لبیک البقیع: جناح ایونیو اسلام آباد سمیت ملک بھر میں مختار آرگنائزیشن کے مظاہرے

ولایت نیوز شیئر کریں

جنت البقیع میں حضرت امام جعفر صادق علیہ السلام و دیگرآئمہ ہدیٰ ، صحابہ کبارؓ ، امہات المومیننؓ کے مزارات کی مسماری کے خلاف زبردست احتجاج

اسلام آباد( ولایت یوز) مختارآرگنائزیشن پاکستان (ایم او) کی جانب سے نیشنل پریس کلب اسلام آباد سے تاریخی ریلی نکالی گئی عالمی عشرہ صادقِ آل محمد ؐ کی مناسبت سے ہونے والی ریلی کے شرکاء نے اسلامی مقامات مقدسہ کی بیحرمتی وتباہی ، جنت البقیع میں حضرت امام جعفر صادق علیہ السلام و دیگرآئمہ ہدیٰ ، صحابہ کبارؓ ، امہات المومیننؓ کے مزارات کی مسماری ، عراق وشام میں دہشت گردوں کے ہاتھوں ابنیاء کرام و پاکیزہ صحابہ کباراوؓ مشاہیر اسلام کی قبور ہائے مطہرات کی تباہی اورپاکستان میں اولیاء کرام کے مزارات پرحملوں کیخلاف صدائے احتجاج بلندکی۔

ریلی کے شرکاء کے نام قائد ملت جعفریہ آغا سیدحامد علی شاہ موسوی کا پیغام علامہ بشارت حسین امامی نے پیش کیا۔ اپنے پیغام میں سپریم شیعہ علماء بورڈ کے سرپرست اعلی ٰ و تحریک نفاذ فقہ جعفریہ کے سربراہ آغا سید حامد علی شاہ موسوی نے کہا عالم انسانیت کے کے مشترکہ ورثے ،آثار ،باقیات اور نشانات کا تحفظ ،انہیں منہدم یا نقصان پہنچانے سے روکنا اقوام متحدہ کے چارٹر میں شامل ہے ،دنیائے انسانیت نے اس ادارے سے اپنی تمام تر امیدیں وابستہ کر رکھیں ہیں لیکن اس نے مظلوم ومحروم اقوام کاایک مسئلہ بھی حل نہیں کیا بلکہ آج تک محض عالمی استعمار کے مفادات کو پورا کیا ہے ، وطن عزیزپاکستان نظریہ اساسی کے نام پروجودمیں آیاتھاجسے سبوتاژکرنے کیلئے اندورنی وبیرونی قوتیں پورازورلگارہی ہیں ، چارمارشل لاؤں کاسامناکرناپڑا، سب سے بڑامارشل لاء سب سے بڑے ڈکٹیٹرنے شب خون مارکرمسلط کرکے پاکستان کوگروہی اسٹیٹ بنانے کااعلان کیاجوعلامہ اقبال اورقائداعظم کے اصولوں سے انحراف تھاجسے ہم نے ناکام بنادیامگرآج پھروہی ابلیسی لابیاں پاکستان کے پیچھے ہاتھ دھوکرپڑی ہوئیں ہیں اورحدیہ کہ سرکاری طورپرکالعدم قراردئیے گئے گروپ عام انتخابات میں بڑھ چڑھ کر حصہ لے رہے ہیں اور بعض کالعدم عناصر کو شیڈول فور سے نکال دیا گیا ہے جو نیشنل ایکشن پلان کی کھلی خلاف ورزی ہے۔ انہوں نے اس عہد کا اظہار کیا کہ جب تک ہماری جان میں جان ہے پاکستان کو نظریہ اساسی سے ہٹنے نہیں دیں گے اور شیطانی آلہ کاروں کی ہر سازش کو آپس کے اتحاد کیساتھ ناکام بنا دیں گے۔

ریلی کی قیادت سیکرٹری جنرل ٹی این ایف جے سید شجاعت علی بخاری ، علامہ گفتار حسین صادقی ،علامہ سید زاہد عباس کاظمی، علامہ سید محسن علی ہمدانی ،علامہ سیدتصورحسین نقوی ،مفتی باسم عباس زاہری ، علامہ وقارقمی ،مختار آرگنائزیشن کے شریک چیئرمین سیدشہاب رضوی ، ڈپٹی چیئرمین سیدوجیہ الحسن کاطمی ،مرکزی صدرملک علی فرقانی،سیدثمرالحسن نقوی ، حاجی مختارشاہ ، سید علی اجود نقوی ،سید محمدعباس کاظمی ،سیدعلی رضاجعفری ، ،ذوالفقار علی راجہ ، شوکت جعفری،نصیر حسین سبزواری، سیدمسیب عباس کاظمی ، اسدعباس ہمدانی ، سیدانصرحسین کاظمی ، سیدندیم حسین شاہ کاظمی، سیدضمیرحسین کاطمی ؂ اور دیگر مذہبی رہنما ،ماتمی سالارکررہے تھے۔

اس موقع پر دہشت گردی کیخلاف آپریشن میں مصروف عساکر پاکستان سے بھر پور اظہاریکجہتی بھی کیاگیا،مظاہرین نے مقدس ہستیوں کے مزارات کی خستہ حالی کے خلاف احتجاجی نعرے بلندکئے اوراقوام متحدہ سمیت تمام عالمی اداروں پرزوردیاکہ وہ مکہ مکرمہ اورمدینہ منورہ کے تاریخی قبرستانوں جنت البقیع اورجنت المعلی میں مدفون مشاہیر کے روضہ ہائے مبارک کی ازسرنوتعمیرکیلئے اپناموثرکرداراداکریں تاکہ دنیابھر کے زائرین ان مقدس ہستیوں کی زیارات سے شرفیاب ہو سکیں۔

