شہادت علی ؑ کے جلوس نکالنے پر کریک ڈاؤن اور ایف آئی آرز : بڑے احتجاج کی کال دینے پر مجبور نہ کیاجائے این سی او سی استعفی دے ، قائد ملت جعفریہ آغا حامد موسوی

ولایت نیوز شیئر کریں

شہادت علی ؑ کے جلوس نکالنے پر کریک ڈاؤن اور ایف آئی آرز نظریہ اساسی سے انحراف ہے، قائد ملت جعفریہ آغا حامد موسوی
وطن عزیزکو یکجہتی کی ضرورت ہے بڑے احتجاج کی کال دینے پر مجبور نہ کیاجائے،یورپی یونین کی قرارداد کے خلاف متفقہ پالیسی اپنائی جائے
کالعدم جماعتوں کو ساتھ بٹھانے پر این سی او سی مستعفی ہو، پاکستان کوغلط فیصلوں نہیں مدینہ و نجف و کربلا سے وابستگی نے وباؤں کے نقصان سے محفوظ رکھا
میلاد النبی ؐ اور عزاداری کو طاقت سے دبا لینے کی خواہش خام خیالی ہے، دباؤاور دھمکیوں کے باوجود پرامن ماتمی احتجاج کرنیو الے ماتمی عزاداروں کو سلام
حکومت ضیائی مارشل لا کے جراثیموں سے بچے! بعض مشیر حکومتی ساکھ دیمک کی طرح چاٹ رہے ہیں،دانشمندانہ پالیسی اپنانے والے انتظامی افسران لائق تحسین
غلط فیصلے حکمران کرتے ہیں خمیازہ عوام اور انتظامیہ کو بھگتنا پڑتا ہے ا، اسیران کو فوری رہا کیا جائے بے بنیاد مقدمات ختم کئے جائیں، ہائی کمان کے ہنگامی اجلاس سے خطاب

اسلام آباد (ولایت نیوز ) سپریم شیعہ علماء بورڈ کے سرپرست اعلی قائد ملت جعفریہ آغا سید حامد علی شاہ موسوی نے کہا ہے کہ شہادت علی ؑ کے جلوس برآمد کرنے والے عزاداروں کے خلاف کریک ڈاؤن اور ایف آئی آرز کا اندراج پاکستان کے نظریہ اساسی سے انحراف ہے مذہبی ، گستاخان رسالت ؐ کی عالمی مہم میں وطن عزیزکو یکجہتی کی ضرورت ہے بڑے احتجاج کی کال دینے پر مجبور نہ کیاجائے یورپی یونین کی قرارداد کے خلاف متفقہ لیسی اپنائی جائے۔

انہوں نے کہا کہ مساجد میں عبادتوں وعزاداری پر قدغنیں لگانے اور کالعدم جماعتوں کو ساتھ بٹھانے پر این سی او سی مستعفی ہو، پاکستان کو این سی او سی کے فیصلوں نے نہیں مدینہ و نجف و کربلا سے وابستگی نے وباؤں کے نقصان سے محفوظ رکھا،میلاد النبی ؐ اور عزاداری کو طاقت سے روک لینے کی خواہش خام خیالی ہے ماتمیوں اور بانیان عزاداری کو سلام جنہوں نے دباؤاور دھمکیوں کے باوجود دنیا کو پرامن ماتمی احتجاج کرکے دکھایا دانشمندانہ پالیسی اپنانے والے انتظامی افسران لائق تحسین ہیں، بعض مشیر حکومت کی ساکھ کو دیمک کی طرح چاٹ رہے ہیں حکومت بحرانوں سے نجات کیلئے نا اہل مشیروں اور کالعدم جماعتوں کے حصار سے چھٹکارا پائے، تمام اسیران عزاداری کو فوری رہا کیا جائے، پرامن عزاداروں پر دہشت گردی کی دفعات مضحکہ خیز ہیں بے بنیاد مقدمات ختم کئے جائیں۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے تحریک نفاذ فقہ جعفریہ کی ہائی کمان کے ہنگامی اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔

آغا سید حامد علی شاہ موسوی نے کہا کہ حکومت ضیائی مارشل لا کے جراثیموں سے بچے یہ کیسا فیصلہ ہے کہ مجا لس ہو سکتی ہیں اور جلوس نہیں یہ ایسا ہی ہے کہ اذان اقامت ہوسکتی ہے اور نماز نہیں، مجالس جلوسوں کا دیباچہ ہوتی ہیں۔انہوں نے کہا کہ گذشتہ سال بھی عین یوم شہادت علی ؑ سے پہلے این سی او سی نے عزاداری پر پابندی عائد کردی تھی جس کے سبب ہمیں ماتمی احتجاج کی کال دینا پڑی، توہین رسالت ؐ کے خلاف ہونے والے عوامی ردعمل پر بھی غلط فیصلوں کے سبب پاکستان کی بدنامی ہو ئی اور یورپی یونین نے قراردا دا پا س کر ڈالی، حکومت یورپی یونین کی قرارداد پر عالم اسلام کو یکجا کرے۔

آغا سید حامد علی شاہ موسوی نے کہا کہ ہمارا چیلنج ہے کہ پاکستان کے گلی کوچے میں برآمد ہونے والے کسی ایک بھی ماتمی جلوس میں کسی کا ایک تنکا بھی نقصان کیا گیا ہو، اتنے پرامن پروگراموں کے باوجود انتظامیہ کو پکڑ دھکڑ کے احکامات جاری کرنانااہلی ہے، غلط فیصلے حکمران کرتے ہیں خمیازہ عوام اور نچلی انتظامیہ کو بھگتنا پڑتا ہے اوپر بیٹھے ہوؤں کا کوئی نقصان نہیں ہوتا۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان کی بنیادوں میں ہمارا خون ہے ہر آزمائش میں قربانیاں دیں جب تک دم میں دم ہے پاکستان کی سلامتی یکجہتی اور امن پر کوئی آنچ نہیں آنے دیں گے لیکن کسی طاقت کو اپنے عقائد سلب کرنے اور پاکستان کے نظریہ اساسی کو پامال کرنے کی اجازت نہیں دی جائے گی ۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.