ٹی این ایف جے خیبرپختونخوا کی ہوم سیکرٹری سے ملاقات،ڈی آئی خان میں فوری ٹارگٹڈ آپریشن کا مطالبہ

ولایت نیوز شیئر کریں

مکتب تشیع کودرپیش مسائل ترجیحی بنیادوں پر حل کئے جائیں گے ، ہوم سیکرٹری خیبر پختونخواہ کی تحریک نفاذ فقہ جعفریہ کو یقین دہانی

ڈیرہ اسماعیل خان میں مسلسل ٹارگٹ کلنگ پر اظہار تشویش ، ڈی آئی خان سمیت دیگرشہروں میں فی الفور ٹارگٹڈ آپریشن کا مطالبہ ،مولاناملک اجلال حیدری

نیشنل ایکشن پلان میں بعض نقائص کے سبب دہشت گردی ختم ہونے کا نام نہیں لے رہی،مکمل عملدرآمدسے دہشت گردی کانام نام ونشان مٹ سکتاہے

تحریک نفافقہ جعفریہ وطن کی سالمیت استحکام یکجہتی ، امن کیلئے کوشاں ہیں ۔ خیبرپختونخواکے وفد کی ہوم سیکرٹری اکرام اللہ خان سے ملاقات

پشاور(ولایت نیوز )تحریک نفاذ فقہ جعفریہ خیبر پختونخوا کے نمائندہ وفد نے صوبائی صدر سردار ابو الحسن قزلباش کی سرکردگی میں ہوم سیکرٹری اکرام اللہ خان سے ملاقات کی ۔وفدمیں تحریک کے صوبائی نائب صدر مولانا ملک اجلال حیدر الحیدری، سیکرٹری جنرل ذوالفقار حیدر جمیل، جوائنٹ سیکرٹری ذوالفقارعلی کیانی ،ضلعی صدر پشاور حاجی عابد حسین ، آغانوازعلی کیانی بھی شامل تھے ۔وفد نے ہوم سیکرٹری کو صوبائی سطح پر مکتب تشیع کو درپیش مسائل ،متعصبانہ رویے اور حقوق کی محرومی کے حوالے سے ملت جعفریہ کی تشویش سے آگاہ کرتے ہوئے صوبے میں بے گناہ شیعہ سنی شہریوں اور سیکیورٹی اہلکاروں بشمول پولیس جوانوں کی ٹارگٹ کلنگ کی مذمت کرتے ہوئے ڈیر ہ اسماعیل خان ، پشاور، کوہاٹ ، ہنگو، پاڑہ چنار سمیت صوبے کے دیگرشہروں میں فی الفور ٹارگٹڈ آپریشن کرنے کا مطالبہ کیا ۔

وفد نے اس امر پرگہری تشویش کا اظہار کیا کہ اندورنی وبیرونی سطح پر دہشت گردی کے خوفناک عفریت کا سامنا ہے جس میں خیبرپختونخوااورخاص طورپرڈیرہ اسماعیل خان ڈویژن کافی عرصہ سے ٹارگٹ کلنگ کاشکارہے جہاں گزشتہ ہفتوں کے دوران درجنوں سے زائدلوگ لقمہ اجل بن چکے ہیں ۔ٹی این ایف جے کے صوبائی نائب صدر مولاناملک اجلال حیدرالحیدری نے ہوم سیکرٹری کو بتایا کہ اگرنیشنل ایکشن پلان پرعمل کراودیاجائے توپاکستان سے دہشت گردی کانام ونشان مٹ سکتاہے لیکن اس پر عملدرآمد میں تاحال بعض نقائص موجود ہیں جس کے سبب دہشت گردی ختم ہونے کا نام نہیں لے رہی۔ انہوں نے مطالبہ کیاکہ ٹی این ایف جے کے اراکین کو شیدول فور میں شامل کرنا سراسر ناانصافی ہے ،فتنہ گروں کے سامنے چالیس سال سے ڈٹے ہوئے کارکنوں کوایسی سزادیناصائب نہیں ،انتظامیہ کے اس اقدام کے سبب نہ صرف ان امن کے پر چارک رہنماؤں کے شاختی کارڈبلاک ہوگئے ہیں بلکہ ان کیلئے نان نفقہ کے مسائل بھی پیداہوگئے ہیں، پرامن کارکنوں کے نام فورشیڈول سے فوری طورپرنکالے جائیں اوران کے شاختی کارڈبحال کئے جائیں ،شیڈول فورکی لسٹ مرتب کرنے کیلئے ہوم ڈپارٹمنٹ اور انتظامیہ کو رہنمائی کیلئے ہدایات جاری کی جائیں کہ مسلکی مذہبی فعالیت کے بجائے شرپسندی اور فتنہ گری کو شیدول فور میں شمولیت کا معیار قرار دیا جائے ، کسی بھی شخص کے ساتھ مسلکی، مکتبی، لسانی یا علاقائی تخصیص نا کی جائے اور ہر دشمن دین و وطن کی سرگرمیوں پر نظر رکھی جائے اور قانون کے مطابق عمل کیا جائے ،تحقیقاتی اداروں کی مددسے نام بدل کرکام کرنے والی کالعدم جماعتوں اوران کے رہنماؤں کی سرگرمیوں کوروکاجائے ،کسی بھی کالعدم جماعت کے رکن کوامن کمیٹی یادیگرکسی بھی حکومتی ادارے میں شامل نہ ہونے دیاجائے ایساکرنے سے عوام کے اپنے انتظامی مسائل کے حل کیلئے ان کالعدم جماعتوں کے ہمدردوں سے رجوع کرنے پرمجبورہوجاتے ہیں اوروہ کالعدم جماعتیں بلیک میلرکاروپ دھارلیتی ہیں، کراچی کی طرح ڈیرہ اسماعیل خان ، پشاورہنگو، کوہاٹ ، پاڑہ چنار، مردان اوردیگر شہروں میں بھی عساکرپاکستان کے زیراہتمام سرچ آپریشن کیاجائے،کالعدم دہشت گردگروپوں اورانکے سہولت کاروں کوآہنی شکنجے میں جکڑاجائے ،ڈیرہ اسماعیل خان میں تمام راستوں پر خصوصی ناکے دوبارقائم کیے جائیں تاکہ تخریب کارعناصرسے محفوظ رہاجاسکے ۔

انہوں نے کہاکہ ہم پاکستان کے پرامن شہری ہیں اورمکتب تشیع کی واحد نمائندہ تنظیم تحریک نفاذ فقہ جعفریہ ہے جس پرکوئی پابندی نہیں ہے ہم امن کیلئے آپ سے ہمہ وقت تعاون کیلئے حاضرہیں آپریشن ضرب عضب سے لیکر ردالفساد تک آپ کے ہمراہ کھڑے ہیں ۔ انہوں نے کہاکہ تحریک نفافقہ جعفریہ وطن کی سالمیت استحکام یکجہتی اورامن کیلئے پہلے بھی کوشاں رہی ہے اورآئندہ بھی صوبے سے دیہہ تک اپنی کاوشیں امانت و دیانت کے ساتھ جاری رکھے گی ۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.