تحفظ بنیاد اسلام بل قرآن و سنت سے متصادم اور آئین پر حملہ ہے، قائد ملت جعفریہ آغا حامد موسوی نے جمعہ 31جولائی کو احتجاج کا اعلان کردیا

ولایت نیوز شیئر کریں

تحفظ بنیاد اسلام بل قرآن و سنت سے متصادم اور آئین پر حملہ ہے، 31جولائی یوم احتجاج منایا جائے گا، آغا حامد موسوی
پا کستان دشمن سیکرٹریٹ قبضہ اور حسینی محاذ ایجی ٹیشن مت بھولیں، دین و وطن کی بنیادیں بچانے کیلئے بڑے اقدام سے گریز نہیں کریں گے
پاکستان کو پلیدستان اور قائد کو کافر اعظم کہنے والوں کو ملکی یکجہتی سے کھیلنے نہیں دیں گے،بل خاتون جنتؑ کی توہین کرنے والے شاتم کی تائید میں لایا گیا
صدر وزیر اعظم چیف جسٹس آرمی چیف چیئرمین سینیٹ سپیکر گورنر پنجاب کو مراسلے تحریر کردیئے، آئین کے محافظ ذمہ داریاں پوری کریں
محرم الحرام سے پہلے فتنہ انگیزی امن کی حکومتی کوششوں پر پانی پھیرنے کی سازش ہے،پنجاب کے سپیکر کا انتہا پسندانہ رویہ افسوسناک ہے
ڈکٹیٹر کی باقیات اسکا مکروہ ایجنڈا پوارا کرنا چاہتے ہیں جب تک دم میں دم ہے پاکستان کی بنیادیں کھوکھلی نہیں کرنے دیں گے
آل محمدؐکا مقام دلوں پر نقش ہے بلوں سے مٹایا نہیں جا سکتا،اپنا عقیدہ دوسروں پر مسلط نہیں کرتے ہمارے عقائد کے ساتھ بھی چھیڑ چھاڑ نہ کی جائے
کروڑوں شہریوں کے آئینی حق کو پامال کرنا کالعدم جماعتوں کے پروردگان کی خام خیالی ہے، ٹی این ایف جے پنجاب کے عہدیداران سے خطاب

اسلام آباد(ولایت نیوز ) سپریم شیعہ علماء بورڈ کے سرپرست اعلی قائد ملت جعفریہ آغا سید حامد علی شاہ موسوی نے کہا ہے کہ پنجاب کا تحفظ بنیاد اسلام بل قرآن و سنت سے متصادم اور آئین پاکستان پر حملہ ہے، پاکستان کی بنیادیں کھوکھلی کرنے اقدام کے خلاف جمعہ31جولائی کو پاکستان بھر میں پرامن یوم احتجاج منائیں گے پا کستان دشمن قوتین مت بھولیں نظریہ پاکستان پر حملے کے ردعمل میں تحریک نفاذ فقہ جعفریہ نے سیکرٹریٹ پر قبضہ کیا 8ماہ طویل حسینی محاذ ایجی ٹیشن کیا، پرامن احتجاج پہلا قدم ہے دین و وطن کی بنیادیں بچانے کیلئے بڑے اقدام سے گریز نہیں کریں گے،شرا نگیز بل کو فوری واپس لیا جائے، تمام قوتیں جان لیں پاکستان کو کبھی گروہی سٹیٹ نہیں بننے دیں گے،پاکستان کو پلیدستان اور قائد اعظم کو کافر اعظم کہنے والوں کو ملکی سالمیت و یکجہتی کے ساتھ نہیں کھیلنے دیں گے، آئین کے آرٹیکل 227 میں واضح ہے قرآن و سنت کی وہی تعبیر مستند و معتبر ہوگی جو اس فرقے کے نزدیک معتبر ہوگی،کروڑوں شہریوں کے آئینی حق کو پامال کرنا کالعدم جماعتوں کے پروردگان کی خام خیالی ہے، شرانگیز بل خاتون جنتؑ حضرت فاطمہ زہراؑ کی توہین کرنے والے شاتم کی تائید میں لایا گیا ہے، آل محمدؐکا مقام اور احترام دلوں پر نقش ہے بلوں سے مٹایا نہیں جا سکتا،اپنا عقیدہ دوسروں پر مسلط نہیں کرنا چاہتے مکتب تشیع کے عقائد کے ساتھ بھی چھیڑ چھاڑ نہ کی جائے، محرم الحرام سے پہلے فتنہ انگیز بل امن و مان کیلئے حکومتی کوششوں پر پانی پھیرنے کی گھناؤنی سازش ہے صدر وزیر اعظم چیف جسٹس آرمی چیف چیئرمین سینیٹ سپیکر گورنر پنجاب کو مراسلے تحریر کردیئے ہیں آئین کے محافظ ذمہ داریاں پوری کریں،کالعدم جماعتوں کو اسمبلیوں میں لانے کے نتائج سامنے آنے لگے حکومت بتائے ایکشن پلان کہاں گیا؟ پنجاب اسمبلی کے سپیکر کا غیر جمہوری اور انتہا پسندانہ رویہ افسوسناک ہے، ڈکٹیٹر کی باقیات نظریہ پاکستان کو سبوتاژ کرکے اسکا مکروہ ایجنڈا پوارا کرنا چاہتے ہیں جب تک دم میں دم ہے پاکستان کی بنیادیں کھوکھلی نہیں کرنے دیں گے۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے تحریک نفاذ فقہ جعفریہ صوبہ پنجاب کے صدر علامہ حسین مقدسی کی سرکردگی میں عہدیداران سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔

