سعودی ولی عہدنےنہ صرف فلسطین بلکہ عالم اسلام کی کمر میں چھرا گھونپا ہے،مقبوضہ کشمیر میں آگ و خون کا کھیل جاری ہے سعودی وایرانی حکمران ایکدوسرے کو چیلنج کر نے میں مصروف ہیں۔ آغاحامد موسوی

ولایت نیوز شیئر کریں

یوم یکجہتی کشمیر کی تقریب سے قائد ملت جعفریہ کا خطاب ، 22رجب کو یوم صادق ؑ ، 23تا 25رجب المرجب عالمی ایام باب الحوائج منانے کا اعلان

اسلام آباد (ولایت نیوز ) سرپرست اعلیٰ سپریم شیعہ علماء بورڈ قائد ملت جعفریہ آغا سید حامد علی شاہ موسوی نے کہا ہے کہ مقبوضہ کشمیر میں آگ و خون کا کھیل جاری ہے ، سعودی وایرانی حکمران ایک دوسرے کو چیلنج کر رہے ہیں ،سعودی ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان نے غیر سرکاری طور پر اسرائیل کو تسلیم کر کے نہ صرف فلسطین بلکہ عالم اسلام کی کمر میں چھرا گھونپا ہے۔ کشمیر و فلسطین کے مسائل اقوام متحدہ کی قراردادوں کے مطابق حل نہ ہونے کی بنیادی وجہ بھارت و اسرائیل کا ان قراردادوں کو جوتی کی نوک پر رکھنا ہے اور اقوام متحدہ ان مسائل کے بارے میں سنجیدہ نہیں لیکن یہ بات سب کو ذہن نشین رکھنی چاہیے کہ کشمیر و فلسطین کے مسائل کشمیر یوں ، فلسطینیوں کی امنگوں اور سلامتی کونسل کی قراردادوں کے مطابق حل ہوئے بغیر جنوبی ایشیاء اور مشرق وسطیٰ کے خطے آگ میں جلتے رہیں گے۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے جمعہ کو یوم یکجہتی کشمیر کے موقع پر تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔ اس موقع پر انہوں نے 22رجب کو یوم صادق ؑ جبکہ 23تا 25رجب المرجب شہادت حضرت امام موسیٰ کاظم ؑ کی مناسبت سے عالمگیر ایام باب الحوائج منانے کا اعلان بھی کیا ۔

آقای موسوی نے اس امر پر افسوس کا اظہار کیا کہ کشمیر و فلسطین میں خون کی ندیاں بہائی جا رہی ہے ،ہنود و یہود کو عالمی سرغنے کی پشت پناہی ہے جبکہ مسلم حکمران ایک دوسرے کو زیر کرنے پر اپنی پوری قوت صرف کر رہی ہے ۔انہوں نے کہا کہ صدر ٹرمپ کے بر سر اقتدار آنے کے بعد ہنود و یہود کی حمایت میں مزید اضافہ کر دیا گیا ،ان بغل بچوں کی پشت پر استعماری سرغنہ ایستادہ ہے ، اسلامی عسکری اتحادکو وجود دیا گیا تو ٹرمپ نے نہ صرف مودی کی پشت تھپ تھپائی بلکہ بھارت کو دہشتگردی سے متاثرہ کہہ کر کشمیریوں کو دہشتگرد اور ایران کو دہشتگردی کا منبع وسر چشمہ گردانا ،نصف درجن سے زائد مسلم ممالک کے باشندوں کے امریکہ داخلے پر پابندی لگائی ، ازاں بعد قطر کا محاصرہ بھی کیا گیا ، بیت المقدس کو اسرائیل کا دار الحکومت تسلیم کیا ، اس امریکی روش سے بھارت و اسرائیل کو مزید تقویت حاصل ہوئی چنانچہ کشمیر یوں ، فلسطینیوں دونوں پر ظلم و بربریت میں مزید اضافہ کر دیا گیا ۔

آغا سید حامد علی شاہ موسوی نے کہا کہ یکم اپریل کو شہید ہونے والے فلسطینیوں کی تدفین کے موقع پر اسرائیل نے مودی کی طرح دھمکیاں دی اور بھارتی حکومت کی طرز پر اسرائیلی فوج نے غزہ کی پٹی میں کاروائیوں کا انتباہ کیا ، انہی دنوں میں اسرائیلی فوج کی کاروائیوں میں شہید ہو نے والے فلسطینیوں کی تعداد ڈھائی درجن تک جا پہنچی ہے ، کشمیریوں کی طرح فلسطینیوں کے جنازوں میں بے بہا لوگ شرکت کرتے ہیں جو احتجاج کی شکل اختیار کر لیتے ہیں ۔ قائد ملت جعفریہ آغا سید حامد علی شاہ موسوی نے کہا کہ اس صورتحال میں عالمی سرغنے کا کردار منافقانہ ہے جس نے اقوام متحدہ کی تجویز بھی رد کر دی ہے جسکے تحت فلسطین میں اسرائیلی فوج کو کاروائیوں سے روکنے اور جنگی مظالم کی تحقیقات کا کہا گیا تھا ۔

انہوں نے کہا کہ 48ء میں لاکھوں فلسطینیوں کو اسرائیل نے انکے گھروں سے بے دخل کر کے در بدر کی ٹھوکریں کھانے پر مجبور کر دیا تھا غرضیکہ طاغوتی طاقتیں مکمل طور پر اسرائیل و بھارت کی پشت پناہی کر رہی ہیں مگر کسی مسلم حکمران کو ان کے خلاف لب کشائی کی جرات نہیں ۔در ایں اثناء جمعہ کو قائد ملت جعفریہ آغا سید حامد علی شاہ موسوی کی ہدایت پر ملک بھر میں یوم یکجہتی کشمیر کی مناسبت سے کشمیریوں ، فلسطینیوں کی حمایت میں ریلیاں نکالی گئیں اور بھارت و اسرائیل کے خلاف احتجاجی مظاہرے ہوئے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.