ممنوعہ جماعتوں کو تحائف سے نوازنا ایکشن پلان کی خلاف ورزی ہے،آرمی چیف اور چیف جسٹس نوٹس لیں، آغا حامد موسوی 

ولایت نیوز شیئر کریں

کالعدم تنظیمیں بھارت کی سہولت کار ہیں آرمی چیف اور چیف جسٹس ممنوعہ جماعتوں کی پذیرائی کا نوٹس لیں، آغا حامد موسوی

مقننہ،عدلیہ ،انتظامیہ ایک پیج پر آکر افواج پاکستان،بے گناہ شہریوں اور معصوم بچوں کے خون کی لاج رکھتے ہوئے ایکشن پلان پر عمل کروئیں

بھارت کو دوستی کی دعوت دینے والے حکمران سیاستدان یاد رکھیں پاکستانی تاریخ بھارتی بد عہدیوں سے بھری ہے، بھارتی رویہ امن کی راہ میں دیوار ہے

لورالائی و پشاور سے کراچی تک تمام دہشتگردیوں میں بھارت ملوث ہے جوپاکستان کا وجود مٹانا اورمقبوضہ کشمیرمیں بدترین مظالم سے توجہ ہٹانا چاہتا ہے

مسئلہ کشمیر کے حل سے قبل پاک بھارت خوشگوار تعلقات خوش فہمی ہے، عالمی ادارے ستصواب رائے کا وعدہ پورا کریں ، یوم حق خودارادیت پرخطاب

اسلام آباد(ولایت نیوز ) سرپرستِ اعلیٰ سپریم شیعہ علماء بورڈ قائد ملت جعفریہ آغاسیدحامدعلی شاہ موسوی نے کہا ہے کہ کالعدم تنظیمیں بھارت سمیت تمام پاکستان دشمنوں کی سب سے بڑی سہولت کار ہیں چیف آف آرمی سٹاف اور چیف جسٹس ممنوعہ جماعتوں کی پذیرائی کا نوٹس لیں، مقننہ،عدلیہ ،انتظامیہ سمیت تما م اداروں کو ایک پیج پر آکر افواج پاکستان،بے گناہ پاکستانی شہریوں اور معصوم بچوں کے خون کی لاج رکھنی ہوگی ایکشن پلان پر عمل کروانا ہوگا ،ممنوعہ جماعتوں کو حساس علاقوں کے دورے کروانا اور تحائف سے نوازنا نیشنل ایکشن پلان کی خلاف ورزی ہے ، لورالائی و پشاور لے کر کراچی ٹارگٹ کلنگ تک پاکستان میں ہونیوالی تمام دہشتگردیوں میں بھارتی ایجنسی را ملوث ہے بھارت ایک طرف پاکستان کو عدم استحکام سے دوچار کرکے پاکستان کا وجود مٹاناچاہتا ہے تو دوسری جانب مقبوضہ کشمیرمیں اپنے بدترین مظالم سے عالمی توجہ ہٹانا چاہتا ہے،بھارت کو دوستی اور مذاکرات کی دعوت دینے والے حکمران سیاستدان یاد رکھیں پاکستانی تاریخ بھارتی بد عہدیوں سے بھری ہے ۔کشمیر پر یو این او کی قراردادوں اور سندھ طاس معاہدے کو پامال کرتے ہوئے آبی جارحیت تک بھارتی رویہ ہمیشہ امن کے راستے میں دیوار بنا ہوا ہے، اقوام متحدہ کاانسانی حقوق کمیشن پکار رہا ہے کہ عالمی ضمیر ہندوستان کو کشمیریوں کے قتل عام سے روکے، عالمی ادارے کشمیریوں سے کیا ہوا استصواب رائے کا وعدہ پورا کریں۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے کشمیریوں کے یوم حق خود ارادیت کے موقع پر ٹی این ایف جے کشمیر کونسل کے عہدیداران سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔

