مطمئن ہوں کہ مجھے یاد رکھے گی دنیا۔۔۔۔شہید محسن نقوی کی برسی پر ملک بھر میں مجالس

ولایت نیوز شیئر کریں

راولپنڈی (ولایت نیوز ) تحریک نفاذفقہ جعفریہ پاکستان کے رکن سپریم کونسل ،عالمی شہرت یافتہ شاعر و خطیب ، حماد اہلبیت ؑ سید محسن نقوی شہید کی برسی سوموارکومنائی گئی ۔ اس موقع پر جڑواں شہروں راولپنڈی اسلام آباد سمیت ملک بھر میں علمی و ادبی اور مذہبی تنظیموں اور اداروں کی جانب سے قرآن خوانی ،مجالس تراحیم اور کانفرنسوں کا انعقاد کیا گیا ۔

مجلس فروغ حسینیت ؑ کے زیر اہتما م زین العابدین ؑ اکیڈمی میں حماد اہلبیت ؑ کانفرنس کا اہتمام کیا گیا ۔اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے علامہ الحاج سید قمر حیدر زیدی نے کہا کہ محسن نقوی 15جنوری 1996کو دشمنان دین و وطن کی گولیوں کا نشانہ بن کر ظاہری طو ر پر ہم سے بچھڑ گئے اور دشمن سمجھا کہ وہ محسن کو لہو لہو کر کے کامیاب ہو گیا ہے لیکن یہ اس کی بھول تھی کیونکہ ان کے افکار و نظریات اور مشن باقی ہے جس سے وہ ہمیشہ زندہ رہیں گے ۔

انہوں نے کہا کہ شہید محسن کی زبان سے نکلا ہو ا ایک ایک لفظ محفوظ ہے اور ان کا لہو قوم کی حیات بن کر دنیائے ادب کے ماتھے کا جھومر ہے۔انہوں نے کہا کہ سید غلام عباس المعروف سید محسن نقوی قائد ملت جعفریہ آغا سید حامد علی شاہ موسوی کے روحانی فرزند اور قوت بازو کی حیثیت سے پوری زندگی تعلیمات محمد و آل محمد ؑ کے فروغ اور علم و ادب کی روشنی بکھیرنے میں مصرو ف رہے ،انہیں فن خطابت اور مدح محمد وآل محمد ؑ کا حقیقی صلہ شہادت کی صورت میں ملا ۔

سید قمر زیدی نے باور کرایا کہ محسن نقوی شہید سچ کا شاعر ،صداقت کا ادیب ، مودت کا خطیب اور انسانیت کا دانشور تھا لیکن بد قسمتی سے زندگی نے وفا نہ کی اور وہ متلاشیان علم اور عزاداران امام عالی مقام کو داغ جدائی دے گئے ،وہ قوم کا عظیم اور قیمتی سرمایہ تھے جن کی شہادت سے پیدا ہونیو الا خلا پورا نہیں ہو سکتا ۔انہوں نے کہا کہ منبر کی خدمت اور تبلیغ ولا و عزا کیلئے ان کی خدمات ہمیشہ یاد رکھی جائیں گی۔کانفرنس سے سیدمحمدعباس کاظمی ، سیدکوثرزیدی ، پروفیسرآفتاب زیدی ، سیدقاسم الحسین ، پروفیسرعمران اکبر اور دیگر مقررین و دانشوروں نے بھی خطاب کیا جبکہ مختلف منقبت خوانوں نے شہید محسن نقوی کا منظوم کلام پیش کیا۔اس موقع پر شہید کی بلندی درجات کیلئے فاتحہ خوانی بھی کی گئی ۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے


Notice: ob_end_flush(): failed to send buffer of zlib output compression (1) in D:\hshome\automotonk\walayat.net\wp-includes\functions.php on line 3729

Notice: ob_end_flush(): failed to send buffer of zlib output compression (1) in D:\hshome\automotonk\walayat.net\wp-includes\functions.php on line 3729