آغا سید حامد علی شاہ موسوی نے کہا کہ بل بنانے والے بتائیں کہ انہوں نے بچپنے میں لوح محفوظ کا مطالعہ کرنے والے امام حسن علیہ السلام کا نام کیسے خلافت راشدہ سے خارج کرکے تاریخ کو مسخ کیا، حضرت علی ابن ابی طالب کو کرم اللہ وجہہ کہنا حدیث نبی سے ثابت ہے بل بنانے والے تعصب کی پٹی اتاریں،حضرت مریم ؑ جن کی عصمت و طہارت کی گواہی قرآن نے دی ان کے بارے میں ہ بل کیا کہتا ہے، ام المومنین حضرت خدیجۃ الکبری سلام اللہ علیھا وہ ہستی ہیں جن پر خود اللہ نے جبرائیل کے ذریعے سلام بھیجا قبرستان میں بلاتفریق گناہگار و متقی،ہر شخص پر بھی السلام علی اہل القبور کہہ کر سلام بھیجنے کا کہا گیا تو نبی کریم ؐکی عزیز ترین زوجہ، عالمین کی عورتوں کی سردار بیٹی اور جنت کے سرداروں پر سلام بھیجنا اور لکھنا کیسے ممنوع ہو سکتا ہے۔

انہوں نے کہا کہ سورہ احزاب کی آیت: إِنَّ اللَّہَ وَ مَلاءِکَتَہُ یُصَلُّونَ عَلَی النَّبِیِّ یا أَیُّہَا الَّذِینَ آمَنُوا صَلُّوا عَلَیْہِ وَ سَلِّمُوا تَسْلِیماً کے حوالے سے صحیح بخاری و صحیح مسلم لکھتے ہیں کہ جب یہ آییۃ تطہیر نازل ہوئی صحابہ کرام رسول صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم کے پاس آئے اور کہا اء اللہ کے حبیب آپ پر سلمو تسلیما کے تحت کس طرح سلام بھیجا جائے؟ تو فرمایا اس طرح پڑھو: اَلّہُمَّ صَلِّ عَلی مُحَمَّدٍ وَ آلِ مُحَمَّدٍ کَما صَلَّیْتَ عَلی اِبْراہیِمَ وَ آلِ اِبْراہِیمَ وَ آلِ اِبْراہِیمَ فِی الْعالَمِینَ اِنَّکَ حَمِیدٌ مَجیِدٌ۔ جن اہلبیت پر سلام بھیجنے کی تاکید قرآن اور طریقہ صحاح ستہ بتا رہی ہیں ان کے ناموں کو من مانے طریقے سے لکھنے پکارنے پر مجبور کرنا خارجی فکر ہے ۔

