہ موسوی جونیجو معاہدے کے مطابق جنت البقیع اور جنت المعلی کے مزارات کی بحالی کیلئے سفارتی دباؤڈالے،قراردادمیں مزارات مقدسہ کی بحالی کیلئے قائد ملت جعفریہ آقائے موسوی کی شروع کردہ عالمی تحریک کے نتیجے میں اقوام متحدہ میں مذہبی مقامات کے تحفظ کیلئے منظور ہونے والی قرارداد کے تحت سرزمین حجاز میں جنت البقیع و جنت المعلی، بھارت،فلسطین، برما، افریقہ سمیت دنیا بھر میں مسلمانوں کے مذہبی مقامات کی بحالی کیلئے اقدامات کامطالبہ کیاگیا ۔ قراردادمیں امریکہ کی جانب سے بیت المقدس کو اسرائیلی دارالحکومت قرار دینے کے اقدام کو عالمی امن اور بین الاقوامی قوانین پر دہشت گردانہ حملہ تصور کرتے ہوئے امریکی و صیہونی عزائم سے نمٹنے کیلئے تمام امن پسند قوتیں مشترکہ لا ئحہ عمل تشکیل دیں۔

قراردادمیں دربار حضرت بری امام کی تاریخی تختیوں الواح کو بحال کرنے، دربار سخی محمود بادشاہ کو قبضہ مافیا کے چنگل سے مکمل واگزار کرانے، کوٹلی امام حسین ڈیرہ اسماعیل خان، اورکزئی میں بادشاہ انور غگ، دربارہ بی بی پاکدامن میں شیعہ اوقاف کے مسائل کو قانون آئین کے مطابق حل کرنے پرزوردیاگیا۔قراردادمیں مسئلہ کشمیر سے امت مسلمہ کی بیگانگی پر اظہار افسوس کرتے ہوئے عالم اسلام سے مطالبہ کیاگیاکہ اگست 2019سے بھارتی محاصرے میں محصور کشمیریوں کی حالت زار کی جانب توجہ دیں۔ مظلومین کی فریادسیں بصورت دیگر اللہ کی لاٹھی بے آواز ہے وہ دنیا آخرت میں عبرت بن جائیں گے۔

قراردادمیں بہاولنگر سمیت وطن عزیز میں دہشت گردی کے تمام سانحات کی پرزور مذمت کرتے ہوئے واضح کیاگیاکہ پاکستان میں کوئی شیعہ سنی تنازعہ نہیں حکومت نیشنل ایکشن پلان پر عمل کرتے ہوئے نام بدل کر کام کرنے والی تمام تنظیموں پر گرفت کرے۔

شرکاء نے قائد ملت جعفریہ آغا سید حامد علی شاہ موسوی کی بصیرت افرز قیادت پر مکمل اعتماد کا اظہار کرتے ہوئے اس عہد کا اظہار کیا کہ مکتب تشیع کے حقوق،عقائد حقہ کے تحفظ،وحدت و اخوت کے فروغ اور دین و وطن کی سربلندی کیلئے ان کے حکم پر کسی قربانی سے دریغ نہیں کیا جائے گا۔

علامہ بشارت حسین امامی اورسیدحسن کاظمی نے بھی خطاب کیا۔بعد ازاں مظاہرین نوحہ خوانی و ماتمداری کرتے ہوئے واپس پریس کلب پہنچ کر پر امن طور پر منتشر ہو گئے۔اس موقع پر پولیس کی بھاری نفری،انتظامیہ کے افسران،مختارفور س کے رضا کار، مختار ایس او اور ابراہیم اسکاؤٹس (اوپن گروپ)انتظام و انصرام کیلئے ریلی کے آغاز سے اختتام تک موجود تھے۔

درایں اثناء پشاور، فیصل آباد،لاڑکانہ،کراچی،لاہور،جھنگ،خیرپور،حیدرآباد،سیالکوٹ،مظفر آباد،گلگت،کوئٹہ اور دیگر مقامات پر بھی مختارآرگنائز یشن کی جانب سے ماتمی ریلیاں نکالی گئیں اور پرامن مظاہرے ہوئے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.