یوم دحوالارض: اللہ کی زمین انسانوں پر تنگ کرنے والے قہر خداوندی سے کبھی بچ نہیں سکتے، عالمی معاشی بحران سرمایہ داری نظام کا پیدا کردہ ہے،آغا حامد موسوی

ولایت نیوز شیئر کریں

عالمی معاشی بحران سرمایہ داری نظام کا پیدا کردہ ہے انسانیت اللہ سے نافرمانی کی سزا بھگت رہی ہے،آغا حامد موسوی
استعماری قوتیں غریب اقوام کا خون نچوڑ رہی ہیں، دنیا بھر میں جنگوں کے کے پیچھے زمین کی دولت پر قبضے کا شیطانی خواب ہے
مسلمانوں میں تفریق پید اکرکے گریٹر صیہونی ریاست کی راہ ہموار کی جارہی ہے مسلم ممالک باہمی تنازعات ختم کردیں
مسلمانوں کا اتحاد شیطانی صیہونی و استعماری نظاموں کی موت ثابت ہو گا، اللہ کی زمین انسانوں پر تنگ کرنے والے قہر خداوندی سے کبھی بچ نہیں سکتے
25ذیقعد نعمت خداوندی کا روز ہے جب اللہ نے خانہ کعبہ کے مقام سے پانی پر زمین کا فرش بچھایا، اس روزخدا کی رحمت دنیا میں عام ہوتی ہے
نئی نسل کو اسلامی دنوں کی اہمیت سے آگاہ کرنے کیلئے نصاب میں خصوصی مضامین شامل کئے جائیں، محفل دحوالارض سے قائد ملت جعفریہ کا خطاب،27تا29ذیقعد ایام تقویٰ منانے کا اعلان

اسلام آباد(ولایت نیوز )سپریم شیعہ علماء بورڈ کے سرپرست اعلیٰ قائد ملت جعفریہ آغا سید حامد علی شاہ موسوی نے کہا ہے کہ عالمی معاشی بحران سرمایہ داری نظام کا پیدا کردہ ہے انسانیت اللہ سے نافرمانی کی سزا بھگت رہی ہے،استعماری قوتیں صیہونی سودی نظام کی مدد سے غریب ملکوں اور اقوام کا خون نچوڑ رہی ہیں، دنیا بھر میں جنگوں کے کے پیچھے زمین کی دولت پر قبضے کا شیطانی خواب ہے ،مسلمانوں میں تفریق پید اکرکے گریٹر صیہونی ریاست کی راہ ہموار کی جارہی ہے مسلم ممالک باہمی تنازعات ختم کردیں، مسلمانوں کا اتحاد شیطانی صیہونی و استعماری نظاموں کی موت ثابت ہو گا، اللہ کی زمین انسانوں پر تنگ کرنے والے قہر خداوندی سے کبھی بچ نہیں سکتے، یوم دحوالارض 25ذیقعدرحمت خداوندی کا روز ہے جب اللہ نے خانہ کعبہ کے مقام سے پانی پر زمین کا فرش بچھایا،نئی نسل کو اسلامی دنوں کی اہمیت سے آگاہ کرنے کیلئے نصاب میں خصوصی مضامین شامل کئے جائیں۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے محفل دحوالارض سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔

اس موقع پرانہوں نے باب المراد حضرت امام محمدتقی علیہ السلام کی شہادت کے سلسلے میں 27تا29ذیقعددنیابھرکی طرح پورے پاکستان میں ”ایام تقویٰ“ منانے کا اعلان بھی کیا۔

آغا سید حامد علی شاہ موسوی نے کہا کہ ذو القعدہ کی 25 ویں وہ با برکت اور سعید تاریخ ہے کہ جب زمین کو کعبہ کے نیچے بچھایا گیا اور یہی وجہ ہے کہ یہ دن اور اس کی رات ان نیک دن اور راتوں میں سے ایک ہے کہ جن میں خدا اپنے بندوں پر رحمت فرماتا ہے اور اسلامی روایات کے مطابق اس دن میں قیام و عبادت کرنے کا بہت زیادہ اجر و ثواب ہے اور روز دحوالارض ان دنوں میں سے ایک ہے کہ سال بھر میں جس میں روزہ رکھنے کی فضیلت بہت زیادہ ہے۔

انہوں نے کہا کہ مکہ مکرمہ کے نام کے پیچھے بھی دحوا لارض ہی پوشیدہ ہے ایک شامی مرد نے امام علی ؑ سے سوال کیا کہ کیوں مکہ کو مکہ کہا گیا؟ امام ؑنے فرمایا: اس وجہ سے کہ زمین مکہ کے نیچے سے پھیلنا شروع ہوئی۔ مک کے معنی منظم حرکت کرنے کے ہیں۔ دحو الارض کی تفسیر میں بھی یہی آیا ہے کہ زمین مکہ سے دھیرے دھیرے پھیلنا شروع ہوئی اور حرکت کرنے لگی۔جب خدا وند عالم نے زمین کو خلق کیا تو اس کا فرش کعبہ کے نیچے سے پھیلانا شروع کیا پھر اسے پانی پر پھیلا دیا۔

آغا سید حامد علی شاہ موسوی نے کہا کہ حضرت امام رضا علیہ السلام جب خراسان کے سفرکے دوران 25 ذیقعدہ کو مرو پہنچے تو آپ نے فرمایا: آج کے دن روزہ رکھو میں نے بھی روزہ رکھا ہے راوی کہتا ہے ہم نے پوچھا اے فرزند رسول آج کون سا دن ہے؟ فرمایا: آج وہ دن ہے جس میں اللہ تعالی کی رحمت نازل ہوئی اور زمین کا فرش بچھایا گیا۔اسی روز حضرت ابراہیم علیہ السلام اور حضرت عیسی علیہ السلام متولد ہوئے۔جو شخص اس روز روزہ رکھے اس نے گویا 60ماہ کے روزے رکھے۔

آغا سید حامد علی شاہ موسوی نے مفاتیح الجنان کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ 25ذیقعد سال بھر کے ان چار دنوں میں سے ایک ہے کہ جن میں روزہ رکھنے کی خاص فضیلت ہے، ایک روایت میں ہے کہ اس دن کا روز ہ ستر سال کے روزے کی مانند ہے اور ایک روایت میں ہے کہ اس دن کا روزہ ستر سال کے گناہوں کا کفارہ ہے، جو شخص اس دن روزہ رکھے اور اس کی رات میں عبادت کرے تو اس کیلئے سو سال کی عبادت لکھی جائے گی۔آج کے دن روزہ رکھنے والے کے لیے ہر وہ چیز استغفار کرے گی جو زمین و آسمان میں ہے یہ وہ دن ہے، جس میں خدا کی رحمت دنیا میں عام ہوتی ہے، اس دن ذکر و عبادت کیلئے جمع ہونے کا بہت بڑا اجر ہے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.