آغا سید حامد علی شاہ موسوی نے کہا کہ مسئلہ کشمیر کے حل کیلئے اقوام متحدہ اور سلامتی کونسل کی پانچ جنوری 1949سمیت منظورکردہ ڈیڑھ درجن سے زائد قراردادیں استصواب رائے کے ذریعے مسئلہ کشمیر کے حل کیلئے مضبوط ترین اساس فراہم کرتی ہیں، بھارت کے پہلے وزیر اعظم جواہر لال نہرو نے اقوام متحدہ کے فورم پر کشمیریوں سے کیا گیا حق خود ارادیت کا وعدہ فراموش کردیا اور یو این کی قراردادوں پر عملدرآمد کے بجائے کشمیر پر بزور تسلط جما دیا اور بھارتی آئین میں ترمیم کرکے مقبوضہ کشمیر کو بھارتی ریاست کا درجہ دیدیا جو عالمی قوانین کی کھلی خلاف ورزی تھی اور پھر کشمیرمیں کبھی گورنر اور کبھی صدارتی راج نافذ ہوتے رہے جو بھارتی جمہوریت کے منہ پر کلنک کا ٹیکہ ہے۔

انہوں نے کہا کہ گزشتہ71سال سے کشمیر کے پیروجوان بھارتی تسلط سے آزادی کیلئے بھاری جانی مالی قربانیاں دیکر اپنی جدوجہدجاری رکھے ہوئے ہیں،بھارت نے کشمیریوں کا حق خود ارادیت سلب کرنے کیلئے ہر حربہ استعمال کیالیکن کوئی ہتھکنڈہ کشمیریوں کے پایہ استقلا ل میں لغزش پیدا نہ کرسکا،بھارتی فوجیں بیلٹ گنوں کا استعمال کرکے بدترین درندگی کی تاریخ رقم کررہی ہیں توکشمیری اپنے خون سے عزم و ہمت اور جرات و دلیری کی داستان تحریر کررہے ہیں ۔

آغا سید حامد علی شاہ موسوی نے کہا کہ بھارت کشمیریوں کی تحریک آزادی کو دہشتگردی قراردیتا ہے اور دنیا کے سامنے اپنے جرائم چھپانے کی کوشش کرتا ہے جبکہ پاکستانی حکمران وسیاستدان آئے روز بھارت کو مذاکرات اور دوستی کی دعوت دیتے نہیں تھکتے ۔

انہوں نے کہا کہ آزادی کے بعد پاکستانی فوج کے انگریز کمانڈر گریسی نے قائد اعظم کے حکم کی نافرمانی کرتے ہوئے پاکستانی فوج کشمیر بھجوانے سے انکار کردیا اگر وہ ایسا نہ کرتا تو آج کشمیری آزاد فضاؤں میں سانس لے رہے ہوتے اور مسئلہ کشمیر اقوام متحدہ میں پیش کرنے کی ضرورت پیش نہ آتی جن پر عملدرآمد سے بھارت مسلسل انکاری ہے،بھارت نے ہمیشہ یہ چاہا کہ پاکستان کشمیری عوام کی حمایت سے دستبردار ہوجائے اسی لئے پاکستان کی سالمیت یکجہتی کے درپے رہا ہے ، مکتی باہنی کے ایجنٹوں کے ذریعے پاکستان کو دولخت کرنے کے بعد اندرا گاندھی کا نظریہ پاکستان خلیج بنگال میں غرق کردینے کا بیان بھارتی چانکیائی منافقت کاکھلا ثبوت ہے آج بھی بھارتی وزیر اعظم مودی سینے پر ہاتھ مار کر پاکستان کو دوٹکڑے کرنے پر فخر و مباہات کرتا ہے۔

آغاسیدحامدعلی شاہ موسوی نے کہا کہ ساری دنیا جان لے جب تک مسئلہ کشمیر عوامی امنگوں کے مطابق حل نہیں ہوگا پاک بھارت خوشگوار تعلقات کا قیام ایک خوش فہمی ہے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.