آغا سید حامد علی شاہ موسوی نے کہا کہ حکمرانوں کو چاہئے تھا کہ مختلف مسالک کے عقائد و نظریات کے حوالے سے کوئی بل لا رہے ہیں تو اسے مشتہر کرتے تاکہ اس پرمختلف مسالک و مکاتب کی آراء سامنے آتیں اور کوئی تنازعہ پیدا نہ ہوتا، پا۔انہوں نے قرآن و حدیث کی مثالیں دیتے ہوئے کہا کہ حضرت مریم کے بارے میں قرآن میں ارشاد ہواو اذ قالت الملائکہ یا مریم سلام اللہ علیہا ان اللہ اصطفک و طھرک۔وہ وقت یاد کرو جب فرشتوں نے کہا بے شک اللہ نے تمھیں برگزیدہ کیا ہے اور تمھیں پاکیزہ بنایا ہے۔ اسی طرح خاتون جنت حضرت فاطمہ زہراء سلام اللہ علیہا اور اہلبیت رسول ؐکیلئے اللہ تعا لی فرماتا ہے:انما یرید اللہ لیذھب عنکم الرجس اھل البیت و یطہر کم تطہیرا”اللہ کا ارادہ بس یہی ہے، ہر طرح کی ناپاکی کو اہل بیت! آپ سے دور رکھے اور آپ کو ایسے پاکیزہ رکھے، جسے پاکیزہ رکھنے کا حق ہے، اہلبیت رسول کی صداقت پر قرآن کی آیت فَقُلْ تَعَالَوْا نَدْعُ أَبْنَاءَنَا وَأَبْنَاءَکُمْ وَنِسَاءَنَا وَنِسَاءَکُمْ وَأَنفُسَنَا وَأَنفُسَکُمْ ثُمَّ نَبْتَہِلْ فَنَجْعَل لَّعْنَتَ اللَّہِ عَلَی الْکَاذِبِین گواہ ہے، اہلبیت رسول کی محبت کے وجوب پر قُل لَّا أَسْأَلُکُمْ عَلَیْہِ أَجْرًا إِلَّا الْمَوَدَّۃَ فِی الْقُرْبَیٰ کی آیت گواہ ہے، اہلبیت کی ولایت پر إِنّما وَلیکُمُ اللہُ و رَسولُہُ والّذینَ ءَامَنوا الَّذینَ یقِیمُونَ الصَّلوۃَ و یؤتُونَ الزَّکوۃ و ہُم راکِعونَ کی آیت گواہ ہے۔

