قائد ملت جعفریہ آغا حامد موسوی

مسلم حکمرانوں کی دولت کی ہوس نے عالم اسلام کو مسائل سے دوچار کیا، آغا حامد موسوی

ولایت نیوز شیئر کریں

مسجداقصیٰ کی آتشزدگی کے سانحے پراوآئی سی کووجودمیں لایاگیاتھا، وہی مسجداقصیٰ آج پھرفریادکناں ہے مگرکوئی مددکونہیں آرہاہے 
ہنودنے کشمیریوں کوتہس نہس کرنے کی قسم کھارکھی ہے 
مبلغ توحیدورسالت حضرت امام علی بن موسیٰ الرضا ؑ نے دنیائے بشریت کوذلت ورسوائی سے نجات دلائی

اسلام آباد (ولایت نیوز )سرپرست اعلیٰ سپریم شیعہ علماء بورڈقائدتحریک نفاذ فقہ جعفریہ آغا سید حامد علی شاہ موسوی نے کہاہے کہ مسلم دنیا کے حکمرانوں ، سیاستدانوں کی دولت جمع کرنے کی روش نے عالم اسلام اورمسلمانوں کو فاقوں اور مسائل میں مبتلاکررکھاہے جسکی وجہ سے عالمی سرغنے اوریہود و ہنودکے ہاتھوں فلسطین وکشمیرمیں مسلمانوں پرعرصہ حیات تنگ ہے، اسلامی کانفرنس کشمیروفلسطین کے مسائل کے حل کروانے اوربیت المقدس کی بازیابی کیلئے ہنگامی اجلاس طلب کرے،اقوام متحدہ کی قراردادں پرعملدرآمدکیلئے یقینی بنائے ، پوراعالم اسلام کشمیریوں ، فلسطینیوں کی بھرپورحمایت اورہنودیہودکے مظالم کی مذمت کرے کیونکہ ان مسائل کے حل ہونے تک جنوبی ایشیاء اورمشرق وسطیٰ کے خطے افراتفری کاشکاررہیں گے ،حضرت امام علی بن موسیٰ الرضا ؑ مبلغ توحیدورسالت ہیں جنہوں نے دنیائے بشریت کوذلت ورسوائی سے نجات دلائی ۔ ان خیالات کااظہارانہوں نے سوموارکوعالمی ایام ضامن ؑ کمیٹی ٹی این ایف جے کے کنوینر ڈاکٹرایس ایم رضوی کی سرکردگی میں عہدیداران سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔

آقای موسوی نے اس امرپرتشویش کااظہارکیاکہ فلسطین وکشمیرمیں یہودوہنودنے عرصہ حیات تنگ کررکھاہے مسجداقصیٰ کاگھیراؤجسکی آتشزدگی پراوآئی سی کووجودمیں لایاگیاتھا، وہی مسجداقصیٰ آج پھرفریادکناں ہے مگرکوئی مددکونہیں آرہاہے ، دوسری جانب ہنودنے کشمیریوں کوتہس نہس کرنے کی قسم کھارکھی ہے ، ظلم وبربریت ، جبروتشددمعمول بن چکاہے ، 89ء سے لیکراب تک 8لاکھ کشمیری جبری لاپتہ کرکے موت کی گھاٹ اتاردیئے گئے ہیں ، لاکھوں خواتین بیوہ اوربچھے یتیم ہوچکے ہیں جومسائل ومصائب سے بھری زندگی گزارنے پرمجبورہیں ۔

