جنہیں قربانی کی کھالیں دینا ممنوع ہے انہیں پروٹوکول بھی نہ دیا جائے،ٹیرر فنانسنگ قوانین پرعمل کروایا جائے،آغا حامد موسوی

ولایت نیوز شیئر کریں

ٹیرر فنانسنگ روکنے کیلئے قانون سازی احسن اقدام ہے، قوانین پر عمل درآمد بھی کروایا جائے،آغا حامد موسوی
کونسی نیب تحقیق کرے گی کہ 80کی دہائی میں جن مذہبی رہنماؤں کے پاس سائیکل نہ تھی آج کھرب پتی کیسے بنے؟
جنہیں کھالیں دینا ممنوع ہے انہیں پروٹوکول بھی نہ دیا جائے،فسادیوں کی منی ٹریل نکالی جائے تمام دہشت گردیوں کا پول کھل جائے گا
 ’نامعلوم‘پیسے کے زور پر بیرونی ایجنڈوں کی تکمیل متواتر جاری ہے،پاک فوج کی انمول قربانیوں کو مصلحتوں کے بازار کی نذر نہ کیا جائے
 سینیئر صحافی کو 35سال پرانے کیس میں ضمانت نہیں مل رہی مذہب کے نام پر جائیدادیں بنانے والوں کیلئے عام معافی کیوں ہے؟
مال جمع کرنے والوں کیخلاف حضرت ابوذرؓکی قلندرانہ صداآج بھی گونج رہی ہے، 5ذوالحجہ کو ’یوم صحابیت ؓ‘ منائیں گے، تزویج علی ؑو فاطمہ ؑ کی تقریب سے خطاب

اسلام آباد( ولایت نیوز)سپریم شیعہ علماء بورڈ کے سرپرست اعلی قائد ملت جعفریہ آغا سید حامد علی شاہ موسوی نے کہا ہے کہ ٹیرر فنانسنگ روکنے کیلئے قانون سازی احسن اقدام ہے، قوانین پر عمل درآمد بھی کروایا جائے،کونسی نیب تحقیق کرے گی کہ 80کی دہائی میں جن  مذہبی رہنماؤں کے پاس سائیکل نہ تھی آج کھرب پتی کیسے بنے؟ مذہب کے نام پر نفرت اور فساد پھیلانے والوں کی منی ٹریل نکالی جائے تمام دہشت گردیوں کا پول کھل جائے گا، جنہیں قربانی کی کھالیں دینا ممنوع ہے انہیں سرکاری پروٹوکول بھی نہ دیا جائے، ’نامعلوم‘پیسے کے زور پر مذہبی عقائد میں بگاڑاور بیرونی ایجنڈوں کی تکمیل کی مہم متواتر جاری ہے، حکومتی کانفرنسوں میں امن کے گیت گانے والے معاشرے میں کھلم کھلا فساد کے بیج بوتے ہیں،اگر سینیئر صحافی میر شکیل الرحمن کو 35سال پرانے کیس میں ضمانت نہیں مل رہی مذہب  کے نام پر جائیدادیں بنانے والوں کیلئے عام معافی کیوں ہے؟پاک فوج اور عوام نے دہشت گردی کے خاتمہ کیلئے انمول قربانیاں دیں انہیں مصلحتوں کے بازار کی نذر نہ کیا جائے، سونا چاندی جمع کرنے والوں کیخلاف اور غریبوں کے حقوق کیلئے حضرت ابوذرغفاریؓکی قلندرانہ صداآج بھی زمانے میں گونج رہی ہے، 5ذوالحجہ کو پاکیزہ صحابہ کبارؓ کی عظمت و رفعت اجاگر کرنے کیلئے ’یوم صحابیت ؓ‘ منایا جائے گا۔ ان خیا لات کا اظہار انہوں نے یوم تزویج حضرت علی ؑ و فاطمہؑ کی مناسبت سے منعقدہ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔

