شیطنت انسانیت کو اللہ سے دور کرنا چاہتی ہے،رمضان قرب الہی کا وسیلہ ہے،آغا حامد موسوی کا ایام استقبال رمضان منانے کا اعلان

ولایت نیوز شیئر کریں

شیطنت انسانیت کو اللہ سے دور کرنا چاہتی ہے،رمضان قرب الہی کا وسیلہ ہے،آغا حامد موسوی
اپنی طاقت پر نازاں استکبارو استعمار مچھر سے لاکھوں گنا چھوٹے وائرس کے سبب عالمی لاک ڈاؤن پر مجبور ہو گئے
شیطان حیلہ سازیوں میں مصروف ہے؛ خیرو برکات کے سرچشموں کو بند کرکے انسانیت کی آزمائشوں میں اضافہ کردیا گیا
اللہ کی بارگاہ میں لب فریاد کریں گے جھولیاں دراز ہوں گی تووباؤں اور مایوسیوں کی گھٹاؤں سے ضرور نجات ملے گی
رمضان مایوسیوں میں گھری انسانیت کیلئے امید کا چراغ ہے، عہدیداران سے خطاب؛ ایام استقبال رمضان منانے کا اعلان

اسلام آباد( ولایت نیوز) سپریم شیعہ علماء بورڈ کے سرپرست اعلیٰ قائد ملت جعفریہ آغا سید حامد علی شاہ موسوی نے کہا ہے کہ شیطنت بنی نوع انسان کو اللہ کی نشانیوں سے دور کرنا چاہتی ہے،ماہ رمضان کی آمد ایک نعمت عظمی اورقرب الہی کا وسیلہ ہے، اپنی طاقت و ٹیکنالوجی پر نازاں استعمار و استکبار ایک مچھر سے کئی لاکھ گنا چھوٹے وائرس کے سبب عالمی لاک ڈاؤن پر مجبور ہو گئے سائنسی ترقی تاحال اس جرثومے کے ادراک اور مقابلے سے بے بس نظر آتی ہے، اپنے چیلوں کی بے بسی کے باوجود شیطان حیلہ سازیوں میں مصروف ہے خیرو برکات کے سرچشمے بیت اللہ و روضہ رسول ؐ اور آئمہ کے مراقد قدسیہ کو بند کرکے انسا نیت کی آزمائشوں میں اضافہ کردیا گیاہے لہذا انسانیت کو ماہ رمضان میں اللہ سے رشتہ مضبوط کرنا ہوگا جو جو ہر وبا اور بلا سے نجات کی ضمانت ہے،اللہ نے ماہ مقدس میں رحمت برکت استغفار اور عذاب سے نجات کا وعدہ کررکھا ہے اور یہ نبی کریم ؐ کی بشارت ہے کہ اس مہینے اللہ پکارنے والوں کو جواب دیتا ہے یقینا جب اس ماہ مقدس میں اللہ کی بارگاہ میں لب فریاد کریں گے ہاتھ پھیلیں گے جھولیاں دراز ہوں گی تو خداوند عالم کی نعمات و برکات کا ابر ضرور برسے گا اور وباؤں اور مایوسیوں کی گھٹاؤں سے ضرور نجات ملے گی۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے ٹی این ایف جے کے مرکزی عہدیداران سے خطاب کرتے ہوئے کیا اس موقع پر انہوں نے 27شعبان سے شھر اللہ کے آغاز تک ایام استقبال رمضان کا اعلان بھی کیا۔

آغا سید حامد علی شاہ موسوی نے کہا کہ یہ اللہ کا مسلمانوں پر احسان عظیم ہے کہ اس پاک ذات نے صرف مسلمانوں ہی نہیں پوری انسانیت کو رمضان المبارک کا مہینہ عطا کیا جس میں انسانوں کو اللہ کی بارگاہ میں توبہ کا موقع نصیب ہو رہا ہے رمضان المبارک انسانوں پر اللہ کی بے پایاں نعمات کا مظہر ہے اللہ رب العزت اپنی مخلوق کو کامیابی و سرفرازی پر گامزن کرنے کیلئے اس ماہ مقدس میں خیر و برکات کا دہانہ کھول دیتا ہے۔