آقای موسوی نے کہاکہ تنازعہ کشمیرکے پس پردہ ریڈکلف ایوارڈ کاظلم وستم کارفرماہے جس سے برصغیرکی تقسیم اوردوخودمختارریاستوں کے منصوبے کوایسی شکل دی گئی کہ جس سے بھارتی فوج کیلئے راہ ہمراہ ہوئی جس نے کشمیرمیں داخل ہوکرظلم وستم کے پہاڑتوڑنے شروع کردئیے ۔ انہوں نے کہاکہ بھارتی استعمارنے بھارت کو مسئلہ کشمیراقوام متحدہ کی سلامتی کونسل میں اٹھانے کیلئے مجبورکیاجس کے مستقل ارکان نے مسئلہ کے حل کیلئے استصواب رائے کی قراردادیں منظورکی جن سے بھارت مکرگیا۔ آغاسیدحامدعلی شاہ موسوی نے کہاکہ بھارت نے مقبوضہ کشمیرمیں اپنی افواج کی تعدادمیں زبردست اضافہ کرکے سلامتی کونسل کے مستقل ارکان کی تائیدحاصل کی جس کے بعدپاکستان کی شہ رگ کشمیربھارتی قبضہ میں آگئی چنانچہ بھارت نے آزادکشمیرپرقبضہ کیلئے پاکستان کیخلاف تین جنگیں مسلط کی مگرپاک فوج اورعوام نے بھارت کی پرسازش ناکام بنادی ۔ انہوں نے کہاکہ عالمی طاقتیں ذہن نشین رکھیں کہ پاک بھارت میں کشیدگی کااصل سبب مسئلہ کشمیرہے جسکا واحدحل اقوام متحدہ کی قراردادں اورکشمیریوں کے امنگوں کے مطابق حق خوداداریت کی ادائیگی ہے ۔

قائدملت جعفریہ آغاسیدحامدعلی شاہ موسوی نے واضح کیاکہ حضرت امام علی بن موسیٰ الرضا 148ھ میں اپنے جدبزگوارحضرت امام جعفرصادقؑ کی شہادت کے 16دن بعد میدان حیات میں قدم رنجہ ہوئے اورعالم فضلیت وتقویٰ کواپنے وجودمبارک سے زینت بخشی ، آپ کی حیات مبارک اورامامت وولایت کازمانہ بیس سالوں پرمحیط تھاجوعلوم وافکارکے ٹکراؤکازمانہ تھاجس میں طرح طرح کے عقائدپھیل رہے تھے ،عقائدوآراء کے تضادوٹکراؤکی راہ میں آستانہ امام رضاؑ واحدتکیہ گاہ تھا، آپ نے علم ودانش کی ترقی ، مؑ ارف اسلامی کی تبلیغ وترویج سے عوام الناس کوآراستہ فرمایا، آپ کی مجلس طالبان علوم سے موجزن رہتی ، مختلف مذاہب کے پیشواؤں ، عالموں ، مبلغوں ،فکری رہنماؤں سے امام رضاکے مناظرے اورمباحثے مشہورعام تھے جن کے ذریعے آپ نے صاحب نظرکے دلوں میں توحیدکے چراغ روشن کیے اورحقائق دین کی تشریح کرکے تبلیغ اسلام اوراشاعت شریعت محمدی کیلئے گہرے اثرات مرتب کیے ۔

انہوں نے کہاکہ امام ضامن وثامن کی تاریخ حیات ثنویہ (دوخداؤں ) کے نظریات کے حامل طبقے ، عیسائیوں ، یہودیوں ، زندیقوں ، دہریوں ، بے دینوں کے ساتھ مناظرے اورمباحثے تاریخ کاسنہری باب ہیں ۔آقای موسوی نے کہاکہ امام رضاؑ نے اپنے دورکے چھ ڈکٹیٹروں کاسامناکیالیکن کوئی بڑاسابڑاجابرآپ کوسرنگوں اورراہ حق سے نہیں ہٹاسکا۔ انہوں نے کہاکہ امام ضامن کاقوم مبارک ہے کہ دنیاوی مال وثروت پانچ خصائل کی بناپرجمع کیاجاسکتاہے بہت زیادہ بخل ، لمبی خواہشات ، غلبے کالالچ ، صلہ رحمی کوقطع کرکے ، دنیاکواختیاراورآخرت کوترک کرکے ۔ انہوں نے کہاکہ موجوددورکے حکمران ،سیاستدان اسی روش کواپنائے ہوئے جوآخرکارمسائل ومصائب کاشکارہوجاتے ہیں لہذاانہیں دنیاوآخرت میں کامیابی اورنجات کیلئے اسوہ امام علی رضاؑ کی پیروی کرنی ہوگی ۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے


Notice: ob_end_flush(): failed to send buffer of zlib output compression (1) in D:\hshome\automotonk\walayat.net\wp-includes\functions.php on line 3728

Notice: ob_end_flush(): failed to send buffer of zlib output compression (1) in D:\hshome\automotonk\walayat.net\wp-includes\functions.php on line 3728