آغا سید حامد علی شاہ موسوی نے کہا کہ پاکستان عالم اسلام کی امید ہے مظلوم کشمیریوں کی پناہ گاہ ہے سرزمین فلسطین کے مظلومین بھی مشکل میں پاکستان کو پکارتے ہیں اسلام کے اس عظیم قلعے کو گرانے کیلئے بیرونی حملوں کے ساتھ ساتھ اندرونی سازشیں بھی کبھی کم نہیں ہوئیں جنہیں 80کی دہائی میں افغان جنگ کے سبب مزید پشت پناہی مل گئی سوویت یونین کو گرانے کے ساتھ ساتھ پاکستان کی وحدت کو پارہ پارہ کرنے کیلئے بھی بیرونی ممالک سے بے حساب فنڈنگ کی گئی جمہوریت کو کچل دینے کے سبب صوبائیت فرقہ واریت لسانیت کو نشو نما کیلئے سازگار ماحول مل گیاخدمت اور قومی سیاست کے بجائے فرقے اور زبان کی بنیاد پرمتشدد گروپوں کو انتخابات میں اتار دیا گیا،  مارشل لاء کے بعد آنے والی سیاسی حکومتوں نے ’گولی اور گالی‘ والی تنظیموں کو پریشر گروپوں کے طور پر استعمال کیاکمزور حکومتیں عصبیت کی بنیاد پر اسمبلیوں میں آنے والے ایک ایک ممبر کی جی حضوری پر بھی مجبور ہو گئیں اور یہ سلسلہ آج بھی جاری ہے۔

آغا سید حامد علی شاہ موسوی نے کہا کہ تحریک نفاذ فقہ جعفریہ فروری 84ء سے آج تک مذہبی جماعتوں کو ملنے والی بیرونی امداد پر پابندی اور مسلک مذہب کے نام پر الیکشن میں حصہ لینے کے خلاف آواز بلند کرتی رہی ہے، پاکستان کے با بصیرت عوام نے بھی ہماری آواز پر لبیک کہتے ہوئے ہمیشہ نفرتوں اور عصبیتوں کے سوداگروں کو مسترد کیا جس کے سبب مسلک قومیت برادری کے نام پر ووٹ مانگنے والوں کوانتخابات میں ہمیشہ رسوائی کا سامنا کرنا پڑا بدقسمتی سے ایک آدھ سیٹ والوں کو سیاسی جماعتوں نے اپنے مفادات اور نمبر پورے کرنے کیلئے سر پر بٹھا لیا،آج بھی کالعدم جماعتیں اسی بلیک میلنگ کے سبب مزے لوٹ رہی ہیں۔

آغا سید حامد علی شاہ موسوی نے کہا کہ رسول خدا ؐ نے بحکم خداشہزادی کونین خاتون جنت حضرت فاطمہ زہراؑ کی تزویج حضرت علی سے فرمائی۔

فرمان مصطفی صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم ۔۔۔۔اے علیؑ اللہ عزو جل تمہاری شادی فاطمہ ؑ سے کررہا ہے ۔۔۔

حضرت انس ؓسے مروی ہے ”رسول اللہ مسجد میں تشریف فرما تھے اور حضرت علی ؑ سے فرمایایہ جبریل ہے جومجھے بتا رہا ہے کہ اللہ تعالی نے علیؑ کی شادی فاطمہؑ سے کردی ہے اوراس نکاح پر40 ہزار فرشتوں کو گواہ کے طور پر مجلس نکاح میں شریک کیا گیااور شجر ہ طوبی سے فرمایا ان پر موتی اور یاقوت نچھاور کرو پھر حوریں ان موتیوں اور یاقوتوں سے تھال بھرنے لگیں جنہیں فرشتے قیامت تک ایک دوسرے کو بطور تحفہ دیں گے“مدارج النبوۃ شاہ عبد الحق محدث دہلوی میں رقم طراز ہیں کہ وقت نکاح آنحضور ؐ نے حضرت فاطمہ زہراؑ سے فرمایا فاطمہ حق تعالی نے زمین سے دو شخصوں کو برگزیدہ فرمایاان میں سے ایک تمہارا والدمحمد مصطفی ؐ ہے اور دوسرا تمہارا شوہر علیؑ۔

آغا سید حامد علی شاہ موسوی نے کہا کہ کائنات کے سید و سردار حضرت محمد مصطفی کی بیٹی  خاتون جنت حضرت فاطمہ زہراکی شادی اور جہیز سادگی کی عظیم ترین مثال ہے، آج کے دور میں نام نمود دکھاوے اور تعیش نے اسلامی معاشروں کی شکل بگاڑ کررکھ دی ہے، اسلامیان عالم اگر مشکلات سے نجات چاہتے ہیں تو انہیں سرور عالم ؐ کے اسوہ کی پیروی کرنا ہوگی۔

کالعدم جماعتوں کے کھالیں جمع کرنے پر پابندی
کالعدم جماعتوں کے کھالیں جمع کرنے پر پابندی

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.