آغا سید حامد علی شاہ موسوی نے پیغمبراکرم کے ’خطبہ شعبانیہ‘کو دہراتے ہوئے کہا کہ رمضان برکت، رحمت اور مغفرت سے بھرپور مہینہ ہے،جو تمام مہینوں سے بہتر ہے اس کے دن تمام دنوں سے بہتر اور اس کی راتیں تمام راتوں سے بہتر ہیں اس کے ساعات ولحظات تمام ساعات ولحظات سے افضل ہیں۔اس مہینے میں تمہارا سانس لیناتسبیح اور سونا عبادت ہے اعمال مقبول اور دعائیں مستجاب ہیں اس ماہ میں خدا وندعالم اپنے بندوں کی طر ف خاص رحمت کی نگاہ سے دیکھتا ہے اْس سے مناجات کریں تو جواب دیتا ہے اور اسے پکارے تو لبیک کہتا ہے اورجب اس سے کوئی چیز مانگیں اور دعا کریں تو اجابت کرتا ہے۔جو کوئی اس مہینے میں دوسروں کو اپنی اذیت سے بچاتا رہے گا تو قیامت کے دن خدا اس کو اپنے غیض وغضب سے محفوظ رکھے گا۔ اور اگر کوئی اس مہینے میں کسی یتیم پر احسان کرے گا تو خدا وند عالم قیامت کے دن اس پر احسان کرے گا اور کوئی اس مہینے میں اپنے رشتہ داروں سے صلہ رحم کرے گا تو خداوند قیامت کے دن اس کو اپنی رحمت سے متصل کرے گا اور جو کوئی اس مہینے میں اپنے رشتہ داروں سے قطع رابطہ کرے گا خداوند قیامت کے دن اس سے اپنی رحمت کو قطع کرے گا۔

پیغمبر اکرم ؐ محمد مصطفی صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کا فرمان ہے کہ اس مہینے میں بہترین عمل محرمات الہی سے پرہیز کرنا ہے،جو کوئی اس مہینے میں مستحب نماز بجالائے گا تو خداوند اس کو جہنم سے نجات دے گا اور جو کوئی اس مہینے میں ایک واجب نماز پڑھے گا تو اس کے لئے دوسرے مہینوں میں سترنمازیں پڑھنے کا ثواب دے گا اور جوکوئی اس مہینے میں زیادہ سے زیادہ درود بھیجے گا خدا وند قیامت کے دن اس کے نیک اعمال کے پلڑے کو وزنی کرے گا اور جو کوئی اس مہینے میں قرآن مجید کی ایک آیت کی تلاوت کرے گا، اس کو دوسرے مہینوں میں ختم قرآن کرنے کا ثواب ملے گا اس مہینے میں جنت کے دروازے کھول دئے گئے ہیں اپنے پرودگار سے درخواست کرو کہ اس کو تمہارے اوپر بند نہ کرے اور جہنم کے دروازے اس مہینے میں بند کردئے گئے ہیں اپنے پرودگار سے درخواست کرو کہ تمہارے لئے ان کو نہ کھولے اور شیاطین اس مہینے میں باندھے گئے ہیں اپنے رب سے درخواست کرو کہ ان کو تمہارے اوپر مسلط نہ کرے۔

آغا سید حامد علی شاہ موسوی نے کہا کہ رمضان کے حوالے سے پیغمبر اکرم ؐ کے فرامین کی ایک ایک سطر مایوسیوں میں گھری انسانیت کیلئے امید کا چراغ ہے اور اس بات کو واضح کررہی ہے کہ آفتوں سے امان کیلئے ہمیں اپنے اعمال و کردار افکار و گفتار اللہ کی مرضی اور احکامات کے مطابق ڈھالنے ہوں گے، پاکیزہ صحابہ کرام کی تعلیمات کے مطابق مسلمانان عالم کو اس ماہ مقدس میں قرآن و اہلبیت ؑکو وسیلہ بنا کر اللہ کی بارگاہ میں گڑگڑا کر گناہوں سے تائب ہو نا ہوگااور اپنے کردار و عمل کو دین کا پابند بنانے اور محرمات سے بچنے کا عہد کرنا ہوگا۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.