سعودی عرب:الجش اورام الحمام قطیف کے بے گناہوں کے ریاستی قتل پر انسانی حقوق کے ٹھیکیداروں کی مجرمانہ خاموشی افسوسناک ہے، آغا حامد موسوی

ولایت نیوز شیئر کریں

جدید دنیا کا المیہ ہے کہ مطلوب دہشت گرددندنا رہے ہیں اورالنمروخاشقجی جیسے مردان حق دن دہاڑے تہہ تیغ کئے جا چکے ہیں ، آغا حامد موسوی

شام اور افغانستان سے امریکہ کی واپسی عالمی دہشت گردی کو تقویت دینے کی نئی چال ہے

استعماریت و صیہونیت کبھی دہشت گردی ختم نہیں ہونے دیں گے، استعماری معیشتیں جنگوں کے سہارے رواں دواں ہیں

دنیا بھر کی غیر ریاستی دہشت گردیاں ہوں یامودی و نیتن یاہوکی ریاستی دہشت گرد یاں‘سب کے پیچھے واشنگٹن کا ہاتھ نمایاں ہے

امن کے پرستاروں کو زینبی جذبے کے ساتھ ہم آوازہونا ہوگا، ’ایام عقیلہ بنی ہاشم ؑ ‘ مظلومین سے یکجہتی کے طور پر منائیں گے،عمائدین سے خطاب

اسلام آباد(ولایت نیوز ) سپریم شیعہ علماء بورڈ کے سرپرست اعلی و تحریک نفاذ فقہ جعفریہ کے سربراہ آغا سید حامد علی شاہ موسوی نے کہا ہے کہ جدید دنیا کا المیہ ہے کہ پوری انسانیت کو مطلوب دہشت گرددندناتے پھر رہے ہیں جبکہ باقر النمر اور خاشقجی حق کی آواز بلند کرنے والے عالمی منافقت کے ہاتھوں دن دہاڑے تہہ تیغ کئے جا چکے ہیں ،الجش اورام الحمام قطیف کے بے گناہوں کے ریاستی قتل پر انسانی حقوق کے ٹھیکیداروں اور نام نہاد عالمی اداروں کی مجرمانہ خاموشی افسوسناک ہے ، شام اور افغانستان سے امریکہ کی واپسی عالمی دہشت گردی کو تقویت دینے کی نئی چال ہے ، ساری دنیا جان لے دہشت گردی استعماریت و صیہونیت کی پیداوار ہے جسے وہ کبھی ختم نہیں ہونے دیں گے استعماری معیشتیں دہشت گردی و جنگوں کے سہارے رواں دواں ہیں ، امن کے پرستاروں و طلبگاروں کو زینبی جذبے کے ساتھ امریکہ اور اس کے پالتو خونخوار دہشت گردوں کے خلاف ہم آواز اور متحد ہونا ہوگا،نواسی رسول ؐ سیدہ زینب بنت علی ؑ کے یوم ولادت پر نور کی مناسبت سے چار تاچھ جمادی الاول ’ایام عقیلہ بنی ہاشم ؑ ‘ مظلومین جہاں سے اظہار یکجہتی کے طور پر منائیں گے ۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے تحریک نفاذ فقہ جعفریہ کوہاٹ کے عمائدین سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔

آغا سید حامد علی شاہ موسوی نے کہا کہ دنیا بھر کی غیر ریاستی دہشت گردیاں ہوں یامودی ااور نیتن یاہو جیسوں کے ہاتھوں برپا ہونے والی ریاستی دہشت گرد یاں سب کے پیچھے واشنگٹن کا ہاتھ نمایاں نظر آتا ہے لیکن اس کے باوجود مردان حریت شرق و غرب میں استعماریت کا حسینی جذبے کے ساتھ مقابلہ کررہے ہیں زینبیؑ کردار کی ماؤں کی گود کے پالے غزہ سے لے کر کشمیر کی وادی تک کلمہ حق بلندکرتے ہوئے گولہ وبارود سے نبردآزما ہیں اور اپنے لہو سے استعماراور اس کے بغل بچوں کے سامنے ناقا بل تسخیر حصار قائم کررہے ہیں ۔

