محبوب مصطفی(ص) کا ماتم عالمگیر یوم شہادت علیؑ، مجلس ماتم زنجیر و قمہ زنی؛ مسلم حکمران مرد بنیں جرات حیدریؑ دکھائیں ،آغا حامد موسوی 

ولایت نیوز شیئر کریں

جب تک موجودہ حکمران مسلم دنیا پر مسلط ہیں القدس کے بعد حرمین بھی خطرے کی زد میں ہیں،ظلم کی انتہا ہو چکی‘ اسلامی عسکری اتحاد کہاں ہے ؟
مسلک برادری عصبیت کی بنیاد پر ووٹ مانگنا اور انتخابات میں حصہ لیناملکی سا لمیت کیلئے زہر قاتل ہے ووٹ اسے دیں گے جو حقوق کا تحفظ کرے گا
مذہبی جماعتوں کا اتحاد مفاداتی ہے دین و وطن کی کسی کو پرواہ نہیں ، ادارے اپنا کام کریں اور دوسروں میں مداخلت چھوڑ ،کالعدم تنظیموں کی سرگرمیوں کو روکا جائے
عہد حاضر کا سب سے بڑا بحران عدل و انصاف کی نایابی ہے نجات کے لئے اسوہ علیؑ اپنانا ہوگا دہشت گردی کے موجد خارجی ہیں،میڈیا و عزاداروں سے خطاب
شیعہ سنی اکابرین نے آغا حامد موسوی کو شہادت علی ؑ پر تعزیت پیش کی ؛ جلوسوں میں زنجیر وقمہ زنی نوحہ و ماتم کے رقت انگیز مناظر،قائد ملت جعفریہ کا عالمی یوم القدس حمایت مظلومین منانے کا اعلان

اسلام آباد /راولپنڈی (ولایت نیوز ) مولائے کائنات شیر خدا مشکل کشاامیر المومنین حضرت علی ابن ابی طالب ؑ کایوم شہادت بدھ کو دنیا بھر کی طرح ملک بھر میں عقیدت و احترام اورروایتی مذہبی جذبے کیساتھ منا یا گیا۔ اس موقع پرملک کے تمام چھوٹے بڑے شہروں ،قصبوں اور دیہاتوں میں تابوتِ شیر خداؑ کے جلوس برآمد ہوئے ماتمی عزاداروں نے سینہ کوبی نوحہ خوانی زنجیر زنی قمہ زنی کرکے شہادت علی ؑ کا پرسہ پیش کیا ۔ اس موقع پر شدید رقت انگیز مناظر دیکھنے میں آئے ،مساجد و امامبارگاہوں میں علمائے کرام،واعظین و ذاکرین نے مجالس عزا سے خطاب کرتے ہوئے سیرتِ امیر المومنین حضرت علی ؑ پر تفصیلی روشنی ڈالی۔

جڑواں شہروں راولپنڈی اسلام آباد کا مرکزی جلوس تابوت موہن پورہ سے برآمد ہوا جس میں سرپرست اعلیٰ سپریم شیعہ علماء بوڈ قائد ملت جعفریہ آغاسید حامدعلی شاہ موسوی نے شرکت کرکے تبرکات کی زیارت کی اور ماتمداری میں حصہ لیا۔اس موقع پر ماتمی عزاداروں اور میڈیا کے نمائندوں سے گفتگو کرتے ہوئے آغا حامد موسوی نے کہاکہ مسلم حکمران مرد بنیں بھیک مانگنے سے حقوق کبھی نہیں ملتے ،کشمیر و فلسطین کی بازیابی کیلئے جرات حیدری دکھانی ہوگی ۔ انہوں نے کہا کہ فلسطینیوں ،کشمیریوں پرظلم و دہشت گردی کی انتہا ہو چکی ہے نام نہاد اسلامی عسکری اتحاد کہاں ہے ؟کس مرض کی دواہے؟۔

آقای موسوی نے یہ بات زور دیکر کہی کہ جب تک موجودہ حکمران مسلم دنیا پر مسلط ہیں بیتِ المقدس کے بعد حرمین شریفین بھی خطرے کی زد میں ہیں۔ اس عزم کا اظہار کیا کہ خون کے آخری قطرے تک مقامات مقدسہ کی حفاظت کریں گے۔انہوں نے کہا کہ عہد حاضر کا سب سے بڑا بحران عدل و انصاف کی نایابی ہے جس سے نجات کے لئے اسوہ علی اپنانا ہوگا کیونکہ رسول خدا ؐ نے حضرت علی ابن ابی طالب کو دنیائے عدل و انصاف کا چیف جسٹس قراردیا۔ایک سوال کے جواب میں آغا سید حامد علی شاہ موسوی نے کہا کہ ہمارا دیرینہ موقف ہے کہ مسلک برادری زبان اور کسی بھی عصبیت کی بنیاد پر ووٹ مانگنا اور انتخابات میں حصہ لیناملکی سالمیت کیلئے زہر قاتل ہے ووٹ اسے دیں گے جو حقوق کا تحفظ کرے گا ۔

