امریکہ  کو پاک فوج کی عظیم کامیابیاں ہضم نہیں ہو رہیں،پاکستان ’’نو مور ‘‘کی پالیسی پر ڈٹ جائے۔ آغاحامد موسوی

ولایت نیوز شیئر کریں

نالائق حکمرانوں و سیاستدانوں نے استعماری سرغنے کو ہمیشہ اہمیت دی ہے امیرالمومنین حضرت علی ؑ کا فرمان ہے کہ جس کیساتھ نیکی کرو اُسکے شر سے بچو
کردارحضرت سکینہ بنت الحسین ؑ دختران عالم کیلئے سر چشمہ رشدو ہدایت ہے ۔ قائد ملت جعفریہ کا مجلس شہادت معصومہ سکینہ ؑ سے خطاب

اسلام آباد(ولایت نیوز )سپریم شیعہ علماء بور ڈ کے سرپرست اعلیٰ و تحریک نفاذ فقہ جعفریہ کے سربراہ آغا سید حامد علی شاہ موسوی نے کہاہے کہ حکمران ،سیاستدان عالمی استعمار کے کسی قسم کے دباؤ میں آئے بغیر عالمی استعمار کے ڈو مور کے مطالبے پر نو مور کی پالیسی پر ڈٹ جائیں، دنیا کی بڑی سے بڑی طاقت پاکستان کو نقصان نہیں پہنچا سکتی پوری قوم عساکر پاکستان کی قربانیوں کی دل سے معترف اور اُنکی پشت پر ایستادہ ہے ، ابلیسی قوتیں کسی بھول میں نہ رہیں یہ 71ء والا نہیں بلکہ ایٹمی پاکستان ہے اور جوہری طاقت نمائش کیلئے نہیں بلکہ آزمائش کیلئے ہے، کردار حضرت سکینہ بنت الحسین ؑ دختران عالم کیلئے سر چشمہ رشدو ہدایت ہے ۔ ان خیالات کا اظہار اُنہوں نے جمعہ کو عشر ہ اسیران کربلا کی مناسبت سے مجلس شہادت حضرت سکینہ بنت الحسین ؑ سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔

آقای موسوی نے باور کرایا کہ امریکہ دہشتگردِ کبیر اور دہشتگردوں کا خالق ہے جس نے نائن الیون کا ڈرامہ رچا کر اسامہ اور صدام کی آڑ میں یکے بعد دیگرے مسلم ممالک کو نشانہ بنایا اور اس کے جواز میں یہ بہانہ بنایا کہ وہ دہشتگردی کے قلع قمع کیلئے اقدامات کر رہا ہے اور اس مقصد کیلئے وہ ہر ملک کو نشانہ بنا سکتا ہے۔ اُنہوں نے کہا کہ 2001ء میں استعماری سرغنے نے دنیا کو افغانستان کی صورتحال میں الجھا کر کشمیر و فلسطین کی لہو رنگ تحاریک آزادی کو سبوتاژ کیا ، اپنے مفادات کیلئے پٹھوؤں کو استعمال کر کے کشمیر و فلسطین کے مسائل ہمیشہ کیلئے بھلانے کی کوشش میں ہر ملک میں افراتفری ، گوں نا گوں مسائل اور غیر مستحکم کرنے کیلئے اندرونی مسائل میں مبتلا کر رہا ہے ، پاکستان کا ایٹمی قوت ہونا اُس کیلئے پہلے ہی ناقابل برداشت تھا اور اب سی پیک نے اُسکی اور اُسکے پٹھوؤ ں کی نیندیں حرام کر رکھی ہیں۔ آغا سید حامد علی شاہ موسوی نے اس امر پر افسوس کا اظہار کیا کہ پاکستان کے نالائق حکمرانوں و سیاستدانوں نے استعماری سرغنے کو ہمیشہ اہمیت دی ہے حالانکہ اُنہیں امیرالمومنین حضرت علی ابن ابی طالب ؑ کا یہ فرمان ذہن نشین رکھنا چاہیئے کہ جس کیساتھ نیکی کرو اُسکے شر سے بچو کیونکہ سانپ کو جتنا چاہئے دودھ پلاؤ وہ ڈسنے سے باز نہیں آتا لہٰذا وطن عزیز میں ہونے والی دہشتگردی ، خودکش حملے اور دھماکے ڈھکی چھپی بات نہیں جس کے نتیجے میں حساس فوجی تنصیبات، سیکورٹی افسران و اہلکار ، جوان، بزرگ ، خواتین ، کمسن بچے، زندگی کے ہر شعبے کی نمایا ں قابل ترین شخصیات ، کھیل کے میدان، مساجد،امامبارگاہیں، درگاہیں، گرجا گھر، شہر ی آبادیاں ، مارکیٹیں ،تاجر، بازار ، تعلیمی ادارے غرضیکہ کوئی ایسا مقام نہیں جسے دہشتگردی اک نشانہ نہ بنایا گیا ہولیکن عساکر پاکستان نے دلیری و بہادری اور مہارت کیساتھ دہشتگردوں کے خفیہ ٹھکانوں کو ملیا میٹ کر دیا اور جدید اسلحہ سے لیس امریکہ ،اسرائیل اور بھارت کے تربیت یافتہ سفاک دہشتگردوں کو دشوار گزار پہاڑوں سے اُتارکر اور غاروں سے نکال کر واصل جہنم کر کے اُنہیں چھٹی کا دودھ یاد کرا دیا۔

اُنہوں نے کہا کہ امریکہ اور اُسکے ہمکاروں کو دہشتگردوں کیخلاف پاک فوج کی یہ عظیم کامیابیاں ہضم نہیں ہو رہی چنانچہ استعماری سرغنہ ہر قسم کے سفارتی آداب کو فراموش کر کے پاکستان کو دھمکا رہا ہے اور ڈو مور کا مطالبہ جاری رکھا ہوا ہے وہ افغانستان میں اپنی شکست کا ملبہ پاکستان پر ڈالنا چاہتا ہے جسے منہ توڑ جواب دینے کیلئے حکومت معذرت خواہانہ طرز عمل ترک کر کے جرات مندانہ پالیسی وضع کرے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے


Notice: ob_end_flush(): failed to send buffer of zlib output compression (1) in D:\hshome\automotonk\walayat.net\wp-includes\functions.php on line 3727

Notice: ob_end_flush(): failed to send buffer of zlib output compression (1) in D:\hshome\automotonk\walayat.net\wp-includes\functions.php on line 3727