علماء بورڈ کو بھی کالعدم جماعتوں سے بھر لیا گیا ایکشن پلان پر عمل ہوتا تو کسی کو پاکستان پر الزام لگانے کی جرات نہ ہوتی ، آغا حامد موسوی

ولایت نیوز شیئر کریں

پاکستان نے دہشت گردی کے خلاف سب سے بڑی جنگ لڑی ایکشن پلان پر عمل ہوتا تو کسی ابلیسی قوت کو پاکستان پر الزام لگانے کی جرات نہ ہوتی ، آغا حامد موسوی

نظریاتی کونسل کے بعد پنجاب علماء بورڈ کو بھی کالعدم جماعتوں سے بھر لیا گیاوزیر اعظم، آرمی چیف ، چیف جسٹس کو نوٹس لینا ہوگا

کالعدم نئے ناموں سے انتخابات میں لڑرہی ہیں شیعہ سنی لیبل سے شیعہ سنی وحدت کو نقصان پہنچا رہی ہیں جبکہ وطن میں کوئی شیعہ سنی لڑائی نہیں

پاکستان کو عزت و حرمت کی معراج تک پہنچانے کیلئے حکمرانوں سیاستدانوں کو قول و فعل کا تضاد ختم کرنا ہوگا،کالعدم جماعتوں کے سرپرستوں کو بھی جکڑا جائے

پیدا ہوتے ہی درگور ہو جانے والی بیٹیوں کووجود فاطمہ زہراؑ سے حرمت و رفعت نصیب ہوئی خاتون جنت فاطمہ زہرا ؑ عظمت نسواں کا ستعارہ ہیں

’ایام عظمت نسواں‘ کے دوران دین و وطن کی عزت و حرمت کیلئے جانیں نچھاور کرنے کے درس فاطمی ؑ کا اعادہ کیا جائے، مختا رسٹوڈنٹس نگران کونسل سے خطاب

اسلام آباد ( ولایت نیوز) سپریم شیعہ علماء بورڈ کے سرپرست اعلی و تحریک نفاذ فقہ جعفریہ کے سربراہ آغا سید حامد علی شاہ موسوی نے کہا ہے کہ پاکستان نے دہشت گردی کے خلاف سب سے بڑی جنگ لڑی اگر حکمران نیشنل ایکشن پلان پر عمل کرواتے تو کسی ابلیسی قوت کو پاکستان پر الزام لگانے کی جرات نہ ہوتی ، اگرپاکستان کو عزت و حرمت کی منزل معراج تک پہنچانا ہے تو حکمرانوں سیاستدانوں کو قول و فعل کے تضاد کو ختم کرنا ہوگا، نظریاتی کونسل کے بعد پنجاب علماء بورڈ کو بھی کالعدم جماعتوں سے بھر لیا گیاوزیر اعظم آرمی چیف ، چیف جسٹس کو نوٹس لینا ہوگا،کالعدم جماعتوں کو ہی نہیں ان کے سرپرست اور ان پارٹیوں کو بھی شکنجے میں جکڑنا ہوگا ،بصورت دیگر قربانیوں کے باوجود ہم پر الزامات لگتے رہیں گے ، کالعدم جماعتیں نئے ناموں سے دندناتی پھر رہی ہیں انتخابات میں حصہ لے رہی ہیں شیعہ سنی کا نام استعمال کرکے شیعہ سنی وحدت کو نقصان پہنچا رہی ہیں جبکہ وطن عزیز میں کوئی شیعہ سنی لڑائی نہیں ،پیدا ہوتے ہی درگور ہو جانے والی بیٹیوں کووجود فاطمہ زہراؑ سے حرمت و رفعت نصیب ہوئی خاتون جنت فاطمہ زہرا ؑ عظمت نسواں کا ستعارہ ہیں، 18تا20جمادی الثانی ’ایام عظمت نسواں‘ کے دوران کشمیری و فلسطینی بیٹیوں پر بھارتی و اسرائیلی مظالم کے خلاف آواز احتجاج بلند کی جائے اوردین و وطن کی عزت و حرمت کیلئے جانیں نچھاور کرنے درس فاطمی ؑ کا اعادہ کیا جائے ۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے مختار سٹوڈنٹس آرگنائزیشن کی نگران کونسل کے عہدیداروں سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔

آغا سید حامد علی شاہ موسوی نے کہا کہ پاکستان کو روز اول سے بھارتی دہشت گردی و جارحیت کا سامنا ہے پاکستان کے خلاف پہلی دہشت گردی تقسیم ہند پلان کے خلاف ریڈ کلف سے ساز باز کرکے گورداسپورکا مسلم اکثریتی علاقہ بھارت کو دے کر کشمیر کیلئے راستہ فراہم کیا گیا جس کے نتیجے میں لاکھوں مسلمان ہجرت کے دوران تہہ تیغ کردیئے گئے ہندو بلوائیوں نے مسلمانوں پر وہ مظالم ڈھائے جن کی مثال نہیں ملتی ہزاروں پاکدامن خواتین کی عزت کو پامال کیا گیالاشوں سے بھری ٹرینوں کے تحفے پاکستان کو دیئے گئے ۔

انہوں نے کہا کہ کشمیر پر غاصبانہ قبضہ کے بعد جو نا گڑھ حیدر آباد دکن ، مناوادر کی جن ریاستوں نے پاکستان کے ساتھ الحاق کا اعلان کیا تھا ان پر بھی بزور قبضہ کرلیا گیاحیدر آباد دکن پر حملے میں 40ہزار مسلمان لقمہ اجل بنے 65 ء میں رات کی تاریکی میں پاکستان پر ہلہ بول دیا گیا جواًبا پاکستانی قوم نے بھارت کو چھٹی کادودھ یا دلا دیا۔

آغا سید حامدعلی شاہ موسوی نے کہا کہ بھارت نے مکتی باہنی کو پروان چڑھا کر پاکستان کو دولخت کردیااور اس دہشت گردی کو اپنی پارلیمنٹ میں بھی تسلیم کیااور مودی نے ڈھاکہ میں ببانگ دہل کہا کہ نئی نسل کو بتا یا جائے کہ پاکستان توڑنے میں بھارتیوں کا خون شامل ہے، آج بھی بھارتی وزیر داخلہ پاکستان کو دس ٹکڑوں میں تقسیم کرنے کی دھمکیاں دے رہا ہے ۔

انہوں نے کہا کہ بھارت پر راج کرنے والی سوچ صرف مسلمانوں ہی نہیں ہر اقلیت کی دشمن ہے 84 ء میں سکھوں کے مقدس ترین مقام گولڈن ٹیمپل پر حملہ کرکے انسانیت کی دھجیاں بکھیری گئیں جس کے نتیجے میں تین ہزار سکھ لقمہ اجل بنے ، اندرا گاندھی کے قتل کے بعد ایک بار پھر پورے بھارت میں سکھوں کی قتل و غارت کا بازار گرم کر دیا گیا، بابری مسجد کو دن دہاڑے بلوائیوں کے ہاتھوں زمیں بوس کروا دیا گیاصرف یہی نہیں 20ہزا ر دیگر مساجد کو بھی شہید کردیا گیاگجرات میں مودی کی زیر نگرانی دو ہزار مسلمانوں کو ذبح کروادیا گیایا زندہ جلادیا گیااس کے باوجود بھارت سیکولرزم کا چیمپئن بنا پھرتا ہے پلوامہ ڈرامہ بھی بھارت کا اپنا رچایا ہوا ہے ۔

آغا سید حامد علی شاہ موسوی نے کہا کہ پاکستان نے ہمیشہ دہشت گردی کے مقابل نرم رویہ رکھاجس کی تازہ ترین مثال پاکستان کی جانب سے کرتار پورہ راہداری کو کھولنا ہے کیونکہ پاکستان کا نظر یہ اساسی اسلام امن و سلامتی کاپیمبر ہے نہ دہشت گردی کرتا ہے نہ اس کی حمایت کرتا ہے پاکستان پر الزامات کا مقصد عالم اسلام کی واحد ایٹمی قوت کو دباؤ میں رکھنا ہے اور سی پیک کو سبوتاژ کرنے کی راہ ہموار کرنا ہے ۔

قائد ملت جعفریہ آقائے موسوی نے کہا کہ دنیا ذہن نشین کرلے کہ پاکستان کے تمام ادارے ، افواج پاکستان اور عوام ایک اور نیک ہو کر اندرونی و بیرونی دشمنوں کی ہر سازش شرارت کو ناکام کرنے کی مکمل صلاحیت رکھتے ہیں ۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.