احتجاجی ریلی نے چائنہ چوک پہنچ کر جلسے کی شکل اختیار کرلی جہاں مظاہرین سے خطاب کرتے ہوئے علامہ بشارت حسین امامی نے ہزاروں شرکا کے سامنے قائد ملت جعفریہ آغاسیدحامدعلی شاہ موسوی کا خصوصی پیغام پیش کیا جس میں انہوں یہ بات زوردیکر کہی کہ استعماری جبر سے نجات اور کشمیری و فلسطینی تحاریک آزادی کو کامیابی سے ہمکنار کرنے کیلئے امام جعفر صادق ؑ کی علمی تحریک سے ناطہ جوڑنا ہوگا۔انہوں نے کہا کہ مسلم حکمران بیدار ہوں اور شعائر اللہ کے تحفظ کیلئے اپنی ذمہ داریاں پوری کریں۔

شرکائے مظاہرہ نے حسن کاظمی کی جانب سے پیش کردہ قرارداد متفقہ طور پر پر جوش نعروں کی گونج میں منظور کی جس میں جنت البقیع و جنت المعلٰی کے مقدس قبرستانوں میں مدفون رسول خدا ؐکے آباء و اجداد،امہات المومنینؓ و صحابہ کبارؓآپ ؐ کی پیاری بیٹی حضرت فاطمہ زہراؑ اور آئمہ اہلبیت ؑ جن میں امام جعفر صادقؑ بھی شامل ہیں کے مزارات کی مسماری کی پرزور مذمت کرتے ہوئے باور کرایا گیاکہ اگراس ظلم کیخلاف آواز احتجاج بلند کی جاتی توشام میں پاکیزہ صحابہ کبارؓ کی قبریں کھودنے،عراق میں انبیاء کرام ؑ کے مزارات کو ڈائنا مائیٹ سے اڑانے، پاکستان میں اولیائے کرام اور قومی ہیروزکے مزارات پر بم دھماکے نہ ہوتے ۔قرارداد میں کہا گیا کہ اس صورتحال پرپوری دنیا کے مسلمان بلاتفریق مسلک و مکتب مضطرب ہیں لیکن افسوس کہ مسلم حکمران اور او آئی سی جیسے استعماری پٹھو ادارے خاموش ہیں ،حقوق بشر کے عالمی ٹھیکیدار اداروں کو سانپ سونگھ چکا ہے،مسلمان ملکوں کی بے حسی سے فائدہ اٹھاکر صیہونی قوتیں اس قدردیدہ دلیر ہو چکی ہیں کہ وہ مدینہ منورہ پر حملہ آور ہوگئیں۔قراردا د میں مطالبہ کیا گیا کہ جنت البقیع و جنت المعلی سمیت سرزمین حجاز پر موجودرسول خدا ؐکے آباء و اجداد،امہات المومنینؓ ، صحابہ کبارؓ،رسولؐ کی پیاری بیٹی ؑ اور آئمہ اہلبیتؑ کے آثار اور رسول خداؐ کی جائے پیدائش کی عزت رفتہ بحال کی جائے ،دنیا بھر میں موجود مشاہیر اسلام کے مزارات کی حفاظت کیلئے نظام وضع کیا جائے،نہتے و مظلوم کشمیریوں ،فلسطینیوں پرہنود ویہو د کے مظالم بند کرائے جائیں ۔بھارت واسرائیل کو دہشت گرد قرار دلوا کر انکی سرکوبی کیلئے عالمی کولیشن تشکیل دیا جائے ،صیہونیت اور بھارتی بربریت کے تدارک کیلئے اقدامات کئے جائیں۔

شرکائے مظاہرہ نے قائد ملت جعفریہ آغا سید حامد علی شاہ موسوی کی بصیرت افرز قیادت پر مکمل اعتماد کا اظہار کرتے ہوئے اس عہد کا اظہار کیا کہ مکتب تشیع کے حقوق ،عقائد حقہ کے تحفظ ،وحت و اخوت کے فروغ اور دین و وطن کی سربلندی کیلئے ان کے حکم پر کسی قربانی سے دریغ نہیں کیا جائے گا۔بعد ازاں مظاہرین نوحہ خوانی و ماتمداری کرتے ہوئے واپس پریس کلب پہنچ کر پر امن طور پر منتشر ہو گئے۔اس موقع پر پولیس کی بھاری نفری ،انتظامیہ کے افسران ،مختارفور س کے رضا کار ، مختار ایس او اور ابراہیم اسکاؤٹس (اوپن گروپ) انتظام و انصرام کیلئے ریلی کے آغاز سے اختتام تک موجود تھے، مختار جنریشن کی جانب سے سبیل کا خصوصی انتظام کیا گیا۔ درایں اثناء پشاور ، فیصل آباد، لاڑکانہ،کراچی، لاہور، جھنگ، خیرپور، حیدرآباد، سیالکوٹ،مظفر آباد،گلگت ،کوئٹہ اور دیگر مقامات پر بھی مختارآرگنائز یشن کی جانب سے ماتمی ریلیاں نکالی گئیں اور پرامن مظاہرہ ہوئے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.