انہوں نے کہا کہ حدیث عشق کے دونوں ابواب حسینؑ و زینب ؑ تاریخ کے بلند خیالوں کی پیشوائی کرتے رہے ہیں بالخصوص زینبی کردار تاریخ کربلا اور مشن حسینیت کیلئے آب حیات کا درجہ رکھتا ہے بقول ڈاکٹر علی شریعتی اگر زینب نہ ہوتیں تو کربلا ،کربلا کے حدود سے تجاوز نہ کرتی اور وہیں قید ہو کر رہ جاتی۔یہ زینب ہی کا ہنر تھا کہ انہوں نے انقلاب کربلا کو ابدیت سے ہمکنار کیا۔

آغا سید حامد علی شاہ موسوی نے کہا کہ میدان کربلا میں شہادت حسین ؑ کے بعد نبی کریم ؐ کی شہر دل نواسی حضرت زینب ؑ کے خطبات نے تاریخ کے دھارے کا رخ بدل ڈالااور ظلم وبربریت کی بنیادیں ہلنے لگیں فتح سے مخمور حکمران شرمندگی اور شکست کا نمونہ بن گئے،حضرت زینب ؑ کے خطبات نے نہ صرف ظالمانہ یزیدی حکومت کو بیخ وبن سے اکھاڑ کرپھینک دیا اور ظلم و جبر کے مقابل صبر و استقامت و جرات کا استعارہ بن گئیں۔

انہوں نے کہا کہ سیدہ زینب ؑ نے عزائے حسینی ؑ کی بنیاد رکھ کر ہر عہد کے ظالموں اور جابروں کے انہدام کا سامان کر دیا دنیا کے گوشے گوشے میں گونجتی ہوئی صدائے زینبی سے ہر آمر و غاصب خوفزدہ ہے۔ آج ضرورت اس امر کی ہے کہ ہماری خواتین ،مائیں،بہنیں ،بیٹیاں کردار زینبی کو نمونہ عمل بنائیں اور اپنے آپ کو کمالاتِ زینبہ ؑ کی آرائشوں سے سرشار و آراستہ کریں کیونکہ راہِ زینب ؑ عالم انسانیت کی سعادت اور ایثار قربانی کی راہ ہے اور زینبی روش خواتین عالم کیلئے عزت و حرمت اور تقویٰ و شرافت کا بہترین نمونہ ہے۔

آغا سید حامد علی شاہ موسوی نے اسلامیان پاکستان سے اپیل کی کہ ایام عقیلہ بنی ہاشم کے موقع پر کشمیر و فلسطین کے حریت پسندوں ،یمن بحرین قطیف العوامیہ میں انسانی حقوق کے طلبگاروں اور بلاتفریق مسلک مذہب رنگ نسل مظلومین عالم کے ساتھ یکجہتی کا اظہار کریں، شہدائے ام الحمام و الجش محمد حسین الشبیب، عبد المحسن طاہر الاسود، عمار ناصر ابو عبداللہ ، علی حسن ابو عبد اللہ عبد المحسن ابو عبد اللہ ، یحیی زکریا آل عمار، عادل جعفر تحیفہ سمیت جملہ شہدائے اسلام و پاکستان ، اور عالم ا سلام کے اتحاد ، وطن عزیز پاکستان کے استحکام اور دہشت گردی کی نابودی کیلئے دست دعا بلند کریں۔

One thought on “سعودی عرب:الجش اورام الحمام قطیف کے بے گناہوں کے ریاستی قتل پر انسانی حقوق کے ٹھیکیداروں کی مجرمانہ خاموشی افسوسناک ہے، آغا حامد موسوی

  • 11 جنوری, 2019 at 12:46 شام
    Permalink

    حسینیت زندہ باد…یزیدیت مردہ باد

    Reply

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.