رکاوٹوں کے باوجودآبپارہ چوک میں یوم انہدام البقیع کے احتجاج میں ہزاروں افراد کی شرکت

ولایت نیوز شیئر کریں

رکاوٹوں کے باوجودآبپارہ چوک میں تحریک نفاذ فقہ جعفریہ کا فقید المثال احتجاج

یوم انہدام جنت البقیع کے احتجاج میں ہزاروں افراد کی شرکت، علمائے کرام نے قیادت کی

اسلام آباد(نوید حیدری رپورٹ ۔ولایت نیوز)اسلام آباد میں8شوال کا ماتمی احتجاجی جلوس حسب سابق حضرت بری امام کے والد گرامی حضرت سخی محمود بادشاہ ؒ کے مزار سے نکالا گیا جس میں ہزاروں افراد نے شرکت کی جلوس کی قیادت مختلف مکاتب کے علمائے کرام اور مذہبی عمائدین کررہے تھے ۔اس موقع پر انتظامیہ نے مظاہرین کو تاجروں کے اعتراض کی بناءپر آبپارہ چوک جانے سے روکنے کی کوشش کی لیکن تحریک نفاذ فقہ جعفریہ کے کارکنان نے پرامن طور پر تمام رکاوٹیں دور کردیں ۔

آبپارہ چوک میں مظاہر ین سے خطاب کرتے ہوئے ٹی این ایف جے کے سیکرٹری جنرل سید شجاعت علی بخاری نے کہا کہ جنت البقیع کے احتجاج کو غیر آباد علاقے تک محدود کرنے کی کوشش افسوسناک ہے حکمرا ن انتظامیہ تاجر بتائیں کہ کیا کسی کے باپ یا ماں کی قبر کو ئی اکھاڑ ڈالے تو وہ اپنا احتجاج گھر میں بیٹھ کر کرے گا؟ ۔کیا جنت البقیع میں مدفوں 9 امہات المومنین تمام مسلمانوں کی مائیں نہیں ؟

شجاعت بخاری نے کہا کہ احتجاج ہوتا ہی عوامی مقامات پر ہے اور جنت البقیع کے انہدام کا احتجاج صرف شیعہ یا سنی کا مسئلہ نہیں بلکہ ہر مسلمان اور غیرتمند انسان کا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ہم قائد ملت جعفریہ آغا سید حامد علی شاہ موسوی کی امن کی پالیسی پر گامزن ہیں لیکن امن و محبت کی پالیسی کو کمزوری نہ سمجھا جائے ۔اپنے حقوق پر کوئی سودا بازی نہیں کریں گے ۔

اس موقع پر علامہ بشارت امامی نے قائد ملت جعفریہ آغا سید حامد علی شاہ موسوی کا پیغام پڑھ کر سنایا قراردادیں منظور کروائیں اور جنت البقیع میں مدفون اسلام کی محسنہ بی بی سیدہ فاطمہ زہراؑ کی شہادت کے مصائب بھی بیا ن فرمائے ۔

جلوس کی شرکاء سے علامہ محسن علی الحسینی ،علامہ فخر عباس عابدی،علامہ رفاقت حسین نقوی،مفتی باسم عباس زاھری، نصیر حسین سبزواری اور دیگر نے بھی خطاب کیا جبکہ ضلعی جنت البقیع کے کنوینئر راجہ ذوالفقار علی نے شرکائے ریلی اور انتظامیہ سے اظہار تشکر کیا۔

بعدازاں جلوس میں شامل ماتمی حلقوں نے ماتمداری و نوحہ خوانی کی او رجلوس اپنے روایتی راستے سے گزرتا ہوا واپس دربار سخی محمود بادشاہ ؒ پہنچ کر دعا و زیارت کے بعد اختتام پذیر ہوا۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.