داعش کو ایک اور شکست ؛ تلعفر پر عراقی فوج نے مکمل قبضہ کرلیا

ولایت نیوز شیئر کریں

بغداد (ولایت مانیٹرنگ ڈیسک )عراق کی وزارت دفاع نے اتوار کے روز اعلان کیا ہے کہ عراقی فورسز نے داعش کے خلاف لڑائی کے بعد پورے تلعفر شہر پر مکمل کنٹرول حاصل کر لیا ہے۔ موصل میں شکست کے بعد داعش نے اپنی خلافت کا مرکز تلعفر کو قرار دیا تھا۔

عراقی فوج نے الگ سے ایک بیان میں کہا ہے کہ داعش کے جنگجوؤں کے خلاف آٹھ روز کی لڑائی کے بعد تلعفر شہر کے تمام انتیس علاقوں اور محلوں پر دوبارہ قبضہ کر لیا گیا ہے۔ اور اب اس شہر کو داعش کے جنگجوؤں سے پاک کیا جارہا ہے۔

عراقی فوج کے کمانڈر جنرل عبدالعامر یاراللہ نے ایک بیان میں کہا ہے کہ انسداد دہشت گردی سروس ( سی ٹی ایس ) کے یونٹ ہفتے کے روز شہر کے مرکزی حصے میں پہنچ گئے ہیں اور انھوں نے سلطنت عثمانیہ کے دور سے تعلق رکھنے والے قلعے اور بساتین کے علاقے پر قومی پرچم لہرا دیا ہے۔

انھوں نے بتایا ہے کہ سی ٹی ایس اور وفاقی پولیس کے یونٹوں نے شہر کے جنوب اور مغرب سے مرکز کی جانب دھاوا بولا تھا۔تلعفر کے شمال میں واقع نواحی علاقوں میں ابھی جھڑپیں جاری ہیں اور عراقی فورسز داعش کے زیر قبضہ چند ایک ٹھکانوں کے خلاف کارروائی کررہی ہیں۔

عراقی فورسز نے آج تلعفر کے تین شمالی علاقوں اور قلعے کے مغرب میں واقع علاقے الرابعہ پر بھی دوبارہ کنٹرول حاصل کر لیا ہے۔ایک اور روز قبل انھوں نے جنوبی علاقے الطالیہ پر دوبارہ قبضہ کر لیا تھا اور وہاں سے داعش کے جنگجو پسپا ہوگئے تھے۔

داعش نے اس شہر پر 2014ء سے قبضہ کررکھا تھا۔یہ موصل سے ستر کلومیٹر مغرب میں شام کی جانب جانے والی مرکزی شاہراہ پر واقع ہے ۔ داعش کے قبضے سے قبل اس شہر کی آبادی دو لاکھ نفوس پر مشتمل تھی ۔حالیہ دنوں میں اس شہر سے ہزاروں افراد اپنا گھربار چھوڑ کر محفوظ مقامات کی جانب چلے گئے ہیں۔

عراقی سکیورٹی فورسز نے گذشتہ اتوار کے روز تلعفر پر دوبارہ کنٹرول کے لیے کارروائی شروع کی تھی۔تلعفر پر مکمل کنٹرول کے بعد توقع ہے کہ عراقی فورسز بغداد سے تین سو کلومیٹر شمال میں واقع قصبے حوائجہ میں داعش کے خلاف کارروائی شروع کریں گی۔ عراقی فورسز نے گذشتہ مہینوں کے دوران میں داعش کے زیر قبضہ بہت سے علاقے واپس لے لیے ہیں ۔تاہم سخت گیر جنگجو مغربی صوبے الانبار میں ا بھی تک موجود ہیں اور ان کا شام کی سرحد کے ساتھ واقع بیشتر علاقوں پر کنٹرول ہے۔ وہ وہیں سے شام میں اپنے زیر قبضہ علاقوں کی جانب جاتے آتے رہتے ہیں۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے


Notice: ob_end_flush(): failed to send buffer of zlib output compression (1) in D:\hshome\automotonk\walayat.net\wp-includes\functions.php on line 3727

Notice: ob_end_flush(): failed to send buffer of zlib output compression (1) in D:\hshome\automotonk\walayat.net\wp-includes\functions.php on line 3727