بھارت اسرائیل امریکہ اتحاد

صیہونیت و مہاسبھائیت و ملحدین امریکی سرپرستی میں پاکستان کے خلاف متحد ہو چکے ہیں،خارجہ پالیسی میں تبدیلی لائی جائے،،آغا حامد موسوی 

ولایت نیوز شیئر کریں

خارجہ پالیسی میں تبدیلی لائی جائے، ذاتی احسانات کے بجائے قومی و ملکی مفادات کو ترجیح دی جائے

پاکستان کے خلاف عالمی شیطانوں کے اکٹھ کی بنیاد نظریاتی دشمنی ہے

امریکہ مودی غنی کی زبان اور مودی غنی امریکی زبان بول رہے ہیں،اسرائیل پرانے بدلے اتارنے کیلئے بھارت کی پیٹھ تھپک رہا ہے
بھارت اسرائیل یاریاں مودی کیلئے مندر بنانے،تمغوں سے نوازنے اور بھارت کو پاکستان پر ترجیح دینے والے عرب سربراہوں کے منہ پر طمانچہ ہے
مسلمانان عالم امام جعفر صادق ؑ کی بتلائی راہ پر گامزن رہتے تو رسوائیوں کی دلدل میں نہ گرتے،ٹی این ایف جے راولپنڈی ریجن کے وفد سے خطاب 

اسلام آباد(ولایت نیوز) سپریم شیعہ علماء بورڈ کے سرپرست اعلی و تحریک نفاذ فقہ جعفریہ کے سربراہ آغا سید حامد علی شاہ موسوی نے کہا ہے کہ صیہونیت و مہاسبھائیت و ملحدین امریکی سرپرستی میں پاکستان کے خلاف متحد ہو چکے ہیں پاکستان اپنی خارجہ پالیسی میں تبدیلی لائے ،خارجہ معاملات میں ذاتی احسانات اور تجارتی مفادات کے بجائے قومی و ملکی مفادات کو ترجیح دی جائے،عالمی شیطانوں کا گٹھ جوڑ پاکستان سے نظریاتی دشمنی اور اسلامی ایٹمی قوت ہونے کے باعث ہے ،بھارت پاکستان کو تنہا کرنے کیلئے ہر گھٹیا اور اوچھا ہتھکنڈا اختیار کررہا ہے امریکہ مودی غنی کی زبان اور مودی غنی امریکی زبان بول رہے ہیں،اسرائیل بھی پاکستان سے پرانے بدلے اتارنے کیلئے بھارت کی پیٹھ تھپک رہا ہے، بھارت کا افغانستان میں امریکہ سے تعاون جاری رکھنے کا اعلان معنی خیز ہے،امام جعفر صادق ؑ نے مسلمانوں کو باہم دست و گریباں ہونے کے بجائے علم و حکمت کی راہوں پر چلنے کی راہ دکھائی اگر مسلمانان عالم امام جعفر صادق ؑ کی بتلائی راہ پر گامزن رہتے تو رسوائیوں کی دلدل میں نہ گرتے ۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے شوکت عباس جعفری کی سرکردگی میں ٹی این ایف جے راولپنڈی ریجن کے وفد سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔

آغا سید حامد علی شاہ موسوی نے کہا کہ مودی کے دورہ امریکہ میں وائٹ ہاؤس میں ٹرمپ کا بھارت کو امریکہ کا سب سے بڑا دفاعی حلیف قرار دینا اور اسلامی دہشت گردی کے خلاف مشترکہ لڑنے کا اعلان لمحہ فکریہ ہے ، ٹرمپ اور مودی نے 13ارب ڈالر کے دفاعی معاہدوں پر ہی دستخط نہیں کیا بلکہ مشترکہ طور پر کشمیر میں جاری آزادی و حریت کی تحریک کو بھی دہشت گردی قرار دیا ہے ۔انہوں نے کہا کہ بدقسمتی یہ ہے کہ پاکستان کا دفتر خارجہ ہمیشہ امریکہ سے خوشگوار موڈ اپنائے رکھتا ہے اور ساتھ معمولی تشویش کا اظہار بھی کر دیتا ہے جس سے امریکہ کے کانوں پر جوں بھی نہیں رینگتی جبکہ چین نے دہلی واشنگٹن معاہدوں کو تنقید کا نشانہ بنایا ہے اور کہا ہے کہ امریکہ کی بھارت پر شفقت و عنایات کادرحقیقت مقصد چین کو ٹارگٹ کرنا ہے ۔آغا سید حامد علی شاہ موسوی نے کہا کہ دہلی پر نوازشات کی برسات کے بعد امریکہ نے پاکستان کو ہمیشہ کی طرح دھوکے میں رکھنے کیلئے ایک وفد پاکستان بھی بھیجا جو پاکستان اور قبائلی علاقے کے دورے میں تو دوستانہ قربت اوردہشت گردی کے خلاف افواج پاکستان کی قربانیوں کے ترانے پڑھتا رہاکہ پاک فوج فوج کی کاروائی کے سبب دہشت گرد قبائلی علاقوں سے فرا رہونے پر مجبور ہوئے اور ببانگ دہل اعلان کیا کہ پاکستان کی مدد کے بغیر افغانستان میں امن ممکن نہیں ۔لیکن جیسے ہی امریکی وفد کابل پہنچا اس کی نظروں کے ساتھ زبان بھی بدل گئی اور وہی وفد پاکستان کو دھمکیاں دینے لگا ۔آغا سید حامد علی شاہ موسوی نے کہا کہ اسرائیل بھی امریکی بھارت گٹھ جو ڑ کا جزو لا ینفک ہے مودی کا اسرائیلی دورے میں غزہ کو فراموش کردینااور اسرائیل کیلئے’ آئی فار آئی ‘یعنی بھارت اسرائیل اور اسرائیل بھارت کیلئے کا نعرہ لگانامسلم مخالف خارجہ پالیسی کا عکاس ہے بھارت اسرائیل یاریاں مودی کیلئے مندر بنانے،تمغوں سے نوازنے اور بھارت کو پاکستان پر ترجیح دینے والے عرب سربراہوں کے منہ پر طمانچہ ہے ۔انہوں نے کہا کہ پاکستان کی سلامتی یکجہتی اور مضبوطی پورے عالم اسلام کی مضبوطی ہے ۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے


Notice: ob_end_flush(): failed to send buffer of zlib output compression (1) in D:\hshome\automotonk\walayat.net\wp-includes\functions.php on line 3721

Notice: ob_end_flush(): failed to send buffer of zlib output compression (1) in D:\hshome\automotonk\walayat.net\wp-includes\functions.php on line 3721