آغا سید حامد علی شاہ موسوی نے کہا کہ اہلسنت کی معتبر ترین کتب سے ہزاروں حوالے موجود ہیں جن میں اہلبیت کے ساتھ علیہ السلام لکھا گیا اہلسنت کی معتبر ترین کتاب حدیث صحیح بخاری کی حدیث 3748 عَنْ أَنَسِ بْنِ مَالِکٍ رَضِیَ اللَّہُ عَنْہُ أُتِیَ عُبَیْدُ اللَّہِ بْنُ زِیَادٍ بِرَأْسِ الْحُسَیْنِ عَلَیْہِ السَّلَام فَجُعِلَ فِی طَسْتٍ فَجَعَلَ یَنْکُتُ وَقَالَ فِی حُسْنِہِ شَیْءًا فَقَالَ أَنَسٌ کَانَ أَشْبَہَہُمْ بِرَسُولِ اللَّہِ صَلَّی اللَّہُ عَلَیْہِ وَسَلَّمَ امام حسین کے نام کے ساتھ علیہ السلام لکھا گیا سنن ابی داؤ د کی حدیث 1272 حَدَّثَنَا حَفْصُ بْنُ عُمَرَ حَدَّثَنَا شُعْبَۃُ عَنْ أَبِی إِسْحَقَ عَنْ عَاصِمِ بْنِ ضَمْرَۃَ عَنْ عَلِیٍّ عَلَیْہِ السَّلَام أَنَّ النَّبِیَّ صَلَّی اللَّہُ عَلَیْہِ وَسَلَّمَ کَانَ یُصَلِّی قَبْلَ الْعَصْرِ رَکْعَتَیْنِ میں حضرت علی علیہ السلام رقم ہے اس کے علاوہ سنن ابی داؤد کی درجنوں احادیث میں مولا علی کے نام ساتھ علیہ السلام لکھا گیا، عالم اہلسنت قاضی ثنا ء اللہ پانی پتی نے اپنی تفسیر مظہری جلد ہفتم صفحہ 412 پرنواسہ رسول ؐکے نام کے ساتھ علیہ السلام لکھا رواہ احمد عن الحسین بن علی علیھما السلام، وروی الطبرابی بسند حسن عن الحسین بن علی علیھما السلام۔ترمذی نے سنن ترمذی کی جلد ۳کتاب جنائز باب عیادت المریض کی حدیث ’حدثنا أحمد بن منیع حدثنا الحسن بن محمد حدثنا إسرائیل عن ثویر (عن ابن أبی فاختۃ) عن أبیہ قال: أخذ علی بیدی قال انطلق بنا إلی الحسن نعودہ فوجدنا عندہ أبا موسی فقال علی علیہ السلام میں مولائے کائنات کے نام کے ساتھ علیہ السلام لکھا،صحیح بخاری مع فتح الباری المطبعۃ الخیر یہ مصر جلد ششم کے صفحات 26،122،131،132،177 پر ”فاطمہ علیہا السلام” لکھا ہے۔جلد ششم صفحہ 119میں ”الحسین بن علی علیہما السلام“تحریر ہے۔جلد ششم صفحہ 364 پر ”الحسن علی علیہ السلام ہے۔جلد ہفتم کے درجنوں صفحات 53،56 ،114،236،345 اور 355میں ”فاطمۃ علیہا السلام“موجود ہے۔جلد نہم صفحہ ۱۰۹ پر ”علی بن حسین علیہ السلام“ 274،407 میں ”فاطمۃ علیہا السلام“تحریر ہے۔جلد تیرہ،صفحہ 347 پر”حسین بن علی علیہ السلام“لکھا ہے۔عمدۃ القاری شرح صحیح البخاری جلد ہفتم صفحہ 237 مطبوعہ قسطنطنیہ میں ”فاطمۃ علیہاالسلام“ہے۔ارشاد الباری شرح صحیح البخاری جلداول صفحہ 97 میں بھی ”فاطمۃ علیہاالسلام“ لکھا ہے۔علامہ فخر الدین الرازی نے تفسیر کبیر جلد 2،صفحہ 700 مطبوعہ دارالطباعۃ العامرہ قسطنطنیہ میں لکھا ”الحسن والحسین علیھما السلام کانا ابنی رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم”۔

انہوں نے کہا کہ امام اہلسنت امام شافعی کا فرمان تاریخ میں جگمگا رہا ہے کہ اے اہلِ بیتِؑ رسول صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم خدا نے اپنی کتاب میں آپکی محبت فرض کی ہے۔آپکی عظمت بیان کرنے کے لئے یہی کافی ہے کہ جو آپؑ پر صلواۃ نہ بھیجے (درور نہ پڑھے) اس کی نماز ہی نہیں۔ آغا سید حامد علی شاہ موسوی نے اس امید کا اظہار کیا کہ ارباب اختیاراور تمام قومی ادارے آئین پاکستان پر ہونے والے حملے کو ناکام بنانے کیلئے کوئی دقیقہ فروگذاشت نہیں کریں گے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.