ایک اور سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ مذہبی جماعتوں کا سیاسی اتحاد مفاداتی ہے دین و وطن کی کسی کو پرواہ نہیں ملک میں نظریاتی سیاست کی بجائے مفاداتی سیاست ہورہی ہے، مقننہ ،عدلیہ اورِ نتظامیہ تمام ادارے اپنا کام کریں اور دوسروں میں مداخلت چھوڑ دیں تو مسائل حل ہو جائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ حضرت علی کی تلوار سے بچ جانے والے خارجیوں نے دہشت گرد نظریات کی بنیاد رکھی جس سے اسلام کا کوئی تعلق نہیں کیونکہ اسلام سراپا امن و محبت ہے، دہشت گردی کے خاتمے کیلئے کالعدم تنظیموں کی سرگرمیوں کو روکا جائے ،ایکشن پلان پر عمل کیا جائے۔

قائد ملت جعفریہ آغا سید حامد علی شاہ موسوی نے واضح کیا کہ پاکستان کی بنیا کلمہ توحید اور اُسکی بنیاد حسین ابن علی ؑ کی قربانی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان حسینیت کی بنیادپر کھڑاہے جسے دنیا کی کوئی طاقت نہیں گرا سکتی۔انہوں نے کہا کہ علی ؑ نے سب سے پہلے آنحضور ؐ کے ساتھ نما زپڑھی حدیث نبی کے مطابق جس جس کے مولانبیؐ ہیں اس اس کے مولا علی ابن ابی طالب ؑ ہیں قرآن میں علی کو نفس رسول ؐ قرار دیا گیا ،شب ہجرت علی ابن ابی طالب نبی کی شبیہہ بن کر بستر رسول ؐ پر سوئے ہم آج بھی شبیہیں بنا کر سنت رسول ادا کرتے ہیں ،آغا سید حامد علی شاہ موسوی نے کہا کہ حیات نبوی ؐمیں دعوت ذوی العشیرہ سے نبی کی تجہیز تکفین تک علی ابن ابی طالب ؑ رسول کے ساتھ رہے ، خلفاء کو درپیش ہر لا ینحل مسئلے کا حل علی ابن بی طالب ؑ نے بتایا حضرت عمر ابن خطاب کا قول ہے کہ علی ؑ نہ ہوتے تو عمرؓ ہلاک ہو جاتا،بدر سے فتح مکہ تک ہر میدان کے فاتح رہے میدان میں کوئی علی پر وار نہیں کر سکتا تھااسی لئے بزدل خارجی دہشت گرد نے حالت سجدہ میں حضرت علی ابن ابی طالب ؑ پر ضرب لگائی اور امیر المومنین ’رب کعبہ کی قسم میں کامیاب ہوگیا‘کی صدا لگا کر تا ابد دہشت گردی و ظلم و بربریت کی شکست کا اعلان کردیا ۔

انہوں نے کہا کہ جمعۃ الوداع کو یوم القدس حمایت مظلومین منا کر مظلومین عالم سے اظہار یکجہتی کریں گے ۔

اس موقع پرماتمی تنظیموں کے سالاروں ، شیعہ سنی اکابرین کے علاوہ مرکزی میلاد کمیٹی کے عہدیداران نے ندیم شیخ، شاہد غفور پراچہ کی سرکردگی میں قائد ملت جعفریہ آغا سیدحامد علی شاہ موسوی سے ملاقات کرکے شہادت علی ابن ابی طالب پرتعزیت پیش کی ۔

شہادت حضرت علی ؑ کے مرکزی جلوس میں انتظامیہ کی جانب سے سیکیورٹی کے خصوصی انتظامات کئے گئے تھے ۔ پولیس کی بھاری نفری کے علاوہ مختار فورس ‘ابراہیم سکاؤٹس اوپن گروپ کے سینکڑوں رضا کاروں نے حفاظتی انتظامات سنبھال رکھے تھے ۔ جلوسِ عزا میں راولپنڈی ریجن کے بیسیوں ماتمی حلقوں اور ہزاروں غمگساروں نے شرکت کی ۔ناولٹی چوک میں تابوت پہنچنے پر زبردست زنجیر زنی کی گئی ۔مرکزی جلوس تابوت فوارہ چوک اورٹرنک بازار سے ہوتا ہوا سحری کے وقت امامبارگاہ کرنل مقبول حسین پہنچ کر اختتام پذیر ہوا۔دورانِ جلوس کشمیری بازار میں مختار سٹوڈنٹس آرگنائزیشن راولپنڈی کی جانب سے عزاداری کیمپ لگایا گیا تھا جہاں شرکاء کیلئے سبیل کاخصوصی بندوبست تھا۔جبکہ ابراہیم سکاؤٹس کی جانب سے زنجیرزنوں کیلئے فرسٹ ایڈمیڈیکل کیمپ لگایاگیا۔

درایں اثنا ہیڈ کوارٹر مکتب تشیع میں موصولہ اطلاعات کے مطابق کراچی لاہور کوئٹہ ملتان فیصل آباد پشاورگجرات حیدر آباد سکھر لاڑکانہ جیکب آباد بہاولپورگوجرانوالہ سیالکوٹ کوہاٹ ہنگو پاراچنار ڈیرہ اسماعیل خان گلگت بلتستان مظفر آباد باغ میر پور ڈڈیال آزاد کشمیرسمیت تمام چھوٹے بڑے شہروں قصبوں دیہات میں شہادت علی ابن ابی طالب ؑ کی مجالس منعقد ہوئیں اور تابوت کے جلوس نکالے گئے جن میں بلاتفریق مسالک و مکاتب اسلامیان پاکستان نے شرکت کرکے بارگاہ مصطفوی ؐ میں اخ الرسول ؐ حضرت علی ابن ابی طالب کا پرسہ پیش کیا۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.