حضرت ابراہیم ؑ و اسمعیل ؑ کے فلسفہ قربانی پر عمل ضروری; تفسیرنواسہ رسولؐ حسین ؑ ابن علی ؑ نے کربلا میں پیش کی ۔ حامد موسوی 

ولایت نیوز شیئر کریں

عید الاضحی تسلیم و رضا کی اعلی ترین مثال ، عالم اسلام کے اتحادکا مظہر ہے،خوشیوں میں مظلومین کشمیر و فلسطین اور مستحقین کو فراموش نہ کیا جائے۔قائد ملت جعفریہ کا عیدالاضحی پر پیغام

اسلام آباد(ولایت نیوز )سپریم شیعہ علماء بور ڈ کے سرپرست اعلیٰ و تحریک نفاذ فقہ جعفریہ کے سربراہ آغا سید حامد علی شاہ موسوی نے کہا ہے کہ حضرت ابراہیم ؑ و اسمعیل ؑ کے فلسفہ قربانی پر عمل کرنا ضروری ہے جسکی عملی تفسیرنواسہ رسولؐ حسین ؑ ابن علی ؑ نے میدان کربلا میں پیش کی ،وطن عزیزپاکستان اس وقت خطرات کے گرداب میں پھنسا ہوا ہے حکمران ،سیاستدان اپنے مفادات پر قوم و ملک کے اجتماعی مفاد کو ترجیح دیں ،خطبہ حجتہ الوداع کو انسانی حقوق کا رول ماڈل بنایا جائے،پاکستان کیساتھ امریکی رویہ ہمیشہ منافقانہ، متعصبانہ رہا ہے جبکہ پاکستان نے ہمیشہ دوستی نبھائی مگر امریکہ نے وقت ضرورت پیٹھ پھیرکرپاکستان کی کمر میں خنجر گھونپا ہے، پاکستان کیخلاف نئی ٹرمپ پالیسی کے تحت الزامات اور دھمکیوں کے جواب میں،سول و ملٹر ی قیادت کا فقید المثال اتحاد قومی یکجہتی کا عملی مظاہرہ ہے، عید الاضحی تسلیم و رضا کی اعلی ترین مثال ، عالم اسلام کے اتحادکا مظہر ہے،خوشیوں میں مظلومین کشمیر و فلسطین اور مستحقین کو فراموش نہ کیا جائے۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے عید الاضحی کے موقع پر اپنے خصوصی پیغام میں کیا ہے۔

آقای موسوی نے مسلم حکمرانوں پر زوردیا کہ وہ اپنے ممالک کو انسانی حقوق کا رول ماڈل بنائیں بحرین شام عراق یمن قطیف ،العوامیہ میں انسانی حقوق کی پامالی رکوائی جائے،حکومت مسئلہ کشمیر اجاگر کرنے کیلئے دلیرانہ و جراتمندانہ موقف اختیار کرے ،اگر سستی و کاہلی برتی گئی تو قوم اور تاریخ حکمرانوں کو کبھی معاف نہیں کرے گی ۔آغا موسوی نے اس امر پر افسوس کا اظہار کیا کہ امریکہ نے احسان فراموشی کا مظاہرہ کرتے ہوئے سویت یونین کے توڑنے کی سب سے بڑی سزاپاکستان کو دی اور وطن عزیز کو دہشت گردوں کی آماج گاہ میں تبدیل کردیا گیانائن الیون کا خمیازہ بھی سب سے زیادہ پاکستان کو بھگتنا پڑا۔انہوں نے کہا کہ امریکہ کی نئی افغان پالیسی کے تحت پاکستان کیخلاف الزامات اور دھمکیاں اور ڈو مور کے مطالبات کا مقصد آپریشن رد الفساد کی کامیابیوں کو دنیا سے چھپانا اورسی پیک کو سبوتاژکرنا ہے ۔قائد ملت جعفریہ آغا سید حامد علی شاہ موسوی نے کہا کہ وطن عزیز کو درپیش سب سے بڑا مسئلہ اندرونی طور پردہشت گردی اور بیرونی محاذ پر کشمیر کی تحریک حریت ہے ،کشمیری محکوم گذشتہ دو صدیوں سے بدترین ظلم کی چکی میں پس رہے ہیں 21ویں صدی میں بھی مسئلہ کشمیرعالمی ضمیر کی بے حسی سب سے بڑا سمبل ہے ،بے گناہ کشمیریوں کی شہادتیں، ہزاروں کی بینائی سے محرومی اور معذوری پر انسانی حقوق کے ٹھیکیداروں کی مجرمانہ خاموشی نہایت افسوسناک اور لمحہ فکریہ ہے؟۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے


Notice: ob_end_flush(): failed to send buffer of zlib output compression (1) in D:\hshome\automotonk\walayat.net\wp-includes\functions.php on line 3729

Notice: ob_end_flush(): failed to send buffer of zlib output compression (1) in D:\hshome\automotonk\walayat.net\wp-includes\